زیریں زمین اور بالائی زمین

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
کاسکاڈلا کریک، جو ایتھاکا، نیو یارک، ریاستہائے متحدہ کے نزدیک ہے، بالائی زمین مسکن کی ایک مثال ہے۔

زیریں زمین اور بالائی زمین دو مختلف النوع زمینی سطحوں کی تعریفیں ہیں۔ یہ دراصل میدانی علاقوں کی ہیئتوں کا بیان ہے۔ یہ سب سطح سمندر سے اونچائی کے حساب سے طے ہوتا ہے۔

ماحولیات کے تازہ پانی کے مطالعوں میں مساکن کو زیریں زمین یا بالائی زمین کے طور پر بیان کیا جاتا ہے۔

بالائی زمین اور زیریں زمین[ترمیم]

بالائی زمین اور زیریں زمین دراصل میدانی علاقوں کی ہیئتوں کا بیان ہے جو مشروط طور پر سطح سمندر سے اپنی اونچائی کی وجہ سے زمرہ بند ہوتے ہیں۔ زیریں زمین عمومًا 200 میٹر (660 فٹ) سے اونچی نہیں ہوتی، جب کہ بالائی زمین تقریبًا 200 میٹر (660 فٹ) سے 500 میٹر (1,600 فٹ) بیچ ہوتی ہے۔ شاذونادر مواقع پر کچھ مخصوص زیریں زمین جیسے کہ قزوینی دباؤ سمندری سطح سے نیچے ہوتی ہے۔

بالائی مساکن سرد، صاف، پتھریلے، زودرواں ندیاں ہیں جو پہاڑی علاقوں میں بہتی ہیں؛ زیریں زمین مساکن گرم، سست رواں ندیاں ہیں جو عمومًا نسبتًا چوپٹ زیریں زمین رقبوں میں ہوتی ہیں، جو پتھروں کے جمنے اور زمین مواد کے ملنے رنگین بن جاتی ہے۔

یہ تشخیصیں بالائی زمین اور زیریں زمین کی ارضیاتی تعریفوں کو گھیرتی ہیں۔ ارضیات میں بالائی زمین عمومًا ایسی زمین سمجھی جاتی ہے جو ایک اعلٰی سطحی اونچائی پر ہو، جو کچھار میدان یا بہتے چھت سے اوپر ہو، جو زیریں زمین سمجھا جاتا ہے۔ "تہ کی زمین" سے مراد نچلی سطح پر رہنے والی کچھار زمین ہے جو ندی کے پاس رہتی ہے۔

کئی تازہ پانی کی مچھلیاں اور ہڈی دار جان دار دنیا بھر میں بالائی زمین یا زیریں زمین کے مساکن کے ساتھ تخصیص دکھاتے ہیں۔ ندیوں اور چشموں کو بالائی زمین یا زیریں زمین کے طور تخصیص کی جاتی ہے اور یہ تازہ پانی کے ماحولیات کے لیے اہم ہے کیوں کہ دونوں ندیوں کے مساکن بے حد مختلف ہیں اور یہ مجھلیوں اور ہڈی دار انواع کی مختلف قسموں کو بسنے کا موقع دیتے ہیں۔

بالائی زمین[ترمیم]

تازہ پانی سے متعلق ماحولیات کے ضمن میں بالائی زمین ندیاں وہ ندیاں اور چشمے ہیں جو زود رواں ندیاں اور چشمے ہیں جو اونچائی والی یا پہاڑی زمینوں پر سے بہتی ہیں، اکثر وسیع کچھار میدانوں پر یہ جاتے ہیں (جہاں یہ زیریں زمین ندیاں بن جاتی ہیں)۔ تاہم مقام کا اونچا ہونا ہی یہ طے نہیں کرتا کہ ندی زیریں زمین سے بالائی زمین ہے۔ بلاشبہ فیصلہ کن امور میں چشمے کی طاقت اور چشمے کی گہرائی ہے۔ ندیاں جن کا بہاؤ اونچائی سے گرتا ہے تیز رفتار پانی کا بہاؤ رکھتی ہیں اور زیادہ چشمے کی طاقت یا "پانی کی طاقت" رکھتی ہیں۔ یہ اس کے ساتھ ہی بالائی زمین کی دیگر خصوصیات پیدا کرتا ہے - چھپٹنے والی روانی، طاس کی بیشتر حصہ طاس کے پتھر پر محیط ہے اور یہ سخت جمع پتھروں کو رکھتا ہے۔

زیریں زمین[ترمیم]

امیزون ندی جو مناؤس، برازیل کے پاس ہے، زیر زمین مسکن کی ایک مثال ہے۔

یہ عمومًا زیادہ حرکیاتی، گرم، سست رفتار ندیوں اور عمدہ پتھروں کے جمع سمندری تہ کا حصہ ہے۔ یہ مچھلیوں کی انواع کی حوصلہ افزائی کرتے ہیں۔ اس کے درجہ حرارت میں کافی تفاوت پایا جاتا ہے جس میں کم سے کم آکسیجن سطحیں، زندگی کی تاریخ اور افزائش نسل کی حکمت عملیاں ایسی ہوتی ہیں جو انن اور زیریں زمین کی دیگر خصوصیات سے تال میل کی حد تک بدل دی جاتی ہیں۔ یہ خصوصیات اس بات کی بھی حوصلہ افزائی کرتی ہیں کہ ہڈی دار انواع جو وسیع درجہ حرارت کو برداشت کر سکتی ہیں اور مختلف کم آکسیجن کی سطح تک معقول ہیں۔ ان کے اردگرد گھومنے والی ماحولیات یا متبادل مساکن جیسے کہ غرقاب لکڑیوں کا ملبہ یا آبی کنجال ہوتے ہیں۔

زیریں زمین کچھار میدان[ترمیم]

مزید دیکھیے[ترمیم]