ڈیوڈ لونگ اسٹون

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش
ڈیوڈ لونگ اسٹون

ڈیوڈ لونگ اسٹون (19 مارچ 1813ءیکم مئی 1873ء) (انگریزی: David Livingstone) اسکاچستان سے تعلق رکھنے والے ایک طبی مسیحی مبلغ اور وسطی افریقہ میں تحقیقات کرنے والے ایک مہم جو تھے۔ وہ وکٹوریا آبشار کو دیکھنے والے پہلے یورپی تھے اور اس آبشار کو وکٹوریا کا نام بھی انہوں نے ہی دیا تھا۔

وہ 19 مارچ 1813ء کو جنوبی لنارکشائر، اسکاچستان کے گاؤں بلانٹائر میں پیدا ہوئے۔ انہوں نے جامعہ گلاسکو سے یونانی زبان، طب اور الٰہیات میں تعلیم حاصل کی۔

بعد ازاں انہوں نے افریقہ میں تلاش کی مہمات کا آغاز کیا اور 1852ء سے 1856ء تک افریقہ کے اندرونی علاقوں میں دریافتیں کیں۔ وہ موسی-او-تونیا ("گھن گھرج والا دھواں") آبشار کو دیکھنے والے پہلے یورپی تھے جسے انہوں نے ملکہ وکٹوریا کے نام پر "وکٹوریا آبشار" کا نام دیا۔

آپ یکم مئی 1873ء کو 60 سال کی عمر میں زیمبیا میں چل بسے۔

وہ 19 ویں صدی کے اواخر میں برطانیہ مشہور ترین قومی شخصیات میں سے ایک تھے۔

آپ وسطی افریقہ میں دریائے نیل کا منبع تلاش کرنے کی مہمات میں حصہ لیا۔ ان مہمات کے نتیجے میں افریقہ میں مسیحیت کی تبلیغ کے ساتھ ساتھ وہاں نوآبادیاتی دور کا بھی آغاز ہوا اور افریقہ طویل دور غلامی میں چلا گیا۔

افریقہ کے علاوہ دنیا کے کئی ممالک میں شہر اور قصبے آپ کے نام سے موسوم ہیں جن میں زیمبیا اور ملاوی میں دو شہر آپ کے نام پر لونگ اسٹون کہلاتے ہیں۔