پون کمار چاملنگ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
پون کمار چاملنگ
(ہندی میں: पवन कुमार चामलिंग ویکی ڈیٹا پر مقامی زبان میں نام (P1559) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
Pawan-Kumar-Chamling.jpg 

مناصب
وزیر اعلیٰ سکم (5 )   ویکی ڈیٹا پر منصب (P39) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
دفتر میں
12 دسمبر 1994  – 27 مئی 2019 
Fleche-defaut-droite-gris-32.png سنچامن لمبو 
پریم سنگھ تمانگ  Fleche-defaut-gauche-gris-32.png
معلومات شخصیت
پیدائش 22 ستمبر 1950 (70 سال)  ویکی ڈیٹا پر تاریخ پیدائش (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
یانگ گانگ  ویکی ڈیٹا پر مقام پیدائش (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت Royal flag of Sikkim.svg سکم سلطنت
Flag of India.svg بھارت  ویکی ڈیٹا پر شہریت (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
پیشہ سیاست دان  ویکی ڈیٹا پر پیشہ (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ ورانہ زبان انگریزی، نیپالی  ویکی ڈیٹا پر زبانیں (P1412) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

پون کمار چاملنگ (پیدائش 22 ستمبر 1950ء) ایک بھارتی سیاست دان ہیں۔ اور وہ بھارت کی ریاست سکم کے پانچویں اور سابقہ وزیر اعلیٰ ہیں۔[1][2] چاملنگ سکم ڈیموکریٹک فرنٹ کے بانی صدر ہیں، جس کی گزشتہ پانچ مدتوں سے (سنہ 1994ء سے) ریاست پر حکومت ہے۔[3]

پون کمار چاملنگ آزادی کے بعد کسی بھی ریاست پر اتنے لمبے عرصے تک حکومت کرنے والے واحد وزیر اعلیٰ ہیں۔[4] سکم ڈیموکریٹک فرنٹ کی تشکیل کرنے سے قبل، چاملنگ نر بہادر بھنڈاری کی کابینہ میں سنہ 1989ء سے سنہ 1992ء تک وزیر صنعت، اطلاعات اور عوامی تعلقات تھے۔

18 جنوری 2016ء کو وزیر اعظم بھارت نریندر مودی دو روزہ دورے پر ریاست سکم آئے اور انہوں نے ریاست سکم کو بھارت کی پہلی اور واحد ”نامیاتی ریاست“ قرار دیا۔[5]

نجی زندگی[ترمیم]

پون کمار چاملنگ یانگ گانگ، جنوبی سکم میں اشبہادر چاملنگ اور آشارانی چاملنگ کے ہاں پیدا یوئے تھے۔ چاملنگ نیپالی زبان کے مصنف ہیں اور انہیں سکم ساہتیہ پریشد کی جانب سے ”بھانو پرسکار“ (2010ء) سے بھی نوازا گیا تھا۔ ان کا قلمی نام پون چاملنگ ”کیرن“ ہے۔ چاملنگ کے آٹھے بچے ہیں: 4 بیٹے اور 4 بیٹیاں۔[6]

سیاسی زندگی[ترمیم]

پون کمار چاملنگ نے اپنے سیاسی کیریئر کا آغاز 32 سال کی عمر میں شروع کیا تھا۔ وہسنہ 1982ء میں یانگ گانگ گرام پنچایت کے صدر منتخب ہوئے۔ سنہ 1985ء میں پہلی مرتبہ سکم کی مجلس قانون ساز کے رکن منتخب ہوئے۔ دوسری مرتبہ دامتھانگ سے رکن منتخب ہونے کے بعد، وہ نر بہادر بھنڈاری کابینہ میں سنہ 1989ء سے سنہ 1992ء تک وزیر صنعت، اطلاعات اور عوامی تعلقات بنے۔ سکم میں لگاتار اہم سیاسی نقلابی حالات کے بعد، چاملنگ نے 4 مارچ 1993ء کو سکم ڈیموکریٹک فرنٹ کی بنیاد رکھی۔

پون کمار چاملنگ نے 21 مئی 2014ء کو پانچویں مرتبہ سکم کے وزیر اعلیٰ کی حیثیت سے حلف اٹھایا تھا، جو بھارت میں ایک ریکارڈ ہے۔[7]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. "Sikkim budget session from 25 جون"۔ گینگٹاک۔ پریس ٹرسٹ آف انڈیا۔ مورخہ 6 جنوری 2019 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 7 نومبر 2012۔ نادرست |=مردہ ربط (معاونت)
  2. "Pawan Chamling — The Fifth Chief Minister of Sikkim"۔ نیشنل انفارمیٹکس سینٹر۔ مورخہ 6 جنوری 2019 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 7 نومبر 2012۔ نادرست |=مردہ ربط (معاونت)
  3. "Sikkim CM Pawan Kumar Chamling: We have been let down by West Bengal"۔ مورخہ 6 جنوری 2019 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ نادرست |=مردہ ربط (معاونت)
  4. "Sikkim's Pawan Chamling pips Jyoti Basu as India's longest-serving chief minister"۔ مورخہ 6 جنوری 2019 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ نادرست |=مردہ ربط (معاونت)
  5. "Sikkim becomes India's first organic state"۔ ڈی این اے انڈیا۔ مورخہ 6 جنوری 2019 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ نادرست |=مردہ ربط (معاونت)
  6. "Sikkim's Pawan Chamling becomes longest serving Chief Minister, surpasses former West Bengal Chief Minister Jyoti Basu"۔ مورخہ 6 جنوری 2019 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ نادرست |=مردہ ربط (معاونت)
  7. "Pawan Kumar Chamling crosses Jyoti Basu's record as longest-serving Chief Minister"۔ دی ہندو۔ مورخہ 6 جنوری 2019 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ نادرست |=مردہ ربط (معاونت)