مندرجات کا رخ کریں

سمیرا زرین

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
سمیرا زرین
مقامی نامثميره زرين
پیدائش22 فروری 1944(1944-02-22)
شکارپور، سندھ، پاکستان
وفات13 اگست 1977(1977-08-13)
حیدرآباد، سندھ
پیشہسٹوری رائٹر
دور1954–1977
نمایاں کامکہانیوں کے مجموعے
  • گیت اجیال مزید جا
  • آؤن اہے ماروی
  • روشن چھانورو
رشتہ دارمحمد اعظم اعوان (والد)

سمیرا زرین (پیدائش: فروری 1944ء)|(انتقال: 13 اگست 1977ء) سندھ ، پاکستان کی ایک معروف کہانی نویس تھیں۔ وہ سندھی ادب کی علمبردار خواتین میں سے ایک تھیں۔ انھیں سندھی ادب کی خاتون اول کہا جاتا ہے۔ ان کے دو افسانوی مجموعے شائع ہو چکے ہیں۔

بچپن[ترمیم]

سمیرا زرین 22 فروری 1944ء کو شکارپور سندھ، پاکستان کے ایک ادبی گھرانے میں پیدا ہوئیں۔ ان کا اصل نام سکینہ اعوان تھا۔ [1] ان کے والد کا نام محمد اعظم اعوان تھا۔ ان کے دادا محمد عارف اعوان خود اپنے وقت کے نامور شاعر تھے۔ [2]

ادبی شراکتیں[ترمیم]

اس نے 12 یا 13 سال کی عمر میں کہانیاں لکھنا شروع کر دیں۔ ان کی پہلی کہانی مشہور سندھی میگزین نئی زندگی (نئی زندگی) میں شائع ہوئی۔ انھوں نے روزنامہ ہلال پاکستان کے خواتین کے صفحے کی انچارج کے طور پر کام کیا۔ گریجویشن کے بعد، اس نے انسٹی ٹیوٹ آف سندھالوجی میں ریسرچ فیلو کے طور پر کام کیا۔ [3] انھوں نے 1947ء سے 1960ء تک نئی زندگی میگزین میں شائع ہونے والی کہانیاں مرتب کیں اور شائع کیں۔ [4] اس مجموعہ کا عنوان تھا مہران جون چھولیوں (سندھ میں لہریں) اور یہ 1962ء میں شائع ہوا۔ 1970ء میں ان کی کہانیوں کا مجموعہ گیت اجیال مور جا (پیاسے مور کے گیت) ملیر ادبی اکیڈمی حیدرآباد نے شائع کیا۔ ان کے درج ذیل کہانیوں کے مجموعے ان کی وفات کے بعد شائع ہوئے: [5]

  • آؤن اہے ماروی (میں وہی ماروی ہوں)
  • روشن چھانورو (روشن سایہ)

نامور مصنف ناصر مرزا نے ان کی غیر مطبوعہ کہانیاں اور اس کا پروفائل اپنی کتاب کھٹون - ای اوال کہانی کارہ: سمیرا زرین (کہانی کی پہلی خاتون: سمیرا زرین) میں مرتب کیا ہے۔ [6] یہ کتاب 2018ء میں شائع ہوئی ہے۔ مشہور ادبی میگزین رچنا نے 2014ء میں ان کی یاد میں ایک خصوصی شمارہ شائع کیا تھا۔ [7]

انتقال[ترمیم]

سمیرا زرین کا انتقال 13 اگست 1977ء کو حیدرآباد، سندھ میں ہوا۔ [8]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. Abdul Jabbar Junejo (2006)۔ سنڌي ادب جي تاريخ (History of Sindhi Literature) (بزبان السندية)۔ Hyderabad, Sindh, Pakistan: Sindhi Language Authority 
  2. "ثميره زرين : (Sindhianaسنڌيانا)"۔ www.encyclopediasindhiana.org (بزبان سندھی)۔ اخذ شدہ بتاریخ 10 مارچ 2020 
  3. Mirza, Naseer; سدا حيات ثميره زرين، ساهت ۽ ڪلا جي رچنا، جلد: 142، صفحو: 27ـ28، اپريل ـ جون 2014.
  4. Moryani, Khalil; گلن ۽ پوپٽن جي راڻي سميره زرين، ساهت ۽ ڪلا جي رچنا، جلد: 142، صفحو: 5-3، اپريل ـ جون 2014، Indian Institute of Sindhology, Adipur, India.
  5. Ali Jan (2016)۔ ورهاڱي کان پـــوِء سنڌي ڪهاڻي ۾ سنڌي سماج جي تصوير (PDF) (First ایڈیشن)۔ Karachi University۔ صفحہ: 171–173۔ 26 ستمبر 2023 میں اصل (PDF) سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 10 مارچ 2020 
  6. "Khatoon-e-Awal Kahanikar"۔ www.goodreads.com۔ اخذ شدہ بتاریخ 16 مئی 2020 
  7. Rachna, Vol. 142, April - June 2014. Indian Institute of Sindhology. Available at http://sindhology.org/wp-content/uploads/2016/08/Rachna%20142.pdf
  8. Rizwan Gul (2012)۔ ,جديد سنڌي افساني جي سرموڙ ليکڪا ثميره زرين ساهت ڏيھ جا سرجڻهار۔ Dahap Publication