دوامی سیاط

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش
Dinoflagellata
عرصہ حیات کی حد: 250–0 ما Triassic یا قبل ازیں-موجودہ
Ceratium furca.jpg
Ceratium furca
صنف بندی
Domain: حقیقی المرکزیہ
مملکت: Chromalveolata
اعلیٰ ہم نسل: Alveolata
ہم نسل: Dinoflagellata
Bütschli 1885 [1880-1889]

Dinophyceae
Noctiluciphyceae
Syndiniophyceae

متبادل نام
  • Cilioflagellata Claparède & Lachmann, 1868
  • Dinophyta ڈلن، 1963
  • Dinophyceae سینسو پیشر، 1914

دَوّامِی سَیاط ، بحری حیوانات اول (marine protozoa) سے تعلق رکھنے والے یک خلوی جاندار ہوتے ہیں جنکو انگریزی میں (dinoflagellates) کہا جاتا ہے اور انکو یہ نام دینے کی وجہ یہ ہے کہ طحالب (algae) کی اس قسم کے جانداروں کے جسم میں تار نما ساخت لگی ہوتی ہے جو انکو حرکت میں چپوؤں کی طرح مدد دیتی ہے اس ساخت کو جو کہ سوطی شکل کی ہوتی ہے سیاط (واحد: سوط) (flagella) کہا جاتا ہے اور ان جانوروں کے سیاط میں خاص بات یہ ہوتی ہے کہ یہ مستقل گردشی حرکت میں رہتا ہے اسی وجہ سے انکے نام میں دوامی (یعنی گردش یا چرخ) کا لفظ شامل ہوا ، یعنی دوامی سیاط۔ انکو گردشی حرکت کے باعث چرخ سیاط بھی کہ سکتے ہیں۔ انکے مختلف زبانوں میں نام کی مزید وضاحت یوں ہے

  • اردو : دوامی سیاط (دوامی = گردش یا چرخ + سیاط = تار نما ساخت یوں کہ لیں کہ خوردبینی سونڈ)
  • Dinoflagellate : ڈائینو = دوامی یا گردش + فلیجیلیٹ = فلیجیلا یا تار نما ساخت)
  • جاپانی : اوزوبین کےموشی (اوزو = گرداب + بےن = سوط ، چھڑی ، چپو + کے = بال + موشی = کیڑا) کے موشی = بالوں والا کیڑا (صدپا یا ہزارپا)

اوپر کے بیان میں مختلف زبانوں میں اس جاندار کے نام دیۓ گۓ ہیں ۔ مقصد اس کا یہ ہے کہ اردو کے ناموں کو مشکل کہا جاتا ہے اور اعتراضات کی بھرمار کر دی جاتی ہے، اوپر انگریزی اور جاپانی کے ناموں کی اصل الکلمہ دیکھ کر یہ بخوبی عیاں ہوجاۓ گا کہ اردو کے نام دیگر زبانوں کے نام رٹنے سے کہیں قابل فہم اور آسان ہیں۔ اگر اس دعوی کو مان لیا جاۓ کہ اردو میں ہر زبان کا لفظ ویسے ہی لے لیا جاۓ جیسا کہ وہ اس زبان (مثلا انگریزی میں) ہے تو جاپانی قوم جو کہ آج ترقی میں امریکہ سمیت دنیا کی ہرقوم کر پیچھے چھوڑ چکی ہے عقل سے پیدل نہیں کہ ڈائینوفلیجیلیٹس کو اوزوبین کےموشی (گردابی سوطی صدپا) کہے ۔