چارلس آگسٹین ڈی کولمب

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
(چارلس-آگسٹن ڈی کولمب سے رجوع مکرر)
چارلس آگسٹین ڈی کولمب
(فرانسیسی میں: Charles-Augustin de Coulomb)[1][2][3]  ویکی ڈیٹا پر (P1559) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
 

معلومات شخصیت
پیدائش 14 جون 1736ء[4][5][6][7][8][9][10]  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
آنگولیم  ویکی ڈیٹا پر (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وفات 23 اگست 1806ء (70 سال)[11][12][13][5][6][7][8]  ویکی ڈیٹا پر (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیرس  ویکی ڈیٹا پر (P20) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت فرانس  ویکی ڈیٹا پر (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
رکن پولینڈ کی اکادمی برائے سائنس  ویکی ڈیٹا پر (P463) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مناصب
صدر (102 )   ویکی ڈیٹا پر (P39) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
برسر عہدہ
1801  – 1801 
در فرانسیسی اکادمی برائے سائنس 
 
رینے جسٹ آوی 
عملی زندگی
پیشہ طبیعیات دان،  انجینئر[14]،  فوجی افسر[14]،  رزمی انجینئر،  فوجی افسر،  فوجی  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ ورانہ زبان فرانسیسی[15]  ویکی ڈیٹا پر (P1412) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شعبۂ عمل برقناطیسی قوت  ویکی ڈیٹا پر (P101) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عسکری خدمات
عہدہ فوجی  ویکی ڈیٹا پر (P410) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

چارلس-آگسٹن ڈی کولمب ( /ˈklɒm, -lm, kˈlɒm, -ˈlm/ ؛ [16]فرانسیسی: [kulɔ̃]فرانسیسی: [kulɔ̃]; (14 جون، 1736 – 23 اگست، 1806) ایک فرانسیسی آفیسر، انجینئیر اور طبیعیات دان تھے۔ وہ سب سے زیادہ معروف اپنے مشہور کولمب کے قانون کی وجہ سے ہیں، جو کشش اور دھکیل کی برق سکونی قوت کی وضاحت کرتا ہے۔ انھوں نے رگڑ کی قوت کے بارے میں معلومات پر بھی اہم کام کیا۔

برقی بار کے SI یونٹ، کولمب، کا نام ان کے اعزاز میں سنہ 1880ء میں رکھا گیا تھا۔ [17]

مزید دیکھیے[ترمیم]

قانون کولمب

برق سکونی قوت

میلیکین کا تجربہ

  1. ^ ا ب https://www.britannica.com/biography/Charles-Augustin-de-Coulomb — ناشر: دائرۃ المعارف بریطانیکا
  2. ^ ا ب https://www.universalis.fr/encyclopedie/charles-augustin-coulomb/
  3. ^ ا ب https://www.larousse.fr/archives/grande-encyclopedie/page/3763 — ناشر: لارؤسی دائرۃ المعارف آن لائن
  4. http://data.bnf.fr/ark:/12148/cb12486070d — اخذ شدہ بتاریخ: 13 جنوری 2018 — مصنف: فرانس کا قومی کتب خانہ — اجازت نامہ: آزاد اجازت نامہ
  5. ^ ا ب دائرۃ المعارف بریطانیکا آن لائن آئی ڈی: https://www.britannica.com/biography/Charles-Augustin-de-Coulomb — بنام: Charles-Augustin de Coulomb — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017 — عنوان : Encyclopædia Britannica
  6. ^ ا ب ایس این اے سی آرک آئی ڈی: https://snaccooperative.org/ark:/99166/w6nk3jh2 — بنام: Charles-Augustin de Coulomb — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017
  7. ^ ا ب Brockhaus Enzyklopädie online ID: https://brockhaus.de/ecs/enzy/article/coulomb-charles-augustin — بنام: Charles Augustin Coulomb — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017
  8. ^ ا ب گرین انسائکلوپیڈیا کیٹلینا آئی ڈی: https://www.enciclopedia.cat/ec-gec-0020414.xml — بنام: Charles Augustin de Coulomb — عنوان : Gran Enciclopèdia Catalana
  9. Proleksis enciklopedija ID: https://proleksis.lzmk.hr/16039 — بنام: Charles-Augustin Coulomb — عنوان : Proleksis enciklopedija
  10. Hrvatska enciklopedija ID: https://www.enciklopedija.hr/Natuknica.aspx?ID=12610 — بنام: Charles Augustin de Coulomb — عنوان : Hrvatska enciklopedijaISBN 978-953-6036-31-8
  11. ربط : https://d-nb.info/gnd/118670239  — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اپریل 2014 — اجازت نامہ: CC0
  12. http://data.bnf.fr/ark:/12148/cb12486070d — اخذ شدہ بتاریخ: 10 اکتوبر 2015 — مصنف: فرانس کا قومی کتب خانہ — اجازت نامہ: آزاد اجازت نامہ
  13. http://data.bnf.fr/ark:/12148/cb12486070d — اخذ شدہ بتاریخ: 22 اگست 2017
  14. عنوان : History of strength of materials : with a brief account of the history of theory of elasticity and theory of structuresISBN 978-0-486-61187-7
  15. http://data.bnf.fr/ark:/12148/cb12486070d — اخذ شدہ بتاریخ: 10 اکتوبر 2015 — مصنف: فرانس کا قومی کتب خانہ — اجازت نامہ: آزاد اجازت نامہ
  16. "Coulomb". Random House Webster's Unabridged Dictionary.
  17. The "International Coulomb" was defined in modification of the International System of Electrical and Magnetic Units by the International Conference on Electrical Units and Standards (London, 1908) and adopted into the International System of Units in 1948. The name coulomb had already been used in earlier systems proposed by the British Science Association, hence the qualifier "international".