جزیرہ نما کریمیا

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
دیگر استعمالات کے لیے، دیکھیے کریمیا۔
جزیرہ نما کریمیا
Satellite picture of Crimea, Terra-MODIS, 05-16-2015.jpg 

مقام
متناسقات 44°56′00″N 34°06′00″E / 44.933347222222°N 34.099927777778°E / 44.933347222222; 34.099927777778  ویکی ڈیٹا پر متناسقاتی مقام (P625) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
رقبہ (كم²) 27000 مربع کلومیٹر  ویکی ڈیٹا پر رقبہ (P2046) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
حکومت
ملک Flag of Ukraine.svg یوکرین
Flag of Russia.svg روس  ویکی ڈیٹا پر ملک (P17) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
کل آبادی 2340921   ویکی ڈیٹا پر آبادی (P1082) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
نحوی غلطی
جزیرہ نما کریمیا

جزیرہ نما کریمیا (انگریزی: Crimean Peninsula، روسی: Кры́мский полуо́стров، یوکرینی: Кри́мський піво́стрів، کریمیائی تاتاری: Къырым ярымадасы) جسے کریمیا (انگریزی: Crimea، روسی: Крым، یوکرینی: Крим، کریمیائی تاتاری: Къырым) بھی کہا جاتا ہے بحیرہ اسود کے شمالی ساحلوں پر واقع ہے۔ اسے جزیرہ نما کریمیا کے باعث جمہوریہ کریمیا کا نام دیا گیا۔

جمہوریہ کا کل رقبہ 26 ہزار 200 مربع کلومیٹر اور 2005ء کے مطابق آبادی 19 لاکھ 94 ہزار 300 ہے۔ اس کا دار الحکومت سیواستاپول ہے۔

یہ کریمیائی تاتاری باشندوں کا آبائی وطن ہے جو اب نسلی اقلیت میں تبدیل ہوچکے ہیں اور کریمیا کی آبادی کا صرف 13 فیصد ہیں۔

یہ علاقہ 1475ء سے 1774ء تک سلطنت عثمانیہ کا باجگذار رہا جس کے بعد 1783ء میں سلطنت روس نے اس پر قبضہ کرکے خانان کریمیا کی حکومت کا خاتمہ کر دیا۔

سوویت روس کے خاتمے کے بعد کریمیا نوآزاد مملکت یوکرین کا حصہ قرار دیا گیا۔ 5 اکتوبر 1992ء کو کریمیا نے خود مختاری کا اعلان کر دیا لیکن بعد ازاں یوکرین میں خود مختار جمہوریہ کے طور پر موجودگی پر رضامندی ظاہر کرلی۔

یہ علاقہ کسی زمانے میں مسلم اکثریتی تھا لیکن زار روس اور سوویت اتحاد کے عہد میں یہاں مسلمانوں کا وسیع پیمانے پر قتل عام کیا گیا (دیکھیے: کریمیائی تاتاریوں کی جبری ملک بدری) اور انہیں دیگر علاقوں کو منتقل کر کے یہاں روسی باشندوں کو آباد کیا گیا جس کے باعث اب مسلمان یہاں اقلیت میں ہیں۔

متعلقہ مضامین[ترمیم]


نگار خانہ[ترمیم]