حافظ حدیث

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

احادیث کی کتب کے حافظ کو حافظ احادیث کہا جاتا ہے۔ علم حدیث میں ایک لاکھ (100000) احادیث حفظ کرنے والوں کو حافظ کہا جاتا ہے۔ اصطلاح حدیث کے مطابق وہ محدث جو ایک لاکھ احادیث کی اسانید ومتون کا عالم ہو اسے حافظ الحدیث کہا جاتا ہے [1] ۔ کیا ہی تعجب کی بات ہے کہ قرآن پاک میں تقریباً 80 ہزار "الفاظ" ہیں جن کو حفظ کرنا ایک حافظ قرآن کے لیے خاصا سخت کام لگتا ہے، لیکن سلام بھیجیں ان عظیم ہستیوں کی ہمت و حوصلے پر جنہوں نے صرف دین کی خدمت کی خاطر 100 ہزار (ایک لاکھ) احادیث مبارکہ حرف بحرف یاد کیں اور تا دمِ آخر ان کو سینے میں محفوظ بھی رکھا۔ حافظ ابن حجر العسقلانی، حافظ ابن کثیر، حافظ ابن عساکر وغیرہم کے لقب کے پیچھے بھی یہی حقیقت ہے۔ الله کی ان پر رحمت ہو اور ان کے صدقے ہماری بیحساب مغفرت ہو۔ آمین

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. نصاب اصول حدیث،مکتبۃ المد ینہ باب المدینہ کراچی