آزاد ملک (سیاست)

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
فریڈم ہاؤس کا نقشہ (2007).
  آزاد ملک
  جزوی آزاد
  غیر آزاد
فریڈم ہاؤس کا نقشہ (2008).
  آزاد ملک
  یورپی اتحاد (تمام "آزاد")
  "آزاد"
  "جزوی آزاد"
  "غیر آزاد"
  درجہ بندی نہیں
[1]

آزاد ملک (انگریزی میں Free country) ملک میں آزادی کے وجود کا ایک سیاسی اور نظریاتی تصور ہے۔ اس میں جمہوری اداروں کا وجود شامل ہے جو عملی طور پر آزادی کی ضمانت دیتا ہے۔ اس میں نمائندہ حکومت، سیاسی جماعتیں، انجمن پیشہ وراں (ٹریڈ یونین)، سیاسی حزب اختلاف، حکومت کی شاخیں، عدلیہ کی آزادی، میڈیا کی آزادی شامل ہیں۔ اور اس میں وہ ادارے بھی ہوں جو سیاسی جبر، تشدد، مذمت اور آزادی سے انکار کی دیگر اقسام سے بچانے میں شامل ہوں۔

تاریخی سیاق و سباق میں دوسری جنگ عظیم میں اصطلاح آزاد ملک کو مغربی اتحادیوں کی شناخت کے لیے استعمال کیا جاتا تھا۔ سرد جنگ کے دوران اصطلاح ریاست ہائے متحدہ امریکا کے اتحادیوں کے لیے استعمال کی جاتی تھی۔

فریڈم ہاؤس نے ریاست ہائے متحدہ امریکا میں دنیا میں آزادی کی حالت کے نام سے رپورٹ شائع کی ہے

اس میں ممالک کی درجہ بندی بطور آزاد ممالک، جزوی آزاد اور غیر آزاد کے طور پر کی ہے۔

تنظیم العفو بین الاقوامی اور نگہبان حقوق انسانی تنظیموں نے بھی انسانی حقوق اور سیاسی آزادی کے حوالے سے آزاد ملک کے تصور کی وپورٹ تیا کی ہے۔

مزید دیکھیے[ترمیم]

فہرست خود مختار ریاستیں

حوالہ جات[ترمیم]

  1. فریڈم ہاؤس۔ "2005"۔ Freedom in the World۔ مورخہ 24 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 2006-06-27۔