آسیہ ناصر

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
آسیہ ناصر
قومی اسمبلی پاکستان کی رکن
مدت منصب
2013 – 31 مئی 2018
مدت منصب
2008 – 2013
مدت منصب
2002 – 2007
معلومات شخصیت
پیدائش 15 جولا‎ئی 1971 (51 سال)  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
کوئٹہ  ویکی ڈیٹا پر (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت Flag of Pakistan.svg پاکستان  ویکی ڈیٹا پر (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
جماعت جمیعت علمائے اسلام  ویکی ڈیٹا پر (P102) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
پیشہ سیاست دان  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مادری زبان اردو  ویکی ڈیٹا پر (P103) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ ورانہ زبان اردو  ویکی ڈیٹا پر (P1412) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

آسیہ ناصر (انگریزی: Aasiya Nasir) (ولادت: 1971ء) ایک پاکستانی سیاست دان ہیں جو 2002ء سے مئی 2018ء تک پاکستان کی قومی اسمبلی کی رکن رہ چکی ہیں۔

ابتدائی زندگی اور تعلیم[ترمیم]

آسیہ ناصر 15 جولائی 1971 کو پاکستان کے کوئٹہ میں پیدا ہوئیں۔[1] انہوں نے گورنمنٹ گرلز کالج کوئٹہ سے انگریزی ادب میں ایم اے کیا۔ آسیہ نے کراچی کے نوٹری ڈیم انسٹی ٹیوٹ آف ایجوکیشن سے اساتذہ کی تربیت میں سند بھی حاصل کی۔[1]

سیاسی زندگی[ترمیم]

2002ء کے عام انتخابات[ترمیم]

آسیہ ناصر 2002ء کے عام انتخابات میں اقلیتوں کے لیے مخصوص نشست پر متحدہ مجلس عمل کی امیدوار کی حیثیت سے پاکستان کی قومی اسمبلی کی رکن منتخب ہوئیں۔[2]

2008ء کے عام انتخابات[ترمیم]

آسیہ 2008ء کے پاکستانی عام انتخابات میں بلوچستان سے خواتین کے لیے مخصوص نشست پر متحدہ مجلس عمل کی امیدوار کی حیثیت سے پاکستان کی قومی اسمبلی کی رکن دوبارہ منتخب ہوئیں۔[3]

2013ء کے عام انتخابات[ترمیم]

وہ 2013ء کے پاکستانی عام انتخابات میں اقلیتوں کے لیے مخصوص نشست پر جمیعت علمائے اسلام کی امیدوار کی حیثیت سے پاکستان کی قومی اسمبلی میں دوبارہ منتخب ہوئیں۔[4][5][6]

آسیہ نے جون 2014ء میں یہ مسئلہ اٹھایا کہ کیوں غیر مسلموں کو پاکستان کا وزیر اعظم یا ملک کا صدر منتخب نہیں کیا جاسکتا۔[7][8][9] انہوں نے پاکستان میں غیر مسلم برادری کو شراب کے استعمال پر پابندی کی بھی مخالفت کی۔[10]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ ا ب "Profile" (PDF). pildat.org. PILDAT. اخذ شدہ بتاریخ 10 اکتوبر 2018. 
  2. "12 Assembly members" (PDF). National Assembly. اخذ شدہ بتاریخ 05 دسمبر 2017. 
  3. Asghar، Raja (18 March 2008). "NA oath-taking overshadowed by power struggle in PPP". DAWN.COM (بزبان انگریزی). 10 اپریل 2017 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 10 اپریل 2017. 
  4. "Profile Aasiya Nasir". National Assembly. January 10, 2015 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 10 جنوری 2015. 
  5. "Is the NA apathetic towards minority issues?". DAWN.COM (بزبان انگریزی). 22 September 2014. 08 مارچ 2017 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 07 مارچ 2017. 
  6. "All JUI men to get key positions". www.thenews.com.pk (بزبان انگریزی). 13 ستمبر 2017 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 08 جولا‎ئی 2017. 
  7. "JUI-F MNA questions why minorities could not be PM or president". Express Tribune. 14 June 2014. 08 مارچ 2015 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 10 جنوری 2015. 
  8. "JUI-F MNA says minority discrimination is 'unacceptable'". Dawn. 14 June 2014. 26 جنوری 2015 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 10 جنوری 2015. 
  9. "HR Division's inaction over issues of madressah girls irks NA committee". Dawn. 16 December 2014. 18 دسمبر 2014 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 10 جنوری 2015. 
  10. "Christian MNA's bill seeking alcohol ban for non-Muslims 'corked'". Pakistan Today. 30 September 2014. 12 نومبر 2014 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 10 جنوری 2015.