گفتاری زبان

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

گفتاری زبان  یا بولی جانے والی زبان ، تحریری زبان کے برخلاف ایسی   زبان  ہوتی ہے جو واضح آوازوں سے ملکر بنتی ہے ۔ بہت سی زبانوں کی کوئی تحریری شکل نہیں ہوتی اور وہ صرف بولی جاتی ہیں۔ بولی یا صوتی زبان  ہے وہ ہوتی ہے جو حنجرہ اور حلق سے پیدا ہوں ، بر خلاف اشاراتی زبان کے جس میں ہاتھ اور چہرہ استعمال ہوتے ہیں . اس اصطلاح "گفتاری زبان" کا کبھی کبھی مطلب صرف بولی جانے والی زبانوں کے لیے  استعمال ہوتا ہے ، خاص طور پر ماہِرِین لَسانِيات کی جانب سے ، یوں یہ تینوں اصطلاحات مترادفات بنتے ہیں سوائے اشاراتی زبان  کو چھوڑ کر .جبکہ  کچھ دانشور اشاراتی زبان کو بھی بولی جانے والی زبان کے طور پر تصور کرتے ہیں  ، خاص طور پر جب اشاروں کی لکھی ہوئی نقل سے پڑھا جاتا ہے۔ [1][2][3]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. نورا Groce (1985) یہاں پر ہر کوئی بات سائن ان کریں زبان: موروثی بہرا پن پر مرتا داھ کی باری
  2. ہیری Hoemann (1986) متعارف کرانے کے لیے امریکی سائن ان کریں زبان
  3. بروکس اور Kempe (2012) زبان کی ترقی