زرارہ بن اوفی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
زرارہ بن اوفی
معلومات شخصیت
وفات سنہ 711ء  ویکی ڈیٹا پر (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
بصرہ  ویکی ڈیٹا پر (P20) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت سلطنت امویہ  ویکی ڈیٹا پر (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
پیشہ محدث،  منصف  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ ورانہ زبان عربی  ویکی ڈیٹا پر (P1412) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

زرارہ بن اوفی ابو حاجب العامری البصری بصرہ کے تابعی ، محدث، اور قاضی تھے اور وہ ثقہ حدیث کے راویوں میں سے تھے صحیح ہے کہ وہ نماز فجر کے وقت پڑھا کرتے تھے اور جب یہ پڑھتے تھے: فَإِذَا نُقِرَ فِي النَّاقُورِ پھر جب صور پھونکا جائے گا۔اس آیت پر پہنچے تو آپ کی وفات ہو گئی ۔ آپ کی وفات 93 ہجری میں الولید بن عبد الملک کی جانشینی کے بعد ہوئی۔ [1] [2] [3] عتاب بن المثنا القشیری نے کہا: ہم سے بہز بن حکیم نے بیان کیا: زرارہ نے ہمیں مسجد بنو قشیر میں فجر کی نماز پڑھائی اور انھوں نے قرأت کی یہاں تک کہ جب آپ سورہ مدثر کی اس آیت پر پہنچے۔جب صور پھونکا جائے گا وہ ایک مشکل دن تھا۔" (المدثر 8-10) آپ کی روح قفس عنصری سے پرواز کر گئی ، بہز نے کہا: میں اسے اٹھانے والوں میں شامل تھا، یہ الولید بن عبد الملک کی خلافت کا تھا۔

روایت حدیث[ترمیم]

آپ حدیث نبوی کی روایت ان حضرات سے کرتے ہیں : عمران بن حصین، ابوہریرہ اور ابن عباس رضی اللہ تعالیٰ عنہما۔ راوی: ایوب السختیانی، قتادہ، بہز بن حکیم، عوف العربی وغیرہ۔ [4]

جراح و تعدیل[ترمیم]

علما آپ کی تعریف کرتے ہیں۔ ابو حاتم بن حبان البستی: زرارہ عبادت گزاروں میں سے ایک۔ احمد بن شعیب النسائی: ثقہ۔ احمد بن صالح الجیلی: امانت دار اور نیک آدمی تھے۔ ابن حجر عسقلانی: ثقہ۔ محمد بن سعد، الواقدی کے مصنف: ثقہ اور احادیث کے حامل ہیں۔ یحییٰ بن معین: ثقہ۔[5]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. "إسلام ويب - سير أعلام النبلاء - الطبقة الثانية - زرارة بن أوفى- الجزء رقم4"۔ islamweb.net (بزبان عربی)۔ 12 نوفمبر 2020 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 21 مئی 2021 
  2. "ص475 - كتاب مرآة الزمان في تواريخ الأعيان - زرارة بن أوفى الحرشي - المكتبة الشاملة الحديثة"۔ al-maktaba.org۔ 22 مايو 2021 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 21 مئی 2021 
  3. "زرارة بن أوفى الحرشي - The Hadith Transmitters Encyclopedia"۔ hadithtransmitters.hawramani.com۔ 15 مئی 2021 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 22 مئی 2021 
  4. "ص294 - كتاب أخبار القضاة - زرارة بن أوفى الجرشي - المكتبة الشاملة"۔ shamela.ws۔ 13 ستمبر 2021 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 13 ستمبر 2021 
  5. "موسوعة الحديث: زرارة بن أوفى"۔ hadith.islam-db.com۔ 21 مئی 2021 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 22 مئی 2021