خلیہ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
(خلیات سے رجوع مکرر)
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش


خلیائی حیاتیات
Celltypes.svg
The cells of eukaryotes (left) and prokaryotes (right).
Animal Cell.svg
Components of a typical animal cell:
  1. Nucleolus
  2. Nucleus
  3. Ribosome (little dots)
  4. Vesicle
  5. Rough endoplasmic reticulum
  6. Golgi apparatus (or "Golgi body")
  7. Cytoskeleton
  8. Smooth endoplasmic reticulum
  9. Mitochondrion
  10. Vacuole
  11. Cytosol (fluid that contains organelles)
  12. Lysosome
  13. Centrosome
  14. Cell membrane


شکل ا۔ خلیات کی دو بنیادی اقسام؛ حقیقی المرکز اور بدائی المرکز۔ خلیات کو بنانے والے مختلف اقسام کے عضیات کی مزید وضاحت کے لیۓ متن دیکھیۓ۔

خلیہ کے دیگر استعمالات کیلئے دیکھئے: خلیہ (ضد ابہام)

خلیہ کی تعریف[ترمیم]

خلیہ (عربی: خلية. فارسی: یاخته. انگریزی: Cell) تمام جانداروں کی ساخت اور فعل کی اِکائی ہے۔آسان الفاظ میںجس طرح مکان اینٹوں سے مل کر بنتا ہے اور اینٹ ہی مکان کی بنیادی اکائی ہے۔ اسی طرح انسان اور تمام جاندارخلیوں سے مل کر بنتے ہیں اور خلیہ ہی انسان اور تمام جانداروں کی بنیادی اکائی ہے۔ عمومی طور پر خلیہ کو تمام زندہ اجسام کی بنیادی ساختی و فعلیاتی اکائی تصور کیا جاسکتا ہے، مگر پھر یہ خلیہ بھی بذات خود مزید ذیلی ساختی اور فعلیاتی اکائیوں سے ملکر بنا ہوتا ہے۔۔ ایک خلیہ وہ تمام افعال (مثلا تغذیہ و نمو، اخراج وتولید اور تنفس وغیرہ) انجام دیتا ہے جو کسی جاندار کو حیات کی بقا کیلیے درکار ہوتے ہیں۔

بائیں جانب خلیات کی شکل دیکھی جاسکتی ہے، اس شکل ا۔ میں خلیات کی دو بنیادی اقسام 1- حقیقی المرکز اور 2- بدائی المرکز کو ایک اظہاری خاکے کی مدد سے دکھایا گیا۔

شکل ب۔ خلیات کی ایک حقیقی تصویر ہے جو کہ خوردبین سے لی گئی ہے جس میں خلیات سرخ رنگ سے رنگے گۓ ہیں ہر خلیہ میں ایک سبز جسم بھی واضع ہے جو کے مرکزہ کی نمائندگی کر رہا ہے۔

ایک واحد خلیہ اپنے طور پر ایک آزاد جسم کی حیثیت میں بھی زندگی بسر کر سکتاہے ایسے اجسام کو یک خلوی (unicellular) جاندار کہا جاتا ہے جبکہ ایک سے زائد خلیات سے ملکر بننے والے جانداروں کو کثیر خلوی (multicellular) جاندار کہا جاتا ہے ، ایسے کثیرخلوی جانداروں میں خلیات کی تعداد مختلف انواع میں مختلف ہوتی ہے جو کہ چند سو سے لیکر اربوں تک پہنچ سکتی ہے، مثلا انسانی جسم میں لگ بھگ ایک سوکھرب (10،000،000،000،000) خلیات پاۓ جاتے ہیں۔ واضع رہے کہ تعداد کی یہ مقدار صرف ایک ممکنہ حد تک درست لگایا گیا اندازہ ہے۔

ایک مثالی خلیہ[ترمیم]

شکل ب۔ خلیات، پرورشی واسطہ یا کلچر میں۔ مُلَوَّن یا رنگذدہ برائے کیراٹن (سرخ) اور DNA (سبز)

گو حیاتی اجسام میں پاۓ جانے والے خلیات ، بے شمار شکلوں اور جسامت کے ہوتے ہیں اسکے علاوہ انکی اندرونی ساخت بھی ایک دوسرے سے (اپنے اپنے افعال کے اعتبار سے) مختلف ہوتی ہے مگر ایک مثالی خلیے کو بنیادی طور پر تین بڑے یا اہم حصوں میں تقسیم کیا جاسکتا ہے

  1. خلیاتی جھیلی (cell membrane) جو کہ خلیہ کو گھیرے ہوتی ہے اور خلیے کے اندر کی فضا یعنی درون خلیہ کو بیرونی فضاء (بیرون خلیہ) سے جدا کرتی ہے
  2. ہیولی یا خلیہ مائع (cytoplasm)
  3. مرکزہ (nucleus)