کٹھ بولی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

کٹھ بولی یا سلینگ (انگریزی: Slang) ایک ایسی زبان ہے جو ان الفاظ، محاوروں اور لفظوں کے استعمالات پر مشتمل ہے جو غیر رسمی اندراج سے تعلق رکھتی ہے اور اسے کسی ذیلی زمرے کے افراد استعمال کرنا پسند کرتے ہیں۔ یہ معیاری زبان کی زبان زد عام لفظیات سے بہت مختلف ہے۔ اس زبان کا استعمال یا تو اس گروہ یا زمرے کی ایک الگ شناخت قائم کرتا ہے، یا غیر گروہی افراد سے ان کو ممتاز کرتا ہے، یا پھر دونوں ہی باتین ممکن ہو سکتی ہیں۔

ممبئی کی کٹھ بولی[ترمیم]

ممبئی کی کبھ بولی یا وہ زبان جسے ممبئی شہر کے کم تعلیم یافتہ یا مجرم پیشہ لوگ استعمال کرتے ہیں، جیساکہ کئی بالی وڈ فلموں میں دکھایا گیا ہے، وہ کچھ اس طرح ہے:

  • خرچہ پانی دینا : مار پیٹ کرنا
  • بھائی : اسمگلر
  • پتلی گلی سے نکل لینا: کسی شورش زدہ مقام یا جھگڑے سے بھاگنا
  • کھولی: رہنے کی جگہ
  • ایڑا : پاگل (مؤنث: ایڑی)
  • گھوڑا : پندوق

عام اردو میں کٹھ بولی الفاظ[ترمیم]

اردو کے غیر رسمی الفاظ ومحاورات کو کئی بار ’’کٹھ بولی ‘‘ کے زمرے میں شامل کیا جاتا ہے، اگر چیکہ اس بات پر کئی علمی بحثیں کی جاتی ہیں۔ اس موضوع پرایک مطبوعہ تحقیقی کام شائع ہو چکا ہے۔ شعبۂ اردو جامعہ کراچی سے وابستہ ڈاکٹر رؤف پاریکھ نے اردو کے غیر رسمی الفاظ و محاورات کی اولین لغت مرتب کر دی ہے۔جس میں مصنف نے سلینگ کے رائج تصور یا اس کی بنیادی خصوصیات کو بھی واضح کر دیا ہے۔مگر اُنہوں نے زبان میں رائج گالیاں، بے ہودہ، بازاری اور فحش الفاظ لغت میں شامل نہیں کئے ۔اگرچہ انگریزی کے لفظ ’’سلینگ‘‘ میں اس مفہوم کے تمام الفاظ پوری طرح شامل ہیں ۔ انگریزی میں سلینگ پر جو کام ہوا ہے اُس میں بازاری الفاظ اور گالیاں بھی شاملِ لغت کی گئی ہیں۔[1]

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. محمد طاہر۔ "اولین اردو 'سلینگ' لغت، ڈاکٹر رؤف پاریکھ کا منفرد کام"۔ سابقہ جریدہ وجود کی ویب سائٹ۔ وجود جریدے کا انتظامیہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 17 جولا‎ئی 2019۔