سرگون مہتہ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
سرگون مہتہ
Sargun Mehta.jpg 

معلومات شخصیت
پیدائش 6 ستمبر 1988 (31 سال)  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ پیدائش (P569) ویکی ڈیٹا پر
چندی گڑھ  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام پیدائش (P19) ویکی ڈیٹا پر
شہریت Flag of India.svg بھارت  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں شہریت (P27) ویکی ڈیٹا پر
عملی زندگی
پیشہ ماڈل،  واداکارہ،  ورقاصہ،  وٹیلی ویژن اداکارہ  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں پیشہ (P106) ویکی ڈیٹا پر
IMDb logo.svg
IMDB پر صفحات  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں آئی ایم ڈی بی - آئی ڈی (P345) ویکی ڈیٹا پر

سرگون مہتہ (سرگون مہتہ دوبے کے نام سے جانی جاتی ہے ) بھارتی اداکارہ، ماڈل، کامیڈیئن، ڈانسر اور پیشکار ہے۔ اس نے بھارتی ٹیلیوژن کی دنیا میں اپنی الگ پہچان بنائی ہے۔ اس نے اپنی اداکاری کی شروعات اپنے کالج ے تھیٹر میں اداکاری سے کی تھی۔ اور اس نے اپنے ٹیلیوژن کیریئر کی شروعات 2009 میں زی ٹیوی کے ناٹک قرول باغ سے کی۔ جس میں اسے پترین معاون اداکارہ کے طور پر نیو ٹیلینٹ اویارڈ حاصل ہوا۔ کلرز ٹیوی کے ناٹک پھلوا کے بعد اس کی زندگی میں ایک نیا موڑ آیا۔ جس میں اس کی بہت تعریف کی گئی اور اسے کلرز گولڈن پیٹل اوارڈ کے لیے نامزد کیا گیا ۔ سرگون مہتہ نے 2009 میں اہمیت حاصل کی مگر اپنو کے لیے گیتا کا دھرم یدھ کامیابی حاصل کرنے میں کامیاب نہ ہو سکا ۔ مہتہ نے بلکا ودھو میں گنگا کے پاتر سے توجہ حاصل کی اور انڈین ٹیلیوژن اکیڈمی اوارڈ کے لیے نامزد ہوئی۔

جنم اور بچپن[ترمیم]

چنڈی گڑھ سے دلی بی۔کام۔ آنرز کرنے گئی سرگون کو دلی یونیورسٹی کے کروڑیملّ کالج کے ماحول نے تھیٹر کے ساتھ جوڑ دیا۔ سرگون نے یہاں تین سال تھیٹر میں کام کیا۔ تھئیٹر سے اس کے ایک سینئر سدھیر شرما نے جب اپنے سیریل ‘باراں بٹا چووی قرول باغ’ کے لیے آڈیشن کیے تو سرگون اس میں منتخب ہو گئی۔ اسی سیریل سے اس کے کریئر کی شروعات ہوئی۔ نامور ٹیلی ویژن چینلوں کے مقبول سیریل ‘گیتا’ اور ‘پھلوا’ میں اس نے اہم کردار نبھائے۔ ریالٹی شوٕ ‘نچّ بلیئے’ اور ‘کامیڈی نائیٹ دا عجوبہ’ نے اس کو اس فن میں بھی پہچان دی۔ ‘کامیڈی نائیٹ دا عجوبہ’ میں اس نے کپل شرما نال سیلبرٹی پارٹنر کئی حیثیت سے کئی پروگرام کیے۔

پنجابی فلمیں[ترمیم]

چنڈی گڑھ کی اصل شہری ہونے کے باوجود اس نے کبھی پنجابی فلموں میں کام کرنے کے بارے میں نہیں سوچا تھا۔ وہ ممبئی میں ہی سرگرم تھی اور یہیں رہنا چاہتی تھی۔ انگریز کے لکھاری امبردیپ سنگھ کو وہ پہلے سے جانتی تھی۔ کیونکہ وہ دونوں ‘کامیڈی نائیٹ دے عجوبے’ کا حصہ رہے تھے۔ امبر نے ہی اس کو اس فلم کی کہانی سنائی اور اس میں کام کرنے کے لیے کہا تھا۔ آخر اس نے فلم میں کام کرنے کے لیے ہامی بھری اور زندگی کا یہ فیصلہ اس کو ایک نئے مقام پر لے گیا۔ اس فلم میں امریندر گلّ کے ساتھ سرگون اکیلی ہیروئن نہیں تھی، بلکہ بالیوڈّ اداکارہ ادتی شرما بھی اس کا اہم حصہ تھی لیکن سرگون کا نبھایا دھنّ کور کا کردار اس قدر مقبول ہوا کہ یہ فلم امریندر-سرگندر کی جوڑی کی فلم بن گئی۔ انگریز کے بعد اس جوڑی کو لوَ پنجاب میں بھی اتارا گیا۔[1]

حوالہ جات[ترمیم]