رینا زریپووا

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search


رینا بیان گیزی زریپووا
(تتریہ لاطینی میں: Rina Bayan qızı Zarifova)،(تتریہ سيريلية میں: Рина Баян кызы Зарифова ویکی ڈیٹا پر (P1559) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
Rina Zaripova.jpg

معلومات شخصیت
پیدائشی نام (تتریہ لاطینی میں: Rena Bayan qızı Ağumova)،  (تتریہ سيريلية میں: Рена Баян кызы Агумова ویکی ڈیٹا پر (P1477) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیدائش 12 مارچ 1941(1941-03-12)
مینار, اکتانیشکی ضلع, سوویت تاتار خود مختار سوشلسٹ جمہوریہ, سوویت اتحاد
وفات 10 جنوری 2008(2008-10-10) (عمر  66 سال)
قازان, تاتارستان, روس
وجہ وفات سرطان  ویکی ڈیٹا پر (P509) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
طرز وفات طبعی موت  ویکی ڈیٹا پر (P1196) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
رہائش قازان  ویکی ڈیٹا پر (P551) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت سوویت یونین→
روس
تاتارستان
قومیت تاتاری
شریک حیات زاہت ظریفوف
والد فتکسلبیان آگموف (1903-1973)
والدہ مسرورہ ظریفولینہ (1908–1983)
عملی زندگی
پیشہ
  • صحافی
  • مترجم
  • استاد
مادری زبان تاتاری زبان  ویکی ڈیٹا پر (P103) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ ورانہ زبان تاتاری زبان،  روسی،  جرمن  ویکی ڈیٹا پر (P1412) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شعبۂ عمل صحافت  ویکی ڈیٹا پر (P101) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

رینا زریپووا (تاتار: رینا بیان گیزی ظریفوا؛ 12 (19) مارچ 1941 - 10 جنوری 2008 [1] ) ایک تاتاری صحافی، مترجم، استاد، جمہوریہ تاتارستان کی قابل ثقافتی ورکر (1995) اور صحافیوں کے مقابلے "بلور قالم" یا "کرسٹل قلم" (2001) کی انعام یافتہ تھیں۔

1973-2002 میں، انہوں نے اخبار "تاتارستان کے نوجوان"(Tatarstan yäşläre) میں خطوط محکمہ مینیجر کے طور پر کام کیا۔ ان کے مضامین اخلاقیات، پرورش، خاندان وغیرہ کے مسائل سے متعلق بہت سے مسائل کا احاطہ کرتے ہیں۔

زندگی[ترمیم]

ابتدائی زندگی[ترمیم]

12 مارچ 1941 کو گاؤں مینار میں پیدا ہونے والی، وہ اسکول کے اساتذہ مسررا ظریفلینا اور فتکسلبیان آگموف کی بیٹی تھیں۔[2] ان کے پیدائشی سرٹیفکیٹ پر غلط تاریخ 19 مارچ درج کی گئی تھی۔ ملاؤں کی ایک قطار سے آتے ہوئے، ان کے والد کو اپنے خاندان کے ساتھ سوویت پالیسیوں کی وجہ سے مسلسل نقل مکانی کرنی پڑرہی تھی۔[3]ان کے والد کے دو بھائیوں اور اس کی دادی کو دبایا گیا تھا اور انہیں 1930، 1936 اور 1937 میں گولی مار دی گئی تھی۔[4] وہ ہمیشہ مختلف جگہوں کے درمیان منتقل ہونے کی پابند تھیں، ان کا خاندان مینار اور کازکی میں تھوڑی دیر کے لیے رہا۔[3] ان کے خاندان میں 8 بچے تھے۔ ان کے والد نے عظیم محب وطن جنگ میں حصہ لیا۔ اس کے بعد، ان کا خاندان یانا ایلم چلا گیا، جہاں انہوں نے اپنی دو سالہ ابتدائی تعلیم حاصل کی۔ اس کے بعد، ان کا خاندان تھوڑی دیر کے لیے "ایسکه سلطان غول" (ISke Soltanğol) ، "شاریپ" (Şärip) اور "یوغاری گاری" (Yuğarı Gäräy) کے دیہاتوں میں چلا گیا۔[3] انہوں نے اپنی دس سالہ اسکول کی تعلیم "یوغاری گاری" (Yuğarı Gäräy) میں مکمل کی۔

1960 میں، انہیں ایلابوگا پیڈاگوجیکل انسٹی ٹیوٹ کی روسی تاتار کی علمیات کی فیکلٹی میں داخل کیا گیا [5] اور 1965 میں اپنی تعلیم مکمل کی۔[6]ان کو انسٹی ٹیوٹ کی طرف سے بھیجا گیا، جہاں انہوں نے تاتار سرلانی (1964-1967) اور "سطح یولغا" Keçe Yılğa) (1967-1968)) کے گاؤں کے اسکول میں روسی ادب اور زبان سکھائی۔[7][8][5] 1967 میں، انہوں نے طبیعیات کے استاد زاہت ظریفوف سے شادی کی۔

قازان میں زندگی[ترمیم]

1968 میں، زریپوف خاندان قازان منتقل ہوگیا. 20 فروری 1969 کو اس نے اخبار "تاتارستان کے نوجوان" (Tatarstan yäşläre) کے لیے کام کرنا شروع کیا۔[7] 1973 میں، وہ شعبہ خطوط کی ڈائریکٹر بن گئیں اور یکم اکتوبر 2002 تک اس عہدے پر فائز رہیں۔[7]

13 فروری، 1995 کو، انہیں "جمہوریہ تاتارستان کی ثقافتی کارکن" کا خطاب ملا۔[7][2] 17 مئی کو، 2001 میں، وہ صحافیوں کے مقابلے "بلور قالم" کی نامزدگی "عزت اور احترام" میں انعام یافتہ بن گئیں۔[2][7]

ریٹائرمنٹ[ترمیم]

اپنی ریٹائرمنٹ کے بعد، انہوں نے "تاتارستان کے نوجوان"(Tatarstan yäşläre)، "دنیائے تاتار" (Tatar ile)، "میرا وطن تاتارستان ہے" (Watanım Tatarstan)، "شہر قازان" (Şähri Qazan), "جوانان تاتارستان" (Молодежь Татарстана)، "روشن خیالی" (Mäğrifät) اور جریدہ "دریائے وولگا" (İdel) جیسے رسالوں اور اخبارات میں شائع کرنا جاری رکھا۔

2003 میں، "نئی صدی" (The New Century) چینل نے زریپوف خاندان کے لیے وقف پروگرام "آدم اور حوا" (Adäm belän Xäwa) کی ایک قسط کو نشر کیا۔ 2005 میں، انہیں "قازان کی 1000ویں سالگرہ کی یاد میں" تمغہ سے نوازا گیا۔

موت، جنازہ اور یادگار[ترمیم]

آخری سالوں میں، کینسر کے ٹیومر کی دریافت کے بعد، اس پر سرجری کی گئیں۔ وہ 10 جنوری 2008 کو کینسر کی وجہ سے انتقال کر گئیں، ان کی لاش کو ماماڈیشکی کے راستے پر قازان کے مسلم قبرستان میں دفن کیا گیا۔

5 مارچ 2021 کو، ریل صدری نے رینا زریپووا کی 80 ویں سالگرہ کے موقع پر "تاتارستان ریڈیو" پر "جب آپ اپنی خوشی بانٹتے ہیں" (Küñel cılısın öläşkändä)، یا "دل سے گرمجوشی چھوڑنا" نشریات تیار کی۔ مارچ اور اپریل 2021 میں، متعدد مضامین، جیسے کہ "Ğomer yulı üze ber sänğätter..." ("ایک فن کے طور پر زندگی کا راستہ...")، "Serdäşçe apabız" ("ہمارا اعتماد")، " Meñnärneñ serdäşe häm äñgämädäşe" ("ہزاروں کا رازدار") رینا زریپووا کے لیے وقف تاتار اخبارات اور جریدوں میں شائع ہوا۔

"تاتارستان کے نوجوان" (Tatarstan yäşläre)[ترمیم]

رینا زریپووا نہ صرف اخبار "تاتارستان کے نوجوان"(Tatarstan yäşläre) کی خطوط کے شعبے کی منیجر تھیں، بلکہ وہ اس شعبہ سے قریبی تعلق رکھنے والے حصوں کی قیادت بھی کرتی تھیں۔

خفیہ سیکشن[ترمیم]

پہلی بار، رینا زریپووا نے، سرلانی کے تاتار گاؤں سے اپنے طالب علموں کے ذریعے، تاتار نوجوانوں کے اخبار کا "خفیہ" سیکشن (Serdäş) دریافت کیا۔[7] اس سیکشن میں، جسے خطوط سیکشن کی ڈائریکٹر صحافی صوفیہ احمدوا نے کھولا، اخبار کے قارئین نے اخلاقیات، تعلیم، خاندان وغیرہ کے شعبوں میں اخبار اور اس کے قارئین کی حمایت حاصل کرنے کی امید میں اپنے سوالات کا تبادلہ کیا۔

20 فروری 1969 کو رینا زریپووا نے "تاتارستان کے نوجوان"(Tatarstan yäşläre) اخبار میں اپنے کیریئر کا آغاز کیا۔[7] سب سے پہلے، اس نے خطوط گروپ، صوفیہ احمدوا کی مترجم اور اسسٹنٹ ڈائریکٹر کے طور پر خدمات انجام دیں۔ احمدوا کی ریٹائرمنٹ کے بعد، بیوروکریسی اور اس محکمے کو 1970 کی دہائی میں کئی سالوں تک مختلف افراد نے چلایا، جن میں فرید حکیم زیانوف، گالیا ریمووا، فرید گالیوف، اور دیگر شامل ہیں۔[7] اس کے بعد رینا زریپووا نے خطوط اور رازداری کے حصوں کا انتظام سنبھال لیا۔

ہفتہ سیکشن[ترمیم]

اخبار کا "ہفتہ" (Şimbä) سیکشن سوویت تاتار خود مختار سوشلسٹ جمہوریہ کی مختلف ممتاز شخصیات کے ساتھ ساتھ قارئین کی درخواست پر مشہور موسیقاروں کے نوٹوں کے لیے وقف تھا۔[9] چونکہ گلوکار اکثر سارہ صدیقووا کے گانے جاری کرنا چاہتے تھے، اس لیے رینا کو وقتاً فوقتاً ان سے ملنا پڑتا تھا، جو بعد میں ان کی قربت اور دوستی کا باعث بنی۔[9]

کتابیں[ترمیم]

1982 میں، تاتاری پبلشرز نے رینا زریپووا کی پہلی کتاب "خاندانی گرمجوشی" (Ğailä cılısı) جاری کی، جو مختلف سالوں کے قارئین کے خطوط پر مبنی ان کے مضامین پر مشتمل تھی [10] یہ کتاب مختلف سماجی مسائل کی نشاندہی کرتی ہے، جن کا خاندان کے مسئلے سے گہرا تعلق ہے۔ اس کا ہر حصہ مصنف کے اختتام پر ختم ہوتا ہے۔[10]

1980-1990 کی دہائی میں رینا زریپووا کے مختلف مضامین کے مجموعے میں شائع ہوئے۔ ان میں سے ایک کتاب "توبہ" (Täwbä) ہے جسے رینا زریپووا اور یازیلا ابودکادیرووا نے تالیف کیا ہے، جسے تاتاری پبلشرز نے 1991 میں شائع کیا تھا۔[11]

خاندان[ترمیم]

ان کے شوہر، زاہت صدراسلام الِ ظریفوف، ایک سینئر استاد، قازان قومی تحقیقی ٹیکنولوجیکل یونیورسٹی میں ایک طویل عرصے سے انجینئر تھے۔ وہ 4 بچوں کے والدین ہیں۔[2]

یادیں[ترمیم]

رینا زریپووا کو تاتارستان کے ریڈیو میں تاتاری نثر، شاعری اور ڈرامے کے کلاسیکی کاموں کے مختلف ادبی مطالعے سے سراہا گیا۔ وہ روسی ریڈیو پر ناول، خاص طور پر جیک لندن کے ساتھ ساتھ میخائل شولوخوف کے "دن آرام کریں" کو سننے میں بھی دلچسپی رکھتی تھیں۔[12] اسے اکثر اس جلدی کے بارے میں یاد دلایا جاتا تھا، جو اسے ریڈیوز میں سننے کے لیے کھانے کے وقفے میں شاذ و نادر ہی واپس آ جاتی ہے۔[12]

اشاعتیں[ترمیم]

مضامین[ترمیم]

  • Zaripova، Rina (January 2003). "İ, ğomer ağışları..." [O flowing rivers of our lifes...]. Youth of Tatarstan (بزبان تتریہ). Qazan: İdel-Press (10319 /11). 
  • Zaripova، Rina (March 2005). "Meñnärneñ seren sıydırğan "Serdäş"" ["The Confidante" is holding thousand's secrets]. Youth of Tatarstan (بزبان تتریہ). Qazan: İdel-Press (10658 /38). 
  • Zaripova، Rina (December 2004). "Onıtılmas xatirälär" [Unforgettable memories]. Youth of Tatarstan (بزبان تتریہ). Qazan: İdel-Press (10612 /70). 
  • Zaripova، Rina (November 2004). "Şıfalı "qan'eçkeçlär"" [Healing leaches]. Youth of Tatarstan (بزبان تتریہ). Qazan: İdel-Press (10597 /55). 
  • Zaripova Rina، Rina (February 2003). "Tirän mäğnäle berqatlılıq" [Deep meaningful simplicity]. Youth of Tatarstan (بزبان تتریہ). Qazan: İdel-Press (10327 /19). 
  • Zaripova، Rina (December 2006). "Yaña yıl – moğciza, ä bez romantiqlar idek" [New year is a miracle, and we were romantics]. Youth of Tatarstan (بزبان تتریہ). Qazan: İdel-Press (10929 /75). 

کتابیں[ترمیم]

ترجمے[ترمیم]

  • Skarzhinsky، M.؛ Chekmarev، V. (1999). Bazar iqtisadınnan 20 däres: Tatar ğomumi belem mäkt. 10 nçı s-fı öçen däreslek [20 lessons of market economy: textbook for students of the 10th grade of secondary schools] (بزبان تتریہ). ترجمہ بذریعہ Şämsetdinova، Gölsinä؛ Zaripova، Rina. Qazan: Mäğärif. صفحہ 118. ISBN 5-7761-0617-6. 

حوالہ جات[ترمیم]

  1. "Кладбище Мусульманское - Кладбища Казани". cemetery.kzn.ru. اخذ شدہ بتاریخ 22 فروری 2021. 
  2. ^ ا ب پ ت Muratov 2003, p. 174.
  3. ^ ا ب پ Samat 2007, p. 237.
  4. "Списки жертв". lists.memo.ru. اخذ شدہ بتاریخ 18 فروری 2021. 
  5. ^ ا ب Ğimadieva 2014, p. 60.
  6. Ğimadieva 2014, p. 67.
  7. ^ ا ب پ ت ٹ ث ج چ Zaripova، Rina (2005-03-29). "The Confidante" is holding thousand's secrets". "Youth of Tatarstan" (official site). اخذ شدہ بتاریخ 24 فروری 2020. 
  8. Samat 2007, p. 229.
  9. ^ ا ب Zaripova Rina (December 2004). "Onıtılmas xatirälär = Unforgettable memories". Youth of Tatarstan (بزبان تتریہ). Kazan: İdel-Press (10612 /70). 
  10. ^ ا ب Zaripova 1982, p. 3, 4.
  11. Abdulqadıyrova 1991, p. 3.
  12. ^ ا ب Zaripova Rina، Rina (February 2003). "Tirän mäğnäle berqatlılıq" [Deep meaningful simplicity]. Youth of Tatarstan (بزبان تتریہ). Qazan: İdel-Press (10327 /19). 

ذرائع[ترمیم]

کتابیں[ترمیم]

  • Ğimadieva، Naciä (2014). Mäktäbem - yaqtı yulım [My school is a bright path]. Qazan: İdel-press. صفحہ 96. 
  • Muratov، F.؛ Xucin، Y. (2003). Aqtanış - tuğan cirem [Aktanysh is my native land]. Qazan: İdel-press. صفحات 174–175. 
  • Samat، Älfiä (2007). "Jurnalist". Min yaratam sezne... [I love you...] (بزبان تتریہ). Qazan: Полигран-Т. صفحات 229–237. ISBN 978-5-902724-02-5. 
  • Zaripova، Rina (1982). Ğailä cılısı [Family warmth]. Kazan: Tatar Book Publishers. صفحہ 56. 
  • Abdulqadıyrova، Yäzilä؛ Zaripova، Rina، ویکی نویس (1991). Täwbä [Repentance]. Kazan: Tatar Books Publishers. صفحہ 136. ISBN 5-298-00662-0. 

مضامین[ترمیم]

بیرونی روابط[ترمیم]

فلم[ترمیم]

ریڈیو نشریات[ترمیم]