یوسف نصی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

ڈوم یا ڈون یوسف نصی (یا نسی؛ بھی ایک میں جؤاو میقویس / میقاس اور پرتگالی میں ڈوم جؤاو میگاس مینڈس کے نام سے جانا جاتا ، اطالوی میں جوزف نسی، اور ترکی میں یصف نصی، (1524ء پرتگال - 1579ء قسطنطنیہ ) پرتگالی سفاردی سفارتکار ، منتظم، مینڈس /بینوینسائٹ خاندان کا رکن ،ڈونا گارشیا مینڈس نصی کا بھتیجا اور سلطان سلیمان اول اور ان کے بیٹے سلیم ثانی کے دور اقتدار میں سلطنت عثمانیہ کی بااثر شخصیت تھا۔ وہ یہود کا بڑا خیرخواہ تھا۔ [2] وہ بطور درباری یہودی ، [3] طبریہ کا امیر تعینات کیا گیا تھا،[4] عثمانی شام میں یہودی آبادکاری اورصنعت کی حوصلہ افزائی ؛ کوشش ناکام ہو گئی اور بعد میں، اسے ناکسوس کا ڈیوک (آرکھیپیلاگو ڈچی )مقرر کیا گیا۔[5] نصی نے جمہوریہ وینس کے ساتھ جنگ شروع کی ، جس کے نتیجے میں وینس نے قبرص جزیرے کو عثمانیوں کے ہاتھوں کھو دیا۔ سلیم کی موت کے بعد، عثمانی دربار میں وہ اپنا اثرورسوخ قائم نہ رکھ سکا، لیکن اس کی بقیہ زندگی تک اسے اعزازات اور وظائف دئے جاتے رہے۔

  1. "ترجمہ سکھلائی"۔
  2. Yosef Eisen (2004). Miraculous journey: a complete history of the Jewish people from creation to the present.
  3. Hillgarth, p.171
  4. Pasachoff & Littman, p.163
  5. Freely, p.168