ایلن ایچ میلٹزر

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
وینڈز اپ ریکارڈز کے مؤسس کے لیے، ایلن میلٹزر ملاحظہ فرمائیں۔
ایلن ایچ میلٹزر
(انگریزی میں: Allan H. Meltzer خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقامی زبان میں نام (P1559) ویکی ڈیٹا پر
معلومات شخصیت
پیدائشی نام (انگریزی میں: Allan Harold Meltzer)[1]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں پیدائشی نام (P1477) ویکی ڈیٹا پر
پیدائش فروری 6، 1928ء
بوسٹن  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام پیدائش (P19) ویکی ڈیٹا پر
وفات مئی 8، 2017(2017-50-80) (عمر  89 سال)
پٹسبرگ  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام وفات (P20) ویکی ڈیٹا پر
قومیت امریکی شہری
عملی زندگی
مادر علمی ڈیوک یونیورسٹی (بی اے، ایم اے)
یو سی ایل اے (پی ایچ ڈی)
تعلیمی اسناد فاضل الفنیات اور ماسٹر آف آرٹس،پی ایچ ڈی  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تعلیم از (P69) ویکی ڈیٹا پر
پیشہ ماہر معاشیات،  مؤرخ[2][3][4]،  پروفیسر[5][6][7]،  مصنف[2][8][9]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں پیشہ (P106) ویکی ڈیٹا پر
پیشہ ورانہ زبان انگریزی[10]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں زبانیں (P1412) ویکی ڈیٹا پر
شعبۂ عمل معاشیات  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں شعبۂ عمل (P101) ویکی ڈیٹا پر
مؤثر کارل برنر
ملٹن فرائڈمین

ایلن ایچ میلٹزر (/ˈmɛltsər/; فروری 6، 1928ءمئی 8، 2017ء) ایک امریکی شہری اور ماہر معاشیات تھے۔ وہ کارنیجی میلن یونیورسٹی کے ٹیپر اسکول آف بزنس اور پٹسبرگ پنسیلوینیا میں اقتصادیات کے پروفیسر تھے۔[11] میلٹزر نے بطور خاص زری پالیسی اور ریاستہائے متحدہ امریکا کے وفاقی تحفظ نظام کا مطالعہ کیا تھا۔ وہ کئی تعلیمی مقالوں اور کتابوں کے مصنف تھے جو ترقی، زری پالیسی پر عمل آوری اور امریکا کے مرکزی بینک کی تاریخ سے متعلق تھے۔[12] کارل برنر کی معیت میں انہوں نے سایہ نما کھلے بازار کی کمیٹی تخلیق کی جو ایک زریت پسند کونسل ہے جس نے وفاقی تحفظ نظام پر کافی تنقید کی۔[13] میلٹزر نے یہ اصول وضع کیا کہ "ناکامی کے بغیر سرمایہ داری گناہ کے بغیر مذہب کی طرح ہے۔ یہ بالکل ہی ممکن نہیں ہے "۔ اسی بات کی انہوں نے وضاحت یوں کی کہ کمپنیوں کو ناکامیوں سے بچانا "وہ حرکیاتی عمل ہی کو دور کرتا ہے جس سے حصے دار نقصانات کے لیے ذمے دار ہوتے ہیں اور مینیجروں کو ضابطہ فراہم کرتا ہے جو غلطیاں کرتے ہیں۔ "[14]

مطبوعات[ترمیم]

  • "Major works before 1997"۔ Archived from the original on 2000-09-03۔ اخذ شدہ بتاریخ 2007-02-01۔ , including his work with Swiss economist Karl Brunner.
  • Karl Brunner and Allan H. Meltzer (1993). Money and the Economy: Issues in Monetary Analysis, Cambridge. "Money+and+the+Economy:+Issues++in+Monetary+Analysis'&source=gbs_summary_s&cad=0 Description and chapter previews, p "Money+and+the+Economy:+Issues++in+Monetary+Analysis'. pp. ix"Money+and+the+Economy:+Issues++in+Monetary+Analysis'. x.
  • Allan H. Meltzer (2001). A History of the Federal Reserve, Volume 1: 1913–1951, ISBN 978-0-226-52000-1 Description.
  • _____ (2003). "What Future for the IMF and the World Bank?," Quarterly International Economics Report, July"Archived copy" (پی‌ڈی‌ایف)۔ Archived from the original on 2003-12-25۔ اخذ شدہ بتاریخ 2013-09-28۔ .
  • _____ (2006)."An Appreciation: Milton Friedman, 1912-2006," On the Issues, AEI Online.
  • _____ (2009) A History of the Federal Reserve, Volume 2, Book 1, 1951–1969, ISBN 978-0-226-52001-8
  • _____ (2009) A History of the Federal Reserve, Volume 2, Book 2, 1970–1985, ISBN 978-0-226-51994-4
  • _____ (2012) Why Capitalism?, Oxford. ISBN 978-0-19-985957-3 Author's writeup of the book in http://themontrealreview.com/2009/Why-Capitalism.php

Allan H. Meltzer and Scott F. Richard (1981). "A Rational Theory of the Size of Government," Journal of Political Economy, 89(5), pp. 914–27. Abstract.

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. وی آئی اے ایف - آئی ڈی: https://viaf.org/viaf/71451190 — اجازت نامہ: Open Data Commons
  2. ^ ا ب http://www.sfgate.com/cgi-bin/article.cgi?f=/g/a/2010/10/11/bloomberg1376-LA6IL61A1I4J01-4KJIE56STRQC9AAQNPEG3GIJ2L.DTL
  3. http://www.sfgate.com/cgi-bin/article.cgi?f=/g/a/2010/06/14/bloomberg1376-L41D1A1A74E9-4.DTL
  4. http://www.nytimes.com/2008/09/20/business/20resolution.html
  5. http://www.c-span.org/video/?301649-1/federal-debt-us-economy&start=3790
  6. http://www.c-span.org/video/?21668-1/academic-business-environment
  7. http://www.c-span.org/video/?175251-2/irving-kristol-award
  8. http://www.sfgate.com/cgi-bin/article.cgi?f=/g/a/2010/09/20/bloomberg1376-L93SGA0D9L3601-09MA98N816NRJMMMOHI05IP30E.DTL
  9. http://www.jstor.org/stable/2627849
  10. http://data.bnf.fr/ark:/12148/cb122774570 — اخذ شدہ بتاریخ: 10 اکتوبر 2015 — اجازت نامہ: آزاد اجازت نامہ
  11. "Faculty Information"۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 2007-06-11۔
  12. "A History of the Federal Reserve"۔ (subscription required)
  13. Reichart Alexandre & Abdelkader Slifi (2016). 'The Influence of Monetarism on Federal Reserve Policy during the 1980s.' Cahiers d'économie Politique/Papers in Political Economy, (1), pp. 107–50. https://www.cairn.info/revue-cahiers-d-economie-politique-2016-1-page-107.htm

بیرونی روابط[ترمیم]