ڈیوڈ کیمرن

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش
ڈیوڈ کیمرن

ڈیوڈ وِلیئم ڈانلڈ کیمرن (انگریزی: David William Donald Cameron) (پیدائش: 9 اکتوبر 1966) برطانیہ کے وزیرِ اعظم، راجکوش کے مالکِ اوّل، ملکی ملازمت کے وزیر، اور کانسرویٹِو پارٹی نامی سیاسی جماعت کے سربراہ ہیں۔ وہ رکنِ پارلیمان کے طور پر وِٹنی کے علاقے کی نُمائندگی کرتے ہیں۔

کیمرن نے یُونورسٹی آف آکسفورڈ میں فلسفہ، سیاست اور مُعاشیات (پی پی ای) پڑھی اور درجۂِ اوّل آنرز ڈگری حاصل کیا. اس کے بعد وہ کانسرویٹو محکمۂِ تحقیقات میں داخل ہوئے، اور نارمن لمانٹ کے خصوصی مشیر بنے، اور پھر مائکل ہاورڈ کے بنے۔ وہ سات سال کارلٹن کمیُونِکیشنز (ایک ٹی وی کمپنی) کے اجتماعی مُعاملات کے ناظم تھے۔

سٹَیفورڈ میں، 1997 کو ان کی پہلی پالیمان میں داخل ہونے کی امّید واری میں ان کی شکست ہوئی، مگر 2001 کو وہ وِٹنی نامی آکسفورڈشائر کنسٹِچؤَنسی کے رُکنِ پارلیمان منتخب ہوئے۔ دو سال بعد انہیں حزبِ مخالف کی پارلیمان میں سب سے آگے نشستوں میں جگہ ملی، اور جلدی سے انہوں نے اپنا رُتبہ بڑھایا، اور چُنانچِہ 2005 کے عام انتخابات میں راج نیتی کے رابطہ کار بنے۔ ان کی عوامی صورت ایک جوان اور مُعتدل امید وار کی تھی، جسے نوجوان ووٹر پسند کریں گے، اور 2005 کو کانسرویٹو پارٹی کے راہ نُمائی چناؤ میں وہ جیت گئے۔

2010 کے عام انتخابات میں، جو کہ 6 مئی کو واقع ہوئے، کانسرویٹو پارٹی کو 'ہنگ پالیمان' (یعنی وہ پارلیمان جس میں کوئی بھی پارٹی کو نشستوں کی اکثریت نہیں حاصل ہو) میں 307 نشستیں ملیں۔ پانچ دنوں کے شدید مذاکرات کے بعد، کیمرن نے لِبرل ڈَیموکرَیٹ سیاسی جماعت کے ساتھ اتّحادی حکومت بنائی۔ تینتالیس سالہ کیمرن گزشتہ 198 سال موجودہ ارل آف لِورپُول کے بعد کا سب سے جوان برطانوی وزیرِاعظم بنے۔ کیمرن دوسری عالمی جنگ کے بعد کی پہلی اتحادی حکومت کی راہ نمائی کر رہے ہیں۔