استراخان

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
استراخان (انگریزی زبان میں)
Астрахань (روسی زبان میں)
—  شہر [حوالہ درکار]  —
Missing map.png
Coat of Arms of Astrakhan.svg
Flag of Astrakhan.svg
AnthemAnthem of Astrakhan [حوالہ درکار]
شہر یومThird Sunday of September [حوالہ درکار]
انتظامی حیثیت (بمطابق September 2014)
ملک روس
زیر نگین استراخان اوبلاست
بلدیاتی حیثیت (بمطابق October 2014)
شہری آکرگAstrakhan Urban Okrug [حوالہ درکار]
کا انتظامی مرکزAstrakhan Urban Okrug [حوالہ درکار]
Head [حوالہ درکار]Oleg Polumordvinov [حوالہ درکار]
نمائندہ تنظیمCity Duma [حوالہ درکار]
شماریات
رقبہ (2003)208.70 کلومیٹر2 (80.58 مربع میل) [حوالہ درکار]
آبادی (January 2014)530,900 افراد [حوالہ درکار]
منطقۂ وقت
تاسیس1558 [حوالہ درکار]
شہر حیثیت1717 [حوالہ درکار]
رموز ڈاک414000, 414004, 414006, 414008, 414009, 414011–414019, 414021, 414022, 414024–414026, 414028–414030, 414032, 414038, 414040–414042, 414044–414046, 414050–414052, 414056, 414057, 414700, 414890, 414899, 414950, 414960, 414961, 414999 [حوالہ درکار]
ڈائلنگ رموز+7 8512 [حوالہ درکار]
سرکاری ویب سائٹ
شہر کا امتیازی نشان

استراخان کا اصل نام حاجی ترخان تھا جسے روسی زبان میں استراخان پکارا جانے لگا- استراخان جنوبی یورپ میں روس کا ایک اہم شہر ہے جو استراخان صوبہ (اوبلاسٹ) کا انتظامی مرکز ہے۔ شہر دریائے وولگا کے کنارے واقع ہیں اور شہر کے قریب ہی یہ دریا بحیرہ کیسپیئن میں جا کرتا ہے۔ 2004ء کے مطابق شہر کی آبادی اندازہ 502،800 ہے۔

تاریخ[ترمیم]

یہ شہر خزر اور شاخ زریں سلطنتوں کا دار الحکومت رہا۔ تیمور لنگ نے اسے حملے کے بعد نذر آتش کر دیا تھا۔ 1459ء سے 1556ء تک یہ شہر خانان استراخان کا دار الحکومت رہا۔ اس قدیم شہر کے آثار قدیمہ جدید شہر سے 12 کلومیٹر دور آج بھی واقع ہیں۔

1556ء میں جب زار روس ایوان چہارم مہیب نے خانان استراخان کی ریاست فتح کرلی تو اس جگہ پر ایک جدید قلعہ تعمیر کیا۔ 1569ء میں عثمانی افواج نے استراخان کا محاصرہ کیا تاہم پسپائی اختیار کی۔

Midori Extension.svg یہ ایک نامکمل مضمون ہے۔ آپ اس میں اضافہ کر کے ویکیپیڈیا کی مدد کر سکتے ہیں۔

نگار خانہ[ترمیم]