حمیدہ بانو بیگم

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
حمیدہ بانو بیگم
Hamida Banu Begum, wife of Mughal Emperor Humayun.jpg

مریم مکانی
معلومات شخصیت
پیدائش 1527ء
پاٹ، ضلع دادو، سندھ
وفات 29 اگست 1604
آگرہ، مغل سلطنت
مذہب اسلام
شریک حیات ہمایوں
اولاد نسل
والد شیخ علی اکبر جامعی
والدہ ماہ افراز بیگم
نسل اکبراعظم

حمیدہ بانو یا مریم مکانی (ز(ولادت: 1527 - وفات: 29 اگست 1604[1])ایک مغل ملکۂ اعظم تھی، جو اکبراعظم کی والدہ اور ہمایون کی بیوی تھی۔[2] انہوں نے ہندوستانی اور فارسی کاریگروں سے مقبرۂ ہمایوں کی تعمیر کروائی۔[3]

خاندان[ترمیم]

حمیدہ بانو بیگم 1524ء کو سندھ میں ضلع دادو کے گاؤں پاٹ میں پیدا ہوئیں۔ ان کے والد شیخ علی اکبر جامعی مغل شہزادہ اور بابر کے سب سے چھوٹے صاحبزادہ ہندال مرزا کے دوست اور اتالیق تھے ۔ علی اکبر جامعی کا نسب شیخ احمد جام جا ملتا ہے۔ ان کی والدہ کا نام ماہ افروز بیگم ہے جنھوں نے سندھ کے پاٹ میں علی اکبر جامی سے شادی کیب مطابق نسل حمیدہ ایک متقی مسلم تھیں۔[4]

شادی[ترمیم]

حمیدہ بانو بیگم کی شادی اس دن ہوئی جس پر شہنشاہ نصیر الدین محمد ہمایوں نے شادی کا انتخاب کیا ہوا تھا ۔ یہ شادی ستمبر ، 1541 (جمعہ الاول 948 ہجری) کو پیٹر (دادو ضلع ) میں ہوئی۔ وہ بیگا بیگم (بعد میں، حج کے بعد حاجی بیگم کے نام سے جانی جاتی تھیں، ) نصیر الدین محمد ہمایوںکی جونیئر بیوی بن گئیں ، جو ان کی پہلی بیوی اور چیف ساتھی تھیں۔[5][6][7] یہ شادی سیاسی ٹاور پر کامیاب ثابت ہوئی۔[8]

وفات اور اس کے بعد[ترمیم]

اپنے بیٹے اکبر کی وفات سے محض ایک سال قبل اور اپنے شوہر ہمایوں کی موت کے قریب نصف صدی قبل، 29 اگست 1604 (19 ویں شہریار ، 1013 ھ) کو آگرہ میں ان کی وفات کے بعد ان کو ہمایوں کے مقبرے میں دفن کیا گیا تھا۔

بیرونی روابط[ترمیم]

مزید پڑھیے[ترمیم]

  • Humayun-Nama : The History of Humayun by Gulbadan Begum, Tr. by Annette S. Beveridge (1902). New Delhi, Goodword, 2001. آئی ایس بی این 81-87570-99-7.E-book at Packard Institute Excerpts at Columbia Univ.
  • Begam Gulbadam؛ Annette S. Beveridge (1902). The history of Humayun = Humayun-nama. Begam Gulbadam. صفحات 249–. GGKEY:NDSD0TGDPA1. 
  • Mukhia، Harbans (2004). The Mughals of India. Malden, MA: Wiley-Blackwell. ISBN 9780631185550. 

حوالہ جات[ترمیم]

  1. Lal، Muni (1986). Shah Jahan (بزبان انگریزی). Vikas Publishing House. صفحہ xv. ISBN 9780706929294. 
  2. ہمایوں نامہ: گلبدن بیگم کا فراموشیدہ سرگزشت یاسمین مرشد، دے ڈیلی اسٹار، 27 جون 2004۔
  3. Bringing it back to glory - The Hindu
  4. Dr. B. P. Saha. Begams, concubines, and memsahibs. Vikas Pub. House. صفحہ 20. 
  5. The Humayun Nama: Gulbadan Begum's forgotten chronicle Yasmeen Murshed, The Daily Star, 27 جون 2004.
  6. Nasiruddin Humayun آرکائیو شدہ 5 مارچ 2016 بذریعہ وے بیک مشین The Muntakhabu-’rūkh by ملا عبد القادر بدایونی, Packard Humanities Institute.
  7. Bose، Mandakranta (2000). Faces of the feminine in ancient, medieval, and modern India. US: Oxford University Press. صفحہ 203. ISBN 0-19-512229-1. اخذ شدہ بتاریخ 6 اگست 2009. 
  8. Mukherjee, p.120