شوکت علی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

شوکت علی پاکستانی لوک گلوکار ہیں ۔ [1]

ابتدائی زندگی اور کیریئر[ترمیم]

وہ ضلع گجرات ملاکوال کے فنکار گھرانے تعلق رکھتے ہیں۔ شوکت علی اپنی گلوکاری کا آغاز 1960 کی دہائی میں کیا۔ جب وہ کالج میں پڑھتے تھے اس سلسلے میں انھوں نے اپنے بھائی سے مددلی۔ انہیں پاکستانی فلمی دنیا میں ایک مشہور بیک میوزک ڈائریکٹر ایم اشرف نے پنجابی فلم تی مار خان (1963) میں ایک پلے بیک گلوکار کے طور پر متعارف کرایا تھا۔ [2]

1960 کی دہائی کے آخر سے انہوں نے غزلیں اور پنجابی لوک گیت پیش کیے [2] ایک لوک گلوکار کی حیثیت سے ، وہ نہ صرف پنجاب ، پاکستان بلکہ پنجاب ، بھارت میں بھی مشہور ہیں ۔ شوکت علی نے برطانیہ ، کینیڈا اور امریکہ جیسے پنجابی تارکین وطن کے اہم آبادی والے ممالک میں اپنی کارکردگی کا مظاہرہ بھی کیا ہے۔

شوکت علی صوفی شاعری کو بڑے جوش و خروش اور ایک وسیع آواز کے سلسلے میں گاتے ہیں ، مثال کے طور پر ہیئر وارث شاہ اور سیف الملوک کو وہ بہت عقیدت سے گاتے ہیں۔ [2]

شوکت علی کو 1976 میں 'وائس آف پنجاب' ایوارڈ ملا۔ جولائی 2013 میں ، انھیں پاکستان انسٹی ٹیوٹ آف لینگوئج ، آرٹ اینڈ کلچر (PILAC) کے ذریعہ 'پرائڈ آف پنجاب' ایوارڈ سے نوازا گیا تھا۔ انہوں نے نئی دہلی میں 1982 میں ہونے والے ایشین گیمز میں براہ راست پرفارمنس دی ، اور 1990 میں انہیں پاکستان کا سب سے اعلیٰ شہری صدارتی ایوارڈ پرائڈ آف پرفارمنس سے نوازا گیا۔ [1] [2] شوکت علی نے آل پاکستان میوزک کانفرنس کے ایونٹس میں پرفارمنس بھی دی ہے اور پاکستانی ٹیلی ویژن شوز میں بھی اکثر گلوکاری کرتے نظر آتے ہیں

زندگی پربننے والی دستاویزی فلم[ترمیم]

2017 میں ، کینیڈا کی ایک کمپنی نے پاکستانی موسیقی کی صنعت میں ان کی شراکت کو یادگار بنانے کے لئے ایک گھنٹہ طویل دستاویزی فلم تیار کی ۔ اس دستاویزی فلم میں شوکت علی کو اپنے پورے کیریئر میں درپیش مشکلات کو دکھایا گیا ہے۔ اس میں ان کی گذشتہ پرفارمنس کے ساتھ ساتھ لتا منگیشکر سمیت کئی گلوکاروں کے انٹرویوز بھی شامل ہیں۔ [1]

ایوارڈ[ترمیم]

  1. ^ ا ب پ Adnan Lodhi (1 July 2017). "Folk singer Shaukat Ali's music immortalized in new documentary". The Express Tribune (newspaper). اخذ شدہ بتاریخ 19 جون 2018. 
  2. ^ ا ب پ ت ٹ Amjad Parvez (6 October 2017). "Shaukat Ali the indisputable Punjabi folk singer". Daily Times (newspaper). اخذ شدہ بتاریخ 11 جولا‎ئی 2019.