ہنری پرین

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

ہنری پرین (Henri Pirenne)
مشہور مغربی مورخ ہے۔ وہ 1862ء میں بلجیم میں پیدا ہوا اور 1935ء میں وفات پائی۔ جرمنی نے بلجیم پر قبضہ کیا تو وہاں وہ تاریخ کا پروفیسر تھا۔ اس نے جر من نقطۂ نظر سے تاریخ پڑھانے سے انکار کر دیا۔ چنانچہ جرمنوں نے اس کو جیل میں ڈال دیا۔ وہ 1916ء سے 1918ء تک جیل میں رہا۔ جیل خانہ میں اس کو مطالعہ کے لیے کتب حاصل نہ تھیں۔ اس نے محض یادداشت سے ایک کتاب، تاریخ یورپ (History of Europe) لکھی۔ یہ کتاب اصلاً جرمن زبان میں تھی، پھر اس کا انگریزی میں ترجمہ ہوا۔ اب وہ یورپ میں داخل نصاب ہے۔ کتاب کے دیباچہ میں مصنف نے معذرت خواہانہ انداز میں لکھا ہے کہ حوالہ کی کتابیں نہ ہونے کی وجہ سے میں اپنی یہ کتاب محض یا دداشت سے لکھ رہاہوں۔ تاریخ کے موضوع پر یادداشت سے لکھنے کا طریقہ صحیح نہیں۔ مگر جیل خانہ کی زندگی میں میرے لیے اس کے سوا کوئی دوسری صورت بھی نہیں۔ اصل چیز وقت کو مارنا ہے اور وقت کو یہ موقع نہیں دینا ہے کہ وہ خود آدمی کو مار ڈالے:

(The essential thing is to kill time and not allow oneself to be killed by it ( p. 21

[1]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. مولانا وحید الدین خان،ڈائری جلد اول (1983ء-1984ء) ،ص:376