جنوبی افریقا قومی خواتین کرکٹ ٹیم

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
South Africa
Refer to caption
South Africa cricket crest
عرفیتProteas
ایسوسی ایشنCricket South Africa
عملہ
کپتانDane van Niekerk
کوچHilton Moreeng
بین الاقوامی کرکٹ کونسل
آئی سی سی حیثیتFull member (1909)
آئی سی سی خطہAfrica
آئی سی سی درجہ بندی موجودہ[3] بہترین کارکردگی
ایک روزہ 4th 4th (02-Oct-2020)[1]
ٹی20 5th [2] 5th
خواتین ٹیسٹ کرکٹ
پہلا ٹیسٹv  انگلستان at St George's Park Cricket Ground، پورٹ الزبتھ; 2–5 دسمبر 1960
آخری ٹیسٹv  بھارت at Srikantadatta Narasimha Raja Wadeyar Ground، میسور; 16–19 نومبر 2014
ٹیسٹ کھیلے جیتے/ہارے
کل[4] 12 1/5
(6 draws)
خواتین ایک روزہ بین الاقوامی
پہلا ایک روزہv  آئرلینڈ at Stormont، بیلفاسٹ; 5 اگست 1997
آخری ایک روزہv  پاکستان at کنگزمیڈ کرکٹ گراؤنڈ، ڈربن; 26 جنوری 2021
ایک روزہ کھیلے جیتے/ہارے
کل[6] 199 100/88
(3 ties, 8 no result)
اس سال[7] 3 3/0
(0 ties, 0 no result)
خواتین کرکٹ عالمی کپ میں شرکت6 (پہلی بار 1997)
بہترین نتیجہSemi finalists (2000، 2017)
خواتین کرکٹ عالمی کپ کوالیفائر میں شرکت3 (پہلی بار 2008)
بہترین نتیجہChampions (2008)
خواتین ٹوئنٹی20 بین الاقوامی
پہلا ٹی20v  نیوزی لینڈ at the کاؤنٹی گراؤنڈ، ٹانٹن، ٹانٹن; 10 اگست 2007
آخری ٹی20v  پاکستان at کنگزمیڈ کرکٹ گراؤنڈ، ڈربن; 3 فروری 2021
ٹی20 کھیلے جیتے/ہارے
کل[8] 114 51/61
(0 ties, 2 no result)
اس سال[9] 3 2/1
(0 ties, 0 no result)
خواتین کرکٹ عالمی کپ میں شرکت6 (پہلی بار 2009)
بہترین نتیجہSemi finalists (2014، 2020)
3 فروری 2021 تک

جنوبی افریقا خواتین قومی کرکٹ ٹیم، جسے پروٹیز بھی کہتے ہیں، بین الاقوامی خواتین کی کرکٹ میں جنوبی افریقہ کی نمائندگی کرتی ہے۔ جنوبی افریقا خواتین کرکٹ ٹیم آئی سی سی ویمن چیمپین شپ (کھیل کی اعلیٰ سطح) میں حصہ لینے والی آٹھ ٹیموں میں سے ایک ٹیم ہے۔ یہ ٹیم کرکٹ جنوی افریقا (سی ایس اے) کے زیر انتظام ہے اور بین الاقوامی کرکٹ کونسل (آئی سی سی) کی ایک مکمل رکن ہے۔

جنوبی افریقہ نے اپنے ٹیسٹ کیریئر کا آغاز 1960 میں انگلینڈ کے خلاف کیا تھا اور اس سطح پر کھیلنے والی چوتھی ٹیم بنی ( آسٹریلیا، انگلینڈ اور نیوزی لینڈ کے بعد )۔ جنوبی افریقہ اور دیگر عوامل کے کھیلوں کے بائیکاٹ کی وجہ سے، ٹیم نے 1972 سے 1997 کے درمیان میں کوئی بین الاقوامی میچ نہیں کھیلا تھا۔ جنوبی افریقہ اگست 1997 میں آئرلینڈ کے خلاف ون ڈے انٹرنیشنل (ون ڈے) میچ میں بین الاقوامی مقابلے میں واپس ائی اور دوبارہ بین الاقوامی کرکٹ کا آغاز کیا۔ بعد میں اس نے سال 1997 میں ہندوستان میں ہونے والے ورلڈ کپ میں حصہ لیا تھا۔ اس ٹیم نے اس کے بعد سے ورلڈ کپ کے ہر ایڈیشن میں حصہ لیا ہے اور سن 2000 اور 2017 میں ٹورنامنٹ کے سیمی فائنل میں جگہ بنائی تھی۔ جنوبی افریقہ نے ویمن ورلڈ ٹی ٹوئنٹی کے ہر ایڈیشن میں بھی اسی حصہ لیا ہے اور بنگلہ دیش میں کھیلے گئے 2014 ایڈیشن کا سیمی فائنل اپنے نام کیا۔

مقابلے[ترمیم]

خواتین کرکٹ ورلڈکپ[ترمیم]

  • 1973 سے 1993: حصہ نہیں لیا
  • 1997: کوارٹر فائنل
  • 2000: سیمی فائنل
  • 2005: 7واں نمبر
  • 2009: 7واں نمبر
  • 2013: 6واں نمبر
  • 2017: سیمی فائنل

آئی سی سی خواتین کرکٹ ٹی20[ترمیم]

  • 2009: گروپ اسٹیج
  • 2010: گروپ اسٹیج
  • 2012: گروپ اسٹیج
  • 2014: سیمی فائنل
  • 2016: گروپ اسٹیج
  • 2018: گروپ اسٹیج
  • 2020: سیمی فائنل
آئی سی سی خواتین چیمپیئنشپ
خواتین ورلڈ کپ کوالیفائر
  • 2008: فاتح
  • 2011: چوتھا نمبر
  • 2017: دوسرا نمبر
آئی سی سی خواتین کرکٹ مقابلہ (ODI)
آئی سی سی خواتین کرکٹ مقابلہ (ٹی20)
  • 2010: تیسرا نمبر

ریکارڈ[ترمیم]

ٹیسٹ کرکٹ[ترمیم]

سب سے قدیم اور اصل میں صرف خواتین کی طرف سے بین الاقوامی سطح پر کھیل کی جانے والی فارم کے باوجود، جنوبی افریقہ نے صرف بارہ ٹیسٹ میچ کھیلے ہیں (ان میں سے آدھے صرف انگلینڈ کے خلاف)، جنوبی افریقا نے حالیہ ٹیسٹ بھارت کے خلاف 2014 میں کھیلا تھا۔ ٹوئنٹی 20 کرکٹ نے ایک بہت زیادہ نمایاں اور منافع بخش کردار ادا کیا ہے، جس نے ٹیسٹ کرکٹ کو تقریباً خواتین کے کھیل سے مکمل طور پر ختم کر دیا ہے۔

سب سے زیادہ کل 316 بمقابلہانگلینڈ 7 اگست 2003

نتائج کا خلاصہ

مخالفت دورانیہ میچ کھیلے جیتے ہارے برابر ڈرا
انگلینڈ 1960–2003 6 0 2 0 4
ہندوستان 2001–2014 2 0 2 0 0
نیدرلینڈز 2007-2007 1 1 0 0 0
نیوزی لینڈ 1972-1972 3 0 1 0 2
کل 1960–2014 12 1 5 0 6

انفرادی ریکارڈ[ترمیم]

زیادہ میچ[ترمیم]
درجہ کھلاڑی دورانیہ میچز
1 جینیفر گوؤ 1960–1972 7
لورنا وارڈ 1960–1972 7
3 مورن پینے 1960–1972 5
4 کری زیلڈا برطانوی 2002–2007 4
پامیلا ہولیٹ 1960–1961 4
آئیلین ہورلی 1960–1961 4
شیلاگ نیفٹ 1960–1961 4
ڈیلین ٹربلاینچ 2002–2007 4
یوون وین مینٹز 1960–1961 4
سب سے زیادہ رنز[ترمیم]
درجہ کھلاڑی دور میچ اننگز رنز زیادہ سکور اوسط 100 50
1 جینیفر گوؤ 1960–1972 7 14 256 51 * 25.60 0 1
2 آئیلین ہورلی 1960–1961 4 8 240 96 * 34.28 0 1
3 ایلیسن ہوڈکنسن 2002–2003 3 6 239 95 39.83 0 2
4 شیلاگ نیفٹ 1960–1961 4 8 211 68 30.14 0 2
5 ڈیلین ٹربلاینچ 2002–2007 4 7 186 83 26.57 0 1
یوون وین مینٹز 1960–1961 4 8 186 105 * 31.00 1 0

ایک روزہ بین الاقوامی[ترمیم]

سب سے زیادہ مجموعہ 337/5 (50 اوورز) بمقابلہ آئرلینڈ 11 مئی 2017

نتائج کا خلاصہ [10]

ٹیم دور میچ کھیلے جیتے ہارے برابر بے نتیجہ
آسٹریلیا 1997–2017 14 0 13 1 0
بنگلہ دیش 2012–2018 17 15 2 0 0
ڈنمارک 1997-1997 1 1 0 0 0
انگلینڈ 1997–2018 38 8 29 0 1
ہندوستان 1997–2019 22 7 14 0 1
آئرلینڈ 1997–2017 17 15 1 0 1
نیدرلینڈز 2000–2011 7 7 0 0 0
نیوزی لینڈ 1999–2020 16 5 11 0 0
پاکستان 1997–2021 23 17 4 1 1
سری لنکا 2000–2019 20 14 4 0 2
ویسٹ انڈیز 2005–2018 23 10 10 1 2
کل 1997–2021 198 99 88 3 8

انفرادی ریکارڈ[ترمیم]

زیادہ میچ[ترمیم]
پوزیشن کھلاڑی دور میچز
1 مگنون ڈو پریز 2007–2018 115
2 ٹریشا چیٹی 2007–2018 105
3 ڈین وین نائکرک 2009–2018 95
4 میریزanن کیپ 2009–2018 93
5 شبنم اسماعیل 2007–2018 86

ٹوئنٹی 20 انٹرنیشنل کرکٹ[ترمیم]

سب سے زیادہ مجموعہ 205/1 (20 اوورز) بمقابلہ نیدرلینڈز 14 اکتوبر 2010

نتائج کا خلاصہ

بمقابلہ دور میچ کھیلے جیتے ہارے برابر بی نتیجہ
آسٹریلیا 2009–2020 5 0 5 0 0
بنگلہ دیش 2012–2018 10 9 1 0 0
انگلینڈ 2007–2020 19 3 15 0 1
ہندوستان 2014–2019 10 2 7 0 1
آئرلینڈ 2008–2016 10 9 1 0 0
نیدرلینڈز 2010-2010 1 1 0 0 0
نیوزی لینڈ 2007–2020 11 1 4 0 0
پاکستان 2010–2021 17 5 4 0 0
سری لنکا 2012–2019 12 5 3 0 0
تھائی لینڈ 2020-2020 1 1 0 0 0
ویسٹ انڈیز 2009–2018 17 2 10 0 0
کل 2007–2021 113 51 60 0 2

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. "Australia Women remain No.1 in ODIs, T20Is after annual update". ICC. 2 اکتوبر 2020. اخذ شدہ بتاریخ 2 اکتوبر 2020. 
  2. "ICC Ranking for T20 teams International Cricket Council". www.icc-cricket.com (بزبان انگریزی). اخذ شدہ بتاریخ 04 فروری 2021. 
  3. "ICC Rankings". International Cricket Council. 
  4. "Women's Test matches - Team records". ESPNcricinfo. 
  5. "Women's Test matches - 2021 Team records". ESPNcricinfo. 
  6. "WODI matches - Team records". ESPNcricinfo. 
  7. "WODI matches - 2021 Team records". ESPNcricinfo. 
  8. "WT20I matches - ٹیم records". ای ایس پی این کرک انفو. 
  9. "عالمی خواتین ٹی20 - 2021ء ٹیم records". ای ایس پی این کرک انفو. 
  10. "South Africa Women Cricket Team Records & Stats | ESPNcricinfo.com". Cricinfo. اخذ شدہ بتاریخ 23 جنوری 2021. 

کتابیات[ترمیم]