تحریک واپسی سوئے قدس

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش

تحریک واپسی سو القدس (چینی:传回耶路撒冷运动) چین اور یروشلم کے درمیان بسنے والے تمام بدھ، ہندو اور مسلمان باشندوں کو عیسائی بنانے کیلیے، چینی گھریلو کلیساؤں کا ایک خواب ہے۔ یہ تحریک 1920ء میں قائم ہوئی تھی مگر اشتراکیوں کی جانب سے اذیت کے خوف نے اسے کئی دہائیوں تک زیر زمین چلے جانے پر مجبور کردیا۔ اب اسکا ارادہ دنیا کے 51 ممالک میں شاہراہ ریشم کے ذریعے کم از کم 100،000 تبلیغیوں کو بھیجنے کا ہے، یہ قدیم تجارتی شاہراہ، چین سے بحیرۂ روم تک راہ فراہم کرتی ہے۔

بیرونی روابط[ترمیم]