کنایہ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

کنایہ، علم بیان میں یہ وہ کلمہ ہوتا ہے جس کے معنی مبہم اور پوشیدہ ہو۔ ان کا سمجھنا کسی قرینے کا محتاج ہو، وہ اپنے حقیقی معنوں کی بجائے مجازی معنوں میں اس طرح استعمال ہوا ہو کہ اس کے حقیقی معنی بھی مراد لیے جا سکتے ہوں۔ یعنی بولنے والا ایک لفظ بول کر اس کے مجازی معنوں کی طرف اشارہ کر دے گا، لیکن اس کے حقیقی معنی مراد لینا بھی غلط نہ ہو گا۔

مثلاً
  • ’’زید کو آپ نے سر پر چڑھایا ہے۔ ‘‘ (حقیقت میں اس کے معنی یہ ہے کہ زید کو آپ نے بگاڑا ہے۔)
  • ’’بال سفید ہو گئے لیکن عادتیں نہ بدلیں۔ ‘‘ (یہاں بال سفید ہونے سے مراد بڑھاپا ہے لیکن حقیقی معنوں میں بال سفید ہونا بھی درست ہے۔)

مز ید دیکھیے[ترمیم]