قومی نشان سلطنت عثمانیہ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
قومی نشان سلطنت عثمانیہ
Coat of arms of the Ottoman Empire (1882–1922).svg
تفصیلات
استعمال کنندہسلطان عبد الحمید ثانی
منظوری1882
Ordersپانچ عثمانی تمغے
استعمال خاندان آل عثمان

سلطنت عثمانیہ کے ہر سلطان کا اپنا ایک امتیازی نشان تھا ، جسے طغرا کہا جاتا ہے ، جو شاہی علامت کے طور پر کام کرتا تھا۔ یورپی رسوم ورواج کے مطابق ایک قومی نشان انیسویں صدی کے آخر میں تشکیل دیا گیا تھا۔ ہیمپٹن کورٹ محل نے سلطنت عثمانیہ سے اپنے قومی نشان کو ان کے مجموعہ میں شامل کرنے کی درخواست کی۔ چونکہ اس سے قبل قومی نشان سلطنت عثمانیہ میں استعمال نہیں ہوتا تھا ، اس لئے اس درخواست کے بعد یہ ڈیزائن کیا گیا تھا ، اور حتمی ڈیزائن سلطان عبد الحمید دوم نے 17 اپریل 1882 کو اپنایا ۔

نمونہ[ترمیم]

اس نشان میں ایک پر شکوہ پھول ہے جس کے اوپر طغرا بنا ہوا ہے۔ اس پھول کے ارد گرد دو جھنڈوں سمیت ریاست کے مختلف عناصر کو ترتیب دیا گیا ہے: سرخ پرچم چاند ستارہ کے ساتھ اناطولیہ ولایت اور دیگر ایشیائی ایالتوں [1] کو، جبکہ سبز پرچم ایالت رومیلیا کو ظاہر کرتا ہے۔ جھنڈوں کے پیچھے متعدد نیزے اور دوسرے ہتھیار ہیں۔ جانداروں کی تصویر کشی کے خلاف اسلامی ہدایات کو مدنظر رکھتے ہوئے ، کسی جانور کو نمونے میں شامل نہیں کیا گیا ہے۔

اس کے نیچے پانچ عثمانی تمغے لٹک رہے ہیں.

  • پہلی تحریر عربی میں ہے "محمود خان ولد عبد الحمید ، ہمیشہ فاتح"۔ اصل تحریر: محمود خان بن عبد الحمید مظفر دائماً ۔
  • دوسری تحریر بھی عربی میں ہے جو کہ بڑے سبز ہلال پر لکھی ہوئی ہے: "سلطنت عثمانیہ کے حکمران ، سلطان عبد الحمید جو خدا پر بھروسہ کرتے ہیں" [2]

علامتیں[ترمیم]

نشانات کے معنی درج ذیل ہیں۔ [3]

  • بائیں طرف سبز پرچم: رومیلیا ایالت ۔ [1]
  • دائیں طرف سرخ پرچم: اناطولیہ ایالت اور دیگر ایشیائی ایالتیں ۔
  • بیچ میں بیضوی شکل اور اس کے اوپر کی پگڑی عثمانی خاندان کو دنیا کے تمام مسلمانوں کا رہنما یا خلیفہ کے طور پر ظاہر کرتی ہے۔
  • بائیں طرف پھول سلطنت عثمانیہ کی رواداری کی علامت ہیں۔
  • بائیں طرف بنا ترازو عثمانیوں کے انصاف کی علامت ہے
  • ترازو کے نیچے بائیں طرف والی کتابیں قرآن اور قانون کی کتابیں ہیں جو اسلامی ریاست کی نشاندہی کرتی ہیں۔
  • بائیں اور دائیں ہتھیار عثمانی فوج کی علامت ہیں۔
  • سورج عثمانی ریاست کی عظمت کی علامت ہے
  • سلطان کی مہر (طغرا) کے ساتھ سورج پر سبز تمغہ عظیم عثمانی خاندان کی علامت ہے۔
  • سلطان کے مہر (طغرا) کے نیچے آدھا سبز چاند اس بات کی علامت ہے کہ عثمانی ریاست دنیا کے تمام مسلمانوں کی محافظ ہے۔
  • وہ تختہ جہاں تمغوں کولٹکایا گیاہے، عثمانیہ ریاست اور ترک ثقافت کی جڑوں کی علامتی نشاندہی کرتا ہے۔
  • نیچے لٹکے تمغے سلطنت کے اندر مختلف نسلی اقوام کی نمائندگی کرتے ہیں ۔

مزید دیکھئے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ ا ب Sosyal Medyada Şeriat Bayrağı Diye Paylaşılan Bayrağın Aslında Rumeli'den Gelmesi (in Turkish)
  2. https://defence.pk/pdf/threads/coat-of-arms-of-the-ottoman-empire.243952/
  3. https://www.allaboutturkey.com/ottoman_sign.html