خوارزم

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش

وسط ایشیا کے ایک قدیم ریاست جو دریائے جیحوں کے طاس میں پھیلی ہوئی تھی۔ اب یہ علاقہ ازبکستان میں شامل ہے۔ زمانہ قدیم میں یہ علاقہ تہذیب کا ایک اہم مرکز تھا۔ چھٹی صدی قبل مسیح میں اس پر سائرس اعظم کا قبضہ ہوا۔ چوتھی صدی قبل مسیح میں خود مختار ہوگیا۔ ساتوں صدی عیسوی میں اس پر عربوں نے قبضہ کر لیا اور یہاں لوگ حلقہ بگوش اسلام ہوگئے۔ 995ء میں یہ علاقہ خوارزمی امیروں کے تخت متحد ہوگیا۔ رغنج دارلحکومت تھا جو تجارت اور صنعت و حرف کے ساتھ عربی تعلیم کا بھی اہم مرکز تھا۔ بارہویں صدی کے آخر میں خوارزم نے سلجوقی ترکوں سے آزادی حاصل کی جو عربوں کے جانشین تھے۔ بعد ازاں اپنی سلطنت کو وسعت دی۔ تیرھویں صدی کی ابتدا میں یہ سلطنت بحیرہ خزر سے سمرقند اور بخارا تک پھیلی ہوئی تھی۔ 1221ء میں چنگیز خان نے اس علاقے پر حملہ کیا اور دارالحکومت کو تباہ و برباد کر دیا۔ چودھویں صدی میں امیر تیمور نے خوارزم کو ملیامیٹ کیا۔ 1505ء میں اس پر ازبک قابض ہو گئے اور خیوا دارالحکومت بنا۔ اس جگہ اب بھی زمانۂ قدیم کے قلعوں کے کھنڈر ملتے ہیں۔