فلاغیوس

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
فلاغیوس
Pelagius.jpg
 

معلومات شخصیت
پیدائش سنہ 360  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وفات سنہ 418 (57–58 سال)  ویکی ڈیٹا پر (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
فلسطین  ویکی ڈیٹا پر (P20) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
رہائش روم (380–410)
کارتھج
یروشلم  ویکی ڈیٹا پر (P551) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت قدیم روم  ویکی ڈیٹا پر (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
پیشہ الٰہیات دان،  فلسفی،  مبلغ  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ ورانہ زبان لاطینی زبان،  قدیم یونانی  ویکی ڈیٹا پر (P1412) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
الزام و سزا
جرم بدعت  ویکی ڈیٹا پر (P1399) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

فلاغیوس (انگریزی: Pelagius) کو مسیحیت میں ایک ”بدعتی“ پکارا جاتا ہے۔ انہوں نے نظریۂ موروثی گناہ کے خلاف یہ موقف اختیار کیا کہ انسان جب پیدا ہوتا ہے تو وہ نیکی اور بدی سے مُبّرا ہوتا ہے اور یہ انسان کے اختیار میں ہے کہ وہ نیک یا بری راہ چُنے۔ وہ بدی کو انسانی سرشت میں ایک رجحان نہیں بلکہ ایک عمل تصور کرتے تھے۔[1]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. فلاغیوس، دائرۃ المعارف بریطانیکا، اخذ کردہ بتاریخ 15 ستمبر 2017ء