تاریخ شیرہ شاہ سوری

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

تاریخ شیر شاہ سوری 1580ء میں ایک تاریخی کام تھا جو  عباس خان سروانی،[1] ایک وقیہ-نویس نے مغل شہنشاہ اکبر کی حکمرانی میں مرتب کیا۔  یہ کام  اکبر نے سونپا تھا تاکہ  شیر شاہ کی انتظامیہ بارے  تفصیلی دستاویزات فراہم کی جا سکیں -  اکبر کے والد ہمایوں کو شیر شاہ سوری نے شکست دی تھی اردو: تاریخ شير شاہ سوری[2]

عباس نے تاریخ شیر شاہ سوری اپنے مخصوص مقامی ثقافتی اسلوب اختیار کیے    لکھی  جو اس وقت کے مروجہ معیار فارسی سے یکسر مخلتف تھی۔

جدید تاریخ[ترمیم]

اس تالیف کی وجہ سے تاریخ قرون وسطی بھارت کو بہت فائدہ ہوا۔  شکریہ  ان افراد کی کوششوں  کا  K. Qanungo, H. Haig ، اے رحیم او ر  صدیقی.[3]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. Abbas Sarwani, I.H. Siddiqui, The Encyclopaedia of Islam, Vol. XII, ed. P.J.Bearman, T. Bianquis, C.E.Bosworth, E. van Donzel and W.P.Heinrichs, (Brill, 2004), 1.
  2. Tarikh-i-Sher Shahi (1580)۔ "Táríkh-i Sher Sháhí; or, Tuhfat-i Akbar Sháhí, of 'Abbás Khán Sarwání. CHAPTER I. Account of the reign of Sher Sháh Súr."۔ Sir H. M. Elliot۔ London: Packard Humanities Institute۔ صفحہ 77۔ اخذ شدہ بتاریخ 2010-09-04۔
  3. Abbas Khān Sarwānī and the Tuḥfa-yi Akbar Shāhī. A Critical Study, Rahim Raza, East and West, 143.