ابی سلوم

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں
ابی سلوم کو قتل کرکے درخت سے بذریعہ بالوں کے لٹکا دیا گیا۔

ابی سلوم (عبرانی: אַבְשָלוֹם ؛ مطلب: یہ باپ سلامتی ہے) داؤد بادشاہ کے تیسرے اور لاڈلے بیٹے تھے۔ وہ جسور کے بادشاہ تلمی کی بیٹی معکہ سے پیدا ہوئے۔[1] ایک خاندانی جھگڑے کی بنا پر ابی سلوم نے اپنے بھائی امنون کا قتل کردیا تھا۔[2] اس لیے اُنہیں اپنے نانا تلمی کے ہاں پناہ لینی پڑی۔ وہ وہاں تین برس تک رہے۔ داؤد کی فوجوں کے سپہ سالار یوآب کی سفارش پر داؤد نے اُنہیں معاف کردیا اور وہ واپس یروشلم آگئے۔[3] پھر وہ اپنے والد داؤد کا تخت چھیننے کی کوشش کرنے لگے۔ وہ لوگوں کی خوشامد کر کے اُن کے منظورِ نظر بن گئے۔[4] پھر اُنہوں نے حبرون میں اپنے بادشاہ ہونے کا اعلان کردیا۔ اکثر لوگوں نے ابی سلوم کی پیروی کی یہاں تک کہ داؤد بادشاہ کو یروشلم سے بھاگنا پڑا۔ لیکن بعد میں ابی سلوم کو ایک جنگ میں شکست ہوئی کیونکہ اُنہوں نے داؤد کے دوست حُوسی کی بُری صلاح پر عمل کیا۔ اور یوآب نے اُن کو قتل کردیا۔[5] وہ خود پسند اور کم ظرف انسان تھے۔ اس لیے اچھے بادشاہ ثابت نہ ہوئے۔ اُن کے لیے داؤد کا نوحہ مشہور ہے۔[6]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. 2 سموئیل 3:3
  2. 2 سموئیل باب 13
  3. 2 سموئیل باب 14
  4. 2 سموئیل 6–15:1
  5. 2 سموئیل باب 18
  6. 2 سموئیل 18:33