تیجی گروور

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

تیجی گروور ہندی شاعرہ [1] افسانہ نگار ، [2] مترجم اور مصورہ ہیں۔ 1950 کے بعد پیدا ہونے والی نسلوں میں انھیں ہندی شاعری کی ایک اہم آواز کے طور پر سمجھا جاتا ہے۔ شاعر اور نقاد اشوک واجپئی کے مطابق ، "تیجی گروور نے ہندی شاعری کےرائج محاورہ سے ہٹ کر اپنی زبان کی شکل دی ہے۔ ان کی شاعری میں زبان ایک ایسی شکل اختیار کرتی ہے جو منفرد ہے۔ ..[3] " ان کی نظموں کا متعدد ہندوستانی اور غیر ملکی زبانوں میں ترجمہ کیا گیا ہے۔ گروور کے افسانے اپنے باہمی انداذ میں خواب و حقیقت کو یکساں بیان کرتے ہیں ان کے افسانے زمانہ ماضی ، حال اور مستقبل کو اس طرح بیان کیا جاتا ہے کہ ان کی تحریر ہر چیز کو غالب کرتی ہے۔ جیسا کہ پولش ہندی اسکالر کمیلا جنک نے اپنے ناول نیلا (بلیو) کے بارے میں لکھا ہے ، "تمام کردار لکھتے ہیں۔ تمام واقعات لکھے جا رہے ہیں۔ وجود بھی لکھا جارہا ہے۔ تحریر سے آگے کوئی دوسری دنیا نہیں ہے۔" تیجی گروور نے اپنے متعدد ترجموں کے ذریعے ہندی قارئین کے لیے کچھ قابل ذکر جدید اسکینڈینیوائی ادیبوں اور شاعروں کو متعارف کرایا ہے ، جیسے نٹ ہمسن ، ترجی ویساس ، جون فوسے ، کیجل اسسکڈسن ، گنار بیجرلنگ ، ہنس ہربجرنسن ، لارس امند واج ، ایدھ سدرگرن ، ہیری مارٹنسن ، ٹامس ٹرانسٹرمر ، لارس لنڈکویسٹ اور این جڈرلنڈ ، نیز متنازع فرانسیسی مصنف مارگوریٹ دورس۔

زندگی[ترمیم]

تیجی گروور 7 مارچ 1955 کو ہندوستان کی ریاست پنجاب کے ایک چھوٹے سے قصبے پٹھان کوٹ میں پیدا ہوئیں انہوں نے 2003 میں ابتدائی ریٹائرمنٹ لینے سے قبل دو دہائیوں سے زیادہ عرصہ چندی گڑھ کے ایم سی ایم ڈی اے فیلو ، انسٹی ٹیوٹ آف ایڈوانسڈ اسٹڈی ، نانٹس ، فرانس (2016-2017)۔ [4] وانی فاؤنڈیشن ممتاز مترجم ایوارڈ (2019)۔وی کالج برائے خواتین میں انگریزی ادب کی تعلیم دی۔ تب سے وہ کل وقتی مصنفہ اور مصورہ ہیں۔

ایوارڈز[ترمیم]

انہیں مندرجہ ذیل ایوارڈز ملے ہندوستان بھوشن اگروال ایوارڈ برائے شاعری (1989)[5] سینئر فیلو (ادب) ، محکمہ ثقافت ، وزارت انسانی وسائل کی ترقی ، حکومت ہند ، نئی دہلی (1995-1997) [6] سید حیدر رضا (ایس ایچ رضا) شاعری کے لیے ایوارڈ (2003) [6] [7]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. See http://www.poetryinternationalweb.net/pi/site/poet/item/17742/27/Teji-Grover. Accessed on 3 April 2015. Also see, Anirudh Umat, "Some Reflections on Teji Grover's Recent Poetry", The Book Review, Vol. XXXV, No. 2 - February 2011 (http://www.thebookreviewindia.org/articles/archives-510/2011/febuary/2/some-reflections-on-teji-grovers-recent-poetry.html), accessed on 23 April 2015; Birgitta Wallin, "Portatt av en poet i gult", Karavan, Stockholm, June 2010, pp. 118-20 (Special issue on Indian Literature); Lars Hermansson, "Nagot om hindipoesi, kari boli och Teji Grover", Lyrikvannen, Stockholm, No. 4, 2001, pp. 40-41; and Birgitta Wallin, "Bilder ur ett pagaende", Lyrikvannen, Stockholm, No. 4, 2001, pp. 52-54.
  2. See, Kamila Junik, "Teji Grover's Blue", Cracow Indological Studies, Vol. 12 (ed. Halina Marlewicz), Ksiegarnia Akademicka, Krakow, 2010, and Manoj Pandey, "Seven Stories of Love in Dream", The Book Review, VOL. XXXV, No. 1 January 2011 (http://www.thebookreviewindia.org/articles/archives-486/2011/january/1/seven-stories-of-love-in-dream.html), accessed on 23 April 2015
  3. See, Ashok Vajpeyi's preface to Teji Grover and Rustam Singh, Teji aur Rustam Ki Kavitaen, selected poems of both poets, New Delhi: HarperCollins, آئی ایس بی این 978-81-7223-879-7, Hindi-language. Accessed on 17 April 2015.
  4. See, https://www.iea-nantes.fr/en/chercheurs/?residents_recherche=&residents_annee%5B%5D=23&residents_submit=Ok&simpleform_submitted=form_residents&fromSimpleForm=1. Accessed on 15 November 2017.
  5. See, Bharat Bhushan Agrawal Award http://www.geocities.ws/indian_poets/hindi.html. See also, Poetry International, http://www.poetryinternationalweb.net/pi/site/poet/item/17742/27/Teji-Grover. Accessed on 17 April 2015.
  6. ^ ا ب http://pratilipi.in/teji-grover/. Accessed on 17 April 2015.
  7. See also, The Raza Foundation: Awards, http://www.therazafoundation.org/awards.php, accessed on 26 April 2015, and Poetry International http://www.poetryinternationalweb.net/pi/site/poet/item/17742/27/Teji-Grover, accessed on 17 April 2015.