ڈاکٹر بابا صاحب امبیڈکر مراٹھواڑہ یونیورسٹی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
ڈاکٹر بابا صاحب امبیڈکر مراٹھواڑہ یونیورسٹی
Dr. Babasaheb Ambedkar Marathwada University
شعار हे ज्ञानिची पवित्रता। ज्ञानीचि आथि॥ English: "Knowledge is sacred and is the source of enlightenment"
قسم عوامی/گورنمنٹ
قیام 1958
چانسلر C. Vidyasagar Rao
وائس چانسلر Professor B.A. Chopade
مقام

اورنگ آباد،

مہاراشٹر، بھارت 19°54′17.88″N 75°18′43.62″E / 19.9049667°N 75.3121167°E / 19.9049667; 75.3121167، بھارت
کیمپس شہری علاقہ, total 725 acres (2.9339 km²)
وابستگیاں UGC, NAAC, AIU
ویب سائٹ http://www.bamu.ac.in

ڈاکٹر بابا صاحب امبیڈکر مراٹھواڑہ یونیورسٹی (بی اے ایم یو) جس کا پرانا نام مراٹھواڑہ یونیورسٹی ہے اورنگ آباد مہاراشٹر میں واقع ایک یونیورسٹی ہے۔ اس کا نام بھارت کے معروف ماہر قانون، سیاسی قائد اور آئین ہند کے معمار ڈاکٹر بابا صاحب امبیڈکر کے نام پر رکھا گیا ہے۔ ڈاکٹر امبیڈکر چاہتے تھے کہ مغربی ودربھ، مراٹھواڑہ اور شمالی مہاراشٹر میں اعلی تعلیم کا کوئی ادارہ ہونا چاہیے، چنانچہ اصلاً ان کی تحریک پر یہ ادارہ قائم ہوا۔

اگست 1958ء کو یونیورسٹی کی بنیاد رکھی گئی۔ متصلہ علاقوں اور وہاں کے باشندوں کی ترقی میں یونیورسٹی کی بڑی خدمات ہیں۔ آغاز ہی میں اس یونیورسٹی سے چار اضلاع یعنی اورنگ آباد، جالنہ، بیڑ اور عثمان آباد کے 404 کالج ملحق ہو گئے تھے۔[1] زیر تعلیم طلبہ کی تعداد 444336 سے زائد ہے۔

تاریخ[ترمیم]

مراٹھواڑہ میں نو کالج تھے جو حیدرآباد دکن کی جامعہ عثمانیہ سے ملحق تھے۔ مراٹھواڑہ کے عوام کے مطالبے پر حکومت نے 27 اپریل 1957ء کو ایک کمیٹی تشکیل دی اور اسے اس طرح کی یونیورسٹی کے قیام کی سفارشیں فراہم کرنے کی ذمہ داری سپرد کی۔ گورنر مہاراشٹر نے 5 مئی 1958ء کو مراٹھواڑہ یونیورسٹی ایکٹ پر دستخط کیے۔ آزاد بھارت کے پہلے وزیر اعظم جواہر لعل نہرو نے 23 اگست 1958ء کو اورنگ آباد میں یونیورسٹی کی مرکزی عمارت کے عارضی احاطے میں مراٹھواڑہ یونیورسٹی کا افتتاح کیا۔

ایس آر ڈونگرکری یونیورسٹی کے پہلے شیخ الجامعہ بنے اور درج ذیل نو کالجوں کا الحاق جامعہ عثمانیہ سے نو تشکیل شدہ مراٹھواڑہ یونیورسٹی کو منتقل کیا گیا:

  • گورنمنٹ کالج آف آرٹس اینڈ سائنس، اورنگ آباد (سنہ تاسیس 1923ء)
  • دی ملند مہاودیالیہ، اورنگ آباد (سنہ تاسیس 1950ء)
  • دی پیپلز کالج، ناندیڑ (سنہ تاسیس 1950ء)
  • دی گورنمنٹ کالج آف ایجوکیشن، اورنگ آباد (سنہ تاسیس 1954ء)
  • دی مراٹھواڑہ کالج آف ایگری کلچر، پربھنی (سنہ تاسیس 1956ء)
  • دی مانک چند لا کالج، اورنگ آباد (سنہ تاسیس 1956ء)
  • دی گورنمنٹ میڈیکل کالج، اورنگ آباد (سنہ تاسیس 1956ء)
  • دی یوگیشوری سائنس کالج، مومن آباد (سنہ تاسیس 1956ء)
  • دی آرٹس اینڈ ایس بی ایل کامرس کالج، جالنہ (سنہ تاسیس 1958ء)

تبدیلی نام کی تحریک[ترمیم]

سنہ 1978ء مہاراشٹر کے وزیر اعلیٰ، ریاستی مجلس قانون ساز اور یونیورسٹی کی انتظامیہ نے یونیورسٹی کے نام کی تبدیلی منظور کی۔[2] اس فیصلہ کی سخت مخالفت کی گئی[3] اور دلت مخالف قتل عام ہوا۔[4] سولہ برس تک یہ تحریک جاری رہی، بالآخر 14 جنوری 1994ء کو یونیورسٹی کا نام "ڈاکٹر بابا صاحب امبیڈکر مراٹھواڑہ یونیورسٹی" کیا گیا۔[5]

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. Website University۔ "Dr.BAMU Affiliated Colleges" (پی‌ڈی‌ایف)۔ مورخہ 14 اکتوبر 2012 کو اصل (پی‌ڈی‌ایف) سے آرکائیو شدہ۔
  2. Damle، Y.B. (January–June 1994). "Holocaust in Marathwada". ICSSR Research Abstracts Quarterly (Indian Council of Social Science and Research) XXIII. http://www.unipune.ac.in/snc/cssh/HistorySociology/A%20DOCUMENTS%20ON%20HISTORY%20OF%20SOCIOLOGY%20IN%20INDIA/A%206%20Primary%20sources/C)%20Published%20and%20Unpublished%20Papers%20of%20Y.B.Damle/1)%20Published%20Papers/A%206%20C%201%2018.pdf۔ اخذ کردہ بتاریخ 29 October 2013. 
  3. Atyachar Virodh Samiti (12 May 1979). "The Marathwada Riots: A Report". Economic and Political Weekly 14 (19): 845–852.  (رکنیت درکار)
  4. Jaoul، Nicolas (2008). "The 'Righteous Anger' of the Powerless: Investigating Dalit Outrage over Caste Violence". South Asia Multidisciplinary Academic Journal (2). http://samaj.revues.org/1892۔ اخذ کردہ بتاریخ 10 May 2013. 
  5. Uttara Shastree۔ Religious Converts in India: Socio-political Study of Neo-Buddhists۔ Mittal Publications۔ صفحات 100–101۔ آئی ایس بی این 9788170996293۔

بیرونی روابط[ترمیم]