عالمی فنڈ برائے فطرت

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
پانڈا جو ڈبلیو ڈبلیو ایف کے لوگو میں شامل ہے بلکہ اس کی علامت بن گیا ہے۔
عالمی فنڈ برائے فطرت
ورلڈ وائڈ فنڈ فار نیچر

مخفف WWF
صدر دفتر 28 ریو ماورنی،
گلانڈ، واوڈ، سوئٹزرلینڈ
تاریخ تاسیس 29 اپریل 1961؛ 62 سال قبل (1961-04-29)
مقام تاسیس نیویارک   ویکی ڈیٹا پر (P740) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
بانی شہزادہ فلپ، ڈیوک ایڈنبرا   ویکی ڈیٹا پر (P112) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
قسم عالمی این جی او
قانونی حیثیت غیر سرکاری تنظیم [1]  ویکی ڈیٹا پر (P1454) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مقاصد
خدماتی خطہ بین الاقوامی   ویکی ڈیٹا پر (P2541) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
صدر عادل نجم
ڈائریکٹر جنرل کرسٹین شوئٹ
CEO کارٹر رابرٹ [2]
تعداد عملہ
اعزازات
پی باڈی اعزاز   (Mysterious Castles of Clay ) (1978)  ویکی ڈیٹا پر (P166) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
باضابطہ ویب سائٹ wwf.panda.org
worldwildlife.org (US)
  1. https://www.spiegel.de/wissenschaft/natur/wwf-was-genau-ist-der-world-wide-fund-for-nature-a-1256406.html — اخذ شدہ بتاریخ: 20 مارچ 2020
  2. "Carter Roberts"۔ World Wildlife Fund (بزبان انگریزی) 

عالمی فنڈ برائے فطرت ( WWF ) سوئٹزرلینڈ میں قائم ایک بین الاقوامی غیر سرکاری تنظیم ہے جس کی بنیاد 1961ء میں رکھی گئی تھی، جو جنگلات کے تحفظ اور ماحولیات پر انسانی اثرات کو کم کرنے کے شعبے میں کام کرتی ہے۔ [1] اسے پہلے ورلڈ وائلڈ لائف فنڈ (عالمی جنگلی حیات فنڈ) کا نام دیا گیا تھا، جو کینیڈا اور ریاستہائے متحدہ میں اس کا سرکاری نام ہے۔

پانڈا جو ڈبلیو ڈبلیو ایف کے لوگو میں شامل ہے بلکہ اس کی علامت بن گیا ہے۔

ورلڈ وائیڈ فنڈ برائے فطرت دنیا کی سب سے بڑی تحفظ کی تنظیم ہے، جس کے دنیا بھر میں 50 لاکھ سے زیادہ حامی ہیں، جو 100 سے زیادہ ممالک میں کام کر رہے ہیں اور تقریباً 3,000 تحفظ اور ماحولیاتی منصوبوں کی حمایت کر رہے ہیں۔ [2] انھوں نے سنہ 1995ء سے اب تک تحفظ کے 12,000 سے زیادہ اقدامات میں ایک ارب ڈالر سے زیادہ کی سرمایہ کاری کی ہے۔ [3] یہ ایک ایسی تنظیم ہے جس نے سنہ 2020ء میں، 65 فیصد عطیات افراد اور وصیتوں سے، 17 فیصد حکومتی ذرائع (جیسے ورلڈ بینک، DFID اور USAID ) اور 8 فیصد کارپوریشنز سے حاصل کیے گئے ہیں۔ [4] [5]

فنڈ کا مقصد "کرہ ارض کے قدرتی ماحول کے انحطاط کو روکنا اور ایک ایسے مستقبل کی تعمیر کرنا ہے جس میں انسان فطرت کے ساتھ ہم آہنگی کے ساتھ زندگی بسر کریں۔" [6] سنہ 1998ء سے فنڈ کی طرف سے ہر دو سال بعد زندہ سیارے کی رپورٹ شائع کی جاتی ہے۔ یہ ایک زندہ سیارے کے اشاریوں اور ماحولیاتی اثرات کے حساب کتاب پر مبنی ہے۔ [1] اس کے علاوہ، ڈبلیو ڈبلیو ایف نے دنیا بھر میں کئی قابل ذکر مہمات شروع کی ہیں، جن میں ارتھ آور اور قرض برائے تبدیلی فطرت شامل ہیں اور اس کا موجودہ کام ان چھ شعبوں کے ارد گرد ترتیب دیا گیا ہے: خوراک، آب و ہوا، میٹھا پانی، جنگلی حیات، جنگلات اور سمندر۔ [1] [3]

ڈبلیو ڈبلیو ایف کو اس کے مبینہ کارپوریٹ تعلقات کی وجہ سے تنقید کا نشانہ بنایا گیا تھا [7] اور اسے ماحولیاتی محافظوں کی حمایت کرنے پر تنقید کا سامنا کرنا پڑا ہے جنھوں نے جمہوریہ کانگو کے مجوزہ میسوک ڈجا نیشنل پارک میں افریقی جنگلات کے باشندوں کو پکڑا۔ [8]

WWF فاؤنڈیشن پلیٹ فارم F20 کے اسٹیئرنگ گروپ کا حصہ ہے، جو فاؤنڈیشنز اور فلاحی تنظیموں کا ایک بین الاقوامی نیٹ ورک ہے۔ [9]

ہارورڈ یونیورسٹی نے WWF پر ایک کیس اسٹڈی شائع کیا جس کا عنوان تھا، "پیرس معاہدے کی طرف مذاکرات: ڈبلیو ڈبلیو ایف اور 2015ء کے موسمیاتی معاہدے میں جنگلات کا کردار " (Negotiating Toward the Paris Accords: WWF & the Role of Forests in 2015 Climate Agreement

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ ا ب پ "History | WWF"۔ World Wildlife Fund۔ 13 اپریل 2020 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 22 جنوری 2019 
  2. "WWF conservation projects around the world"۔ 12 فروری 2021 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 06 فروری 2009 
  3. ^ ا ب "WWF – Endangered Species Conservation"۔ World Wildlife Fund۔ 17 اپریل 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 18 اپریل 2018 
  4. "How is WWF run?"۔ 13 جون 2022 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 13 جون 2022 
  5. WWFN-International Annual Review (PDF)۔ World Wide Fund for Nature۔ 2020۔ صفحہ: 60۔ 10 اکتوبر 2022 میں اصل (PDF) سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 13 جون 2022 
  6. "WWF's Mission, Guiding Principles and Goals"۔ WWF۔ 13 جنوری 2019 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 13 جنوری 2019 
  7. "PANDA-ING TO THE SOYA BARONS?"۔ Corporate Watch۔ 30 September 2009۔ 25 جولا‎ئی 2011 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 09 دسمبر 2009 
  8. "Green Violence: 'Eco-Guards' Are Abusing Indigenous Groups in Africa"۔ Yale E360۔ 19 جولا‎ئی 2020 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 07 جولا‎ئی 2020 
  9. "F20 – For a transformation that leaves no one behind – F20 – For a transformation that leaves no one behind"۔ 16 نومبر 2020 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 18 نومبر 2020