غلط اطلاعات

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

غلط اطلاعات یا غلط معلومات (انگریزی: Misinformation) ان تمام کوششوں کو کہا جاتا ہے جن کا مقصد اصالتًا غلط اطلاعات کو فروغ دینا ہے۔ جین سولومون نے غلط اطلاعات اور تلبیس اطلاعات کا فرق بھی بیان کیا ہے، ان کی تعریف کے مطابق “غلط اطلاعات” محض غلط معلومات ہوتی ہیں، خواہ نیت گمراہی پھیلانا ہو یا نہ ہو ، لیکن "تلبیس اطلاعات" اس معلومات کو کہتے ہیں جس کا واحد مقصد گمراہ کن معلومات کو عام کرنا ہو۔

ہر سال آن لائن ڈکشنری ڈکشنری ڈاٹ کام لفظ کا انتخاب کرتی ہیں۔ 2018ء کے لیے انہوں نے لفظ “مس انفارمیشن” یعنی غلط اطلاعات کو منتخب کیا ہے۔ اپنے اس انتخاب کا جواز پیش کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ہم نے رجحانات کا جو نیا ڈیٹا جمع کیا، اس میں بہت سے ایسے الفاظ ملے ہیں جو انسان کے سچائی یا حقیقت کے ساتھ تعلق کا مظہر تھے۔ اور یوں لفظ “مس انفارمیشن” پر ہماری توجہ مرکوز ہوئی۔[1] یہ رجحانات صارفین کی اس لفظ کی اور اس کے استعمالات کی تحقیق اور عمومی عالمی ذرائع ابلاغ میں الفاظ کے استعمال سے پتہ چلتے ہیں۔

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. [https://www.urduvoa.com/a/misinformation-dictionary-english-word-of-the-year/4686636.html 'مس انفارمیشن' اس سال کا سب سے توجہ طلب انگریزی لفظ]

مزید پڑھیے[ترمیم]

  • Bakir, V. & McStay, A. (2017). Fake News and The Economy of Emotions: Problems, causes, solutions. Digital Journalism, 1–22. https://doi.org/10.1080/21670811.2017.1345645
  • Allcott, H., & Gentzkow, M. (2017). Social Media and Fake News in the 2016 Election. Journal of Economic Perspectives, 31(2), 211–236. https://doi.org/10.1257/jep.31.2.211
  • Baillargeon, Normand (4 January 2008). A short course in intellectual self-defense. Seven Stories Press. ISBN 978-1-58322-765-7. Retrieved 22 June 2011.
  • Christopher Murphy (2005). Competitive Intelligence: Gathering, Analysing And Putting It to Work. Gower Publishing, Ltd.. pp. 186–189. ISBN 0-566-08537-2. — a case study of misinformation arising from simple error
  • Jürg Strässler (1982). Idioms in English: A Pragmatic Analysis. Gunter Narr Verlag. pp. 43–44. ISBN 3-87808-971-6.
  • Christopher Cerf, Victor Navasky (1984). The Experts Speak: The Definitive Compendium of Authoritative Misinformation. Pantheon Books.