ماضی قریب

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

ماضی قریب اُس فعل کو کہتے ہیں جس میں قریب کا گزرا ہوا زمانہ پایا جائے جیسے علی نے کھانا کھایا ہے، زاہد نے نماز پڑھی ہے، اسلم فیصل آباد سے آیا ہے، معصومہ نے آم خریدے ہیں، حنا نے سبق پڑھا ہے، سارہ نے خظ لکھا ہے وغیرہ اِن جملوں میں کھایا ہے، پڑھی ہے، آیا ہے، خریدے ہیں، پڑھا ہے، لکھا ہے ماضی قریب ہیں۔

ماضی قریب[ترمیم]

ماضی قریب کا مفہوم[ترمیم]

ماضی قریب اُس فعل کو کہتے ہیں جس میں قریب کا گزرا ہوا زمانہ پایا جائے۔

یا

ایسا فعل جو قریب کے گزرے ہوئے زمانے میں ہوا ہو اسے فعل ماضی قریب کہا جاتا ہے۔

یا

فعل ماضی قریب وہ فعل ہوتا ہے جس میں کسی کام کا ہونا قریب کے زمانے میں ہو۔

ماضی قریب کی مثالیں[ترمیم]

علی نے کھانا کھایا ہے، زاہد نے نماز پڑھی ہے، اسلم فیصل آباد سے آیا ہے، معصومہ نے آم خریدے ہیں، حنا نے سبق پڑھا ہے، سارہ نے خظ لکھا ہے وغیرہ اِن جملوں میں کھایا ہے، پڑھی ہے، آیا ہے، خریدے ہیں، پڑھا ہے، لکھا ہے ماضی قریب ہیں۔

ماضی قریب بنانے کا قاعدہ[ترمیم]

ماضی قریب بنانے کا قاعدہ یہ ہے کہ مصدر سے ماضی مطلق بنا کر آخر میں ہے بڑھا دیتے ہیں جیسے دوڑنا مصدر سے ماضی مطلق دوڑا بناتے ہیں اور آخر میں ہے کا اضافہ کرتے ہیں تو دوڑا ہے بن جاتا ہے یہ ماضی قریب ہے۔

ماضی قریب کی گردان[ترمیم]

آنا اور پڑھنا مصدر سے ماضی قریب کی گردان

واحد غائب جمع غائب واحد حاضر جمع حاضر واحد متکلم جمع متکلم
وہ آیا ہے وہ آئے ہیں توآیا ہے تم /آپ آئے ہو میں آیا ہوں ہم آئے ہیں
اُس نے پڑھا ہے انہوں نے پڑھا ہے تونے پڑھا ہے تم/آپ نے پڑھا ہے میں نے پڑھا ہے ہم نے پڑھا ہے

لانا مصدر سے ماضی قریب کی گردان

واحد غائب جمع غائب واحد حاضر جمع حاضر واحد متکلم جمع متکلم
وہ لایا ہے وہ لائے ہیں تولایا ہے تم /آپ لائے ہو میں لایا ہوں ہم لائے ہیں
وہ لائی ہے وہ لائی ہیں تولائی ہے تم/آپ لائی ہو میں لائی ہوں ہم لائی ہیں

دوڑنا اور کھانا مصدر سے ماضی قریب کی گردان

واحد غائب جمع غائب واحد حاضر جمع حاضر واحد متکلم جمع متکلم
وہ دوڑا ہے وہ دوڑے ہیں تودوڑا ہے تم /آپ دوڑے ہو میں دوڑا ہوں ہم دوڑے ہیں
اُس نے کھایا ہے انہوں نے کھایا ہے تونے کھایا ہے تم/آپ نے کھایا ہے میں نے کھایا ہے ہم نے کھایا ہے

حوالہ جات[ترمیم]

[1][2]

  1. آئینہ اردو قواعد و انشاء پرزادی
  2. آئینہ اردو