قصی بن کلاب

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش

قُصی بن کلاب (عربی : قصي ابن كلاب ۔ انگریزی میں Qusayy) حضرت محمد صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم کے آباء میں سے ایک تھے۔ ان کی والدہ کا نام فاطمہ تھا۔ ان کے والد کلاب کا انتقال ان کے بچپن میں ہوگیا تھا۔ حضرت محمد آپ کی پانچویں پشت میں پیدا ہوئے۔ آپ ھاشم کے دادا تھے جن سے بنو ھاشم کا قبیلہ شروع ہوتا ہے۔ آپ کی پیدائش 400ء اور وفات 480ء میں ہوئی۔ یہ آپ ہی تھے جنہوں نے مکہ میں اپنی قوت مستحکم کی اور سرداری قائم کی اور کعبہ کی خدمت کی۔ بے شمار صحابہ کرام آپ کی نسل سے ہیں۔ آپ کی جوانی کے وقت کعبہ کا کنڑول بنو خزاعہ کے پاس تھا جس کے سردار ھلیل کی بیٹی سے آپ نے شادی کی۔ ھلیل کی وفات کے بعد چونکہ قصی بن کلاب بہت ذہین اور دانشمند سمجھے جاتے تھے اس لیے کعبہ کا کنٹرول اور سرداری ان کو مل گئی جس سے یہ خدمت بنو خزاعہ سے قریش میں منتقل ہو گئی۔ انہوں نے کعبہ کو دوبارہ تعمیر کر کے اس کی حالت بہتر کی اور لوگوں کو اس کے ارد گرد گھر تعمیر کرنے کی دعوت دی۔ اس وقت انہوں نے دنیائے عرب کا پہلا مرکزِ شہر داری (ٹاؤن ھال) بھی تعمیر کیا۔ اس مرکزِ شہر داری میں تمام قبائل کے نمائندے اپنے معاشرتی، معاشی اور دیگر مسائل کے باہم فیصلے کیا کرتے تھے۔ مکہ کی تاریخ میں پہلی دفعہ آپ نے قانون بنایا کہ کعبہ کے زائرین کو مفت کھانا اور پانی مہیا کیا جائے گا جس کے لیے انہوں نے مکہ کے قبائل کو قائل کیا کہ وہ ایک ٹیکس ادا کیا کریں۔ اس سے مکہ کے زائرین کی تعداد بہت بڑھ گئی۔
آپ کے تین بیٹوں کے نام تاریخ میں ملتے ہیں۔ جو درج ذیل ہیں۔

  • عبد مناف بن قصی (آپ کی نسل سے حضرت محمد صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم پیدا ہوئے)
  • عبد العزۃ بن قصی (ان کے بیٹے اسد کی اولاد بنو اسد کہلائی)
  • عبد الدار بن قصی (ان کی اولاد بنو عبد الدار کہلائی)