جینیفر ڈونیلی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
جینیفر ڈونیلی
Jen door 4 043 (cropped).JPG 

معلومات شخصیت
پیدائش 16 اگست 1963 (56 سال)[1] اور 19 اگست 1969 (50 سال)[2]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ پیدائش (P569) ویکی ڈیٹا پر
پورٹ چیسٹر، نیو یارک[3][4][5][2]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام پیدائش (P19) ویکی ڈیٹا پر
شہریت Flag of the United States (1795-1818).svg ریاستہائے متحدہ امریکا[2]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں شہریت (P27) ویکی ڈیٹا پر
عملی زندگی
مادر علمی یونیورسٹی آف روچیسٹر
بیرکبیک، یونیورسٹی آف لندن
جامعہ لندن  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تعلیم از (P69) ویکی ڈیٹا پر
پیشہ ناول نگار،  مصنفہ[6]،  مصنفہ[7][8]،  بچوں کی ادیبہ  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں پیشہ (P106) ویکی ڈیٹا پر
پیشہ ورانہ زبان انگریزی[9]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں زبانیں (P1412) ویکی ڈیٹا پر
اعزازات
کارنیگی میڈل برائے ادب (برائے:A Northern Light) (2003)  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں وصول کردہ اعزازات (P166) ویکی ڈیٹا پر
ویب سائٹ
ویب سائٹ باضابطہ ویب سائٹ  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں باضابطہ ویب سائٹ (P856) ویکی ڈیٹا پر
P literature.svg باب ادب

امریکی مصنفہ۔ جینیفر ڈونیلی کو بچوں کے ادب کے میدان میں ایک اہم مقام حاصل ہے۔ اے ناردن لائٹس، ٹی روز۔ دی ونٹڑ روز جیسے ناول انہوں نے بچوں کے لیے لکھے۔ ڈونیلی کے خاندان کا تعلق کومیتھ اور ڈبلن کے علاقے سے ہے۔ جینیفر ڈونیلی نے لندن کے ادارے بیربیک کالج سے تعلیم حاصل کی۔ پہلا ناول ٹی روز کے نام سے لکھا۔

جینیفر ڈونیلی کی کتاب ’اے گیدرنگ لائٹ‘ ان کی تیسری تصنیف لیکن نوعمر بچوں کے لیے پہلی تصنیف ہے۔ ان کی یہ کتاب حقیقی زندگی کے ایک واقع پر مبنی ہے جس میں بیسویں صدی کی شروع میں امریکا میں ایک جوان عورت کی لاش کو ایک جھیل سے نکالا گیا تھا۔ ان کی اس کتاب پر انہیں کارنیگی میڈل دیا گیا۔

یہاں یہ امر دلچسپی سے خالی نہ ہوگا کہ ناشرین دس سال تک جینیفر ڈونیلی کی تصانیف کو شائع کرنے سے انکار کرتے رہے۔ ایک عشرے کی جدوجہد کے بعد انتالیس سال کی عمر میں ڈونیلی کی پہلی تصنیف پچھلے سال شائع ہوئی۔

حوالہ جات[ترمیم]