نطق

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
مصطفٰی کمال اتاترک 1927ء میں ترکی کی قومی اسبلی میں "نطق" پیش کر رہے ہیں۔

"نطق" وہ تقریر ہے جو جدید ترکی کے بانی راہنما مصطفٰی کمال اتاترک نے 1927ء میں ترکی کی قومی اسبلی سے خطاب میں کی۔ مسلسل چھ روز تک جاری رہنے والے اس اجلاس میں مصطفٰی کمال اتاترک نے قریب ساڑھے چھتیس گھنٹے خطاب کیا اور خود اس خطاب کو "نطق" کا نام دیا۔ اپنے چھ روزہ اس خطاب میں انہوں نے ترکی میں بادشاہت کے خاتمے اور ترکی کے زوال سے عروج تک پہنچنے کی ہمت اور کوشش کو بیان کیا اور مستقبل میں ترکی کے لیے کامیابی کے تسلسل کو دیکھنے کی خواہش کا اظہار کیا۔ مصطفٰی کمال اتاترک کے اس خطاب کی پہلی بار اشاعت 1927ء میں "عثمانی زبان" میں ہوئی جس کا رسم الخط عربی زبان کے مطابق تھا۔ اس کے بعد اسے انگریزی، فرانسیسی، جرمن، روسی، فارسی، ترکمانی اور قزاقی زبان میں بھی شائع کیا گیا۔ فروری 2011ء میں پروفیسر ڈاکٹر احمد بختیار اشرف اور پروفیسر ڈاکٹر جلال صوئیدان نے اس کا اردو ترجمہ کیا اور اسے انقرہ میں قائم سرکاری ادارہ "مرکز مطالعہ اتا ترک" نے شائع کیا۔

حوالہ جات[ترمیم]