تان سین

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں
نیپال کا ایک قصبہ کے لیے، تان سین، نیپال ملاحظہ فرمائیں۔
تان سین
تان سین
ذاتی معلومات
پیدائشی نام میاں تان سین یا رام تانو پانڈے
اصناف کلاسیکی موسیقی
پیشے موسیقار

دربار اکبر اعظم کا ایک رتن ۔سنگیت یا موسیقی کی دُنیا کا ایک بڑا نام ہے ہندوستان کا موسیقار اعظم تھا۔

نام[ترمیم]

تان سین کا اصلی نام رمتانو پانڈے تھا۔ وہ گوالیار میں ایک مندر کے پجاری کے گھر پیدا ہوئے تھے۔ انہوں نے جوانی میں اسلام قبول کر لیا تھا۔

تاریخ[ترمیم]

تان سین گوالیار میں پیدا ہوئے۔ پیدائشی لحاظ سے تو ہندو تھے لیکن جوانی میں اسلام قبول کیا۔

بطور رتن[ترمیم]

اکبر کے نورتن میں شامل کیئے جانے کے بعد لوگ ادب سے ان کو میاں تان سین کہتے تھے اکبر خاص موقعوں پر ان سے راگ اور آلاپ کی فرمائش کرتا تھا ۔ تان سین کے تمام بچے بھی موسیقار ہوئے

اہمیت[ترمیم]

برصغیر کی کلاسیکی موسیقی تان سین کے راگوں پر ہی زندہ ہے۔ اس کے بعد آنےوالے استادوں نے راگ ودیا میں تبدیلی یا نئے تجربے کرنے کی ضرورت محسوس نہیں کی اور عملاً یہ راگ اسی حالت میں ہیں جس میں تان سین نے ان کی تکمیل کی تھی۔ تان سین کی برسی گوالیار میں ہر سال منائی جاتی ہے ۔ جہاں فن موسیقی کے شائقین کا بہت بڑا اجتماع ہوتا ہے۔

راگ[ترمیم]

6برس کی عمر سے ہی انہوں نے موسیقی میں اپنی مہارت دکھانا شروع کردیا تھا۔ وہ سوامی ہری داس کے بھگت تھے۔ بے شمار راگوں کو موجودہ فنی شکل تان سین ہی نے دی۔ درباری کانپڑا، میاں کی ٹوڈی اور میاں کا سارنگ جیسے راگ بھی انھیں کی کوششوں کا نتیجہ ہیں۔

وفات[ترمیم]

تان سین کا انتقال 1586 کو دہلی میں ہوا اکبر نے خود جنازے میں شرکت کی۔ تان سین کو گوالیار میں صوفی سنت شیخ محمد غوث کے پہلو میں دفن کیا گیا۔گوالیار میں ہر سال دسمبر میں تان سین کی یاد میں تقاریب کا اہتمام کیا جاتا ہے۔[1]

حوالہ جات[ترمیم]

متفرقہ[ترمیم]

پاکستانی برق موسیقی (الیکٹرونیکہ) کا گرو نیو تان سین کا نام میاں تان سین سے منسوب ہے۔

بیرونی روابط[ترمیم]