نائیجیریا کے عام انتخابات 2019ء

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
نائیجیریا کے صدارتی انتخابات، 2019ء

→ 2015ء 23 فروری 2019ء (2019ء-02-23) 2023ء ←
مندرج 84،004،084

  Muhammadu Buhari, President of the Federal Republic of Nigeria (cropped).jpg Atiku Abubakar.jpg
امیدوار محمدو بوحاری عتیقو ابو بکر
جماعت آل پروگریسیو کانگریس پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی (نائیجیریا)
گڑھ کاتسینا ریاست اداماوا ریاست
مشترکہ امیدوار یمی اوسنباجو پیٹر اوبی

صدر قبل انتخاب

محمدو بوحاری
آل پروگریسیو کانگریس

منتخب صدر

محمدو بوحاری
آل پروگریسیو کانگریس

نائیجیریا کے ایوان بالا انتخابات، 2019ء
23 فروری 2019

ایوان بالا نائیجیریا کی کُل 110 نشستیں

  پہلی بڑی جماعت دوسری بڑی جماعت
 
قائد ابیودن اولوجیمی احمد ابراہیم لاوان
جماعت پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی (نائیجیریا) آل پروگریسیو کانگریس
قائد کی نشست ایکیتی جنوبی یوبے شمالی

صدر ایوان بالا قبل انتخاب

بوکولا سارکی
پی ڈی پی

منتخب صدر ایوان بالا

اعلان ہونا باقی

نائیجیریا کے قومی اسمبلی انتخابات، 2019ء
23 فروری 2019

ایوان نمائندگان کی کل 360 نشستیں

  پہلی بڑی جماعت دوسری بڑی جماعت
 
قائد فیمی باجابیامیلا اوگور اوکیووے
جماعت آل پروگریسیو کانگریس پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی (نائیجیریا)
قائد کی نشست سورولیرے 1 ایسوکو شمالی / جنوبی
پچھلی نشستیں 190 151

اسپیکر قبل انتخاب

یعقوبو ڈوگارا
پی ڈی پی

منتخب اسپیکر

یعقوبو ڈوگارا
پی ڈی پی

نائیجیریا میں عام انتخابات ملتوی ہونے کے بعد 23 فروری 2019ء کو منعقد ہوئے،[1] پرانی تاریخ 16 فروری 2019ء تھی۔ یہ انتخاب صدر نائیجیریا، نائب صدر نائیجیریا اور قومی اسمبلی نائیجیریا اور نائیجیریائی ایوان بالا کو چننے کے لیے منعقد ہوئے۔[2][3][4][5] 1999ء کے آخر میں فوجی حکمرانی کے خاتمے کے بعد یہ چھٹا چار سالہ انتخاب تھا۔ کچھ جگہوں میں تشدد کے باعث تاخیر کے ساتھ 24 فروری تک رائے شماری ہوئی۔[6]

یہ انتخابات 2015ء کے انتخابات سے بھی مہنگے تھے، ان انتخابات میں ₦69 ملین سے زائد لاگت آئی۔[7][8]

2019ء کے انتخابات میں موجودہ صدر محمدو بوحاری ایک بار پھر منتخب ہو گئے۔ انہوں نے 2015ء میں گڈلک جوناتھن کو شکست دی تھی، یاد رہے کہ یہ 2015ء میں پہلی مرتبہ تھا کہ کسی نے صدرِ وقت کو شکست دی ہو۔ اس انتخابات میں قریبی حریف عتیقو ابو بکر کو 3 ملین سے زائد ووٹوں سے شکست دی، انہیں انڈیپینڈنٹ نیشنل الیکٹورل کمیشن نے سرٹیفکیٹ آف ریٹرن جاری کیا[9][10] اور وہ نائیجیریا کے یوم جمہوریہ کو صدر کے طور پر حلف اٹھائیں گے۔[11]

انتخابی نظام[ترمیم]

نائیجیریا کے صدر کا انتخاب سمپل میجورٹی ووٹ سے ہوتا ہے اور ساتھ ہی 36 نائیجیریا کی ریاستوں میں سے 27 ریاستوں میں 25 فیصد ووٹ بھی ضروری ہے۔[12]

360 رکنی ایوان نمائندگان کا انتخاب فرسٹ پاسٹ دی پوسٹ ووٹنگ سے ہوتا ہے۔[13] ایسے ہی 109 رکنی سینیٹ نائیجیریا کا انتخاب 108 سنگل سیٹ انتخابی حلقوں سے کیا جاتا ہے جس میں تمام ریاستوں کو تین حصوں میں تقسیم کیاجا ہے اور ہر حلقہ میں فیڈرل کیپیٹل ٹیری ٹیری ہوتا پے اور فرسٹ پاسٹ دی پوسٹ ووٹنگ کے ذریعے انتخاب ہوتا ہے۔[14]

نامزد صدارتی امیدوار[ترمیم]

موجودہ صدر محمدو بوحاری کو آل پروگریسیو کانگریس نے 29 ستمبر 2018ء کو اپنا امیدوار نامزد کیا تھا۔[15]

دیگر امیدوا حسب ذیل ہیں:

حوالہ جات[ترمیم]

  1. Yomi Kazeem (16 فروری 2019)۔ "Nigeria has postponed its presidential elections"۔ Quartz Africa (انگریزی زبان میں)۔ اخذ شدہ بتاریخ 16 فروری 2019۔
  2. Cara Anna Muhumuza؛ Rodney Muhumuza۔ "Some polling units still open in Nigeria, a day after voting"۔ Washington Post (انگریزی زبان میں)۔ Washington Post۔ اخذ شدہ بتاریخ 25 فروری 2019۔
  3. Yomi Kazeem (16 فروری 2019)۔ "Nigeria has postponed its presidential elections"۔ Quartz Africa (انگریزی زبان میں)۔ اخذ شدہ بتاریخ 16 فروری 2019۔
  4. INEC fixes date for 2019 presidential election The Guardian, 9 March 2017
  5. INEC announces dates for 2019 general elections Premium Times, 9 March 2017
  6. "BREAKING: Buhari declares June 12 Democracy Day to honour Abiola"۔ Premium Times Nigeria۔ 6 جون 2018۔ اخذ شدہ بتاریخ 25 فروری 2019۔
  7. Musa Abdullahi Krishi؛ Ozibo Ozibo (16 اگست 2018)۔ "Why 2019 elections will be Nigeria's most expensive – INEC"۔ Daily Trust۔ اخذ شدہ بتاریخ 25 فروری 2019۔
  8. Nuruddeen M. Abdallah (3 اگست 2018)۔ "2019 elections set to be Nigeria's most expensive"۔ Daily Trust۔ اخذ شدہ بتاریخ 25 فروری 2019۔
  9. "Breaking: INEC gives Buhari, Osinbajo certificates of return"۔ Vanguard News Nigeria۔ 27 فروری 2019۔ اخذ شدہ بتاریخ 27 فروری 2019۔
  10. "INEC Presents Certificates Of Return To Buhari, Osinbajo"۔ Sahara Reporters۔ 27 فروری 2019۔ اخذ شدہ بتاریخ 27 فروری 2019۔
  11. "BREAKING: Buhari declares June 12 Democracy Day to honour Abiola"۔ Premium Times Nigeria۔ 6 جون 2018۔ اخذ شدہ بتاریخ 25 فروری 2019۔
  12. https://qz.com/africa/1532328/the-daunting-odds-of-trying-to-become-nigerias-president-as-a-third-party-candidate/
  13. Electoral system. IPU
  14. About the Senate National Assembly
  15. Aisha Buhari condemns APC primaries Premium Times, 7 October 2018
  16. 2019 in view: 6 Northerners who may likely replace Buhari Naij
  17. 35-year-old declares to take Buhari's job in 2019 Pulse.ng
  18. I will run for Presidency - Ex-Cross River governor, Donald Duke Daily Post
  19. 2019 Presidency: Is Fela Durotoye overreaching himself? Vanguard, 3 March 2018
  20. Nigeria election: Oby Ezekwesili to stand for president BBC News, 8 October 2018
  21. https://www.cnn.com/2019/01/24/africa/oby-ezekwesili-quits-nigeria-elections/index.html
  22. ^ ا ب پ 22 Other Nigerians Eyeing Buhari's Job Premium Times, 6 March 2018
  23. 2019: Kwankwaso flags off presidential campaign in Anambra Daily Post
  24. 2019: Lamido declares presidential ambition Vanguard
  25. Braihma Taiwo۔ "Mailafia Emerges ADC Presidential Candidate"۔ This Day۔ اخذ شدہ بتاریخ 14 جنوری 2019۔
  26. Ex-CBN Deputy Governor, Moghalu Declares Presidential Bid Thisday
  27. Admin۔ "2019: PT presidential candidate flags-off campaign"۔ The News۔ اخذ شدہ بتاریخ 14 جنوری 2019۔
  28. I'll contest for president in 2019, says Sonaiya Punch
  29. How I will defeat Buhari in 2019 — Omoyele Sowore Premium Times