شبینہ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

شبینہ رات سے منسوب عمل ہے۔ عام طور پر اسے قرآن پڑھنے یا ختم قرآن کے معنی میں لیا جاتا ہے۔

ماہ رمضان میں تراویح کے دوران پورے قرآن کا پڑھنا سنت ہے۔ یہ سلسلہ پورے مہینے یعنی 29-30 دن پر محیط ہے۔

اختراع[ترمیم]

آج کل ایک دن میں قرآن حکیم کا شبینہ کرانے کا رواج بہت تیزی سے فروغ پا رہا ہے جو سنت کے خلاف ہے۔ احادیث کی رو سے کم از کم تین دن میں قرآن مکمل کیا جانا چاہیے۔

سماجی دشواریاں[ترمیم]

شبینہ میں اکثر لاؤڈ سپیکر کا استعمال کیا جاتا ہے۔ یہ عمل بھی کراہیت سے خالی نہیں ہے۔ تلاوت قرآن سننا واجب ہے اور قرآن نہ سننے والا شریعت کی نظر میں گنہگار ٹھہرتا ہے۔ لہٰذا مناسب اور دانش مندانہ بات یہ ہے کہ شبینہ کے لیے اوّل تو لاؤڈ سپیکر نہ لگایا جائے اور اگر اس کا استعمال ناگزیر ہو تو اس کے لیے اندرونی نظام ہو تاکہ اس کی آواز مسجد کی چار دیواری سے باہر نہ جا سکے۔[1]

حوالہ جات[ترمیم]