ایڈا لولیس

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
ایڈا، کاؤنٹیس آف لولیس
Ada, Countess of Lovelace
(انگریزی میں: Augusta Ada King Byron, Countess of Lovelace ویکی ڈیٹا پر مقامی زبان میں نام (P1559) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
Ada, Countess of Lovelace, 1840
Ada, Countess of Lovelace, 1840

معلومات شخصیت
پیدائشی نام (برطانوی انگریزی میں: Augusta Ada Byron)[1]  ویکی ڈیٹا پر پیدائشی نام (P1477) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیدائش 10 دسمبر 1815(1815-12-10)
پکاڈلی  ویکی ڈیٹا پر مقام پیدائش (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وفات 27 نومبر 1852(1852-11-27) (عمر  36 سال)
میریلیبون  ویکی ڈیٹا پر مقام وفات (P20) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
طرز وفات طبعی موت  ویکی ڈیٹا پر طرزِ موت (P1196) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت Flag of the United Kingdom.svg متحدہ مملکت برطانیہ عظمی و آئر لینڈ  ویکی ڈیٹا پر شہریت (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شوہر William King-Noel, 1st Earl of Lovelace
اولاد
والدین
والد لارڈ بائرن  ویکی ڈیٹا پر والد (P22) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
پیشہ ریاضی دان، پروگرامنگ، شاعرہ، کمپیوٹر سائنس دان، موجد، مترجم، مصنفہ، انجینئر  ویکی ڈیٹا پر پیشہ (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ ورانہ زبان انگریزی[2]  ویکی ڈیٹا پر زبانیں (P1412) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شعبۂ عمل ریاضی، شمارندکاری  ویکی ڈیٹا پر شعبۂ عمل (P101) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
نوکریاں جامعہ کیمبرج  ویکی ڈیٹا پر نوکری (P108) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وجہ شہرت ریاضی
کمپیوٹنگ
مؤثر شخصیات چارلس ببیج  ویکی ڈیٹا پر مؤثر (P737) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

آگسٹا ایڈا کنگ نوئیل (Augusta Ada King-Noel)، کاؤنٹیس آف لولیس (Countess of Lovelace) ایک انگریزی ریاضی دان اور مصنفہ تھی، جس کی بنیادی وجہ شہرت چارلس ببیج کے ابتدائی میکانی عام مقصد کمپیوٹر اینالیٹکل انجن (Analytical Engine) پر کام ہے۔ اسے اکثر پہلی کمپیوٹر پروگرامر کے طور پر شمار کیا جاتا ہے۔[3][4][5]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. عنوان : Ada: A Life and a Legacy — ناشر: MIT Press — ISBN 978-0-262-19242-2
  2. http://data.bnf.fr/ark:/12148/cb123997091 — اخذ شدہ بتاریخ: 10 اکتوبر 2015 — اجازت نامہ: آزاد اجازت نامہ
  3. Fuegi & Francis 2003، صفحات۔ 16–26.
  4. Phillips، Ana Lena (November–December 2011). "Crowdsourcing Gender Equity: Ada Lovelace Day, and its companion website, aims to raise the profile of women in science and technology". American Scientist 99 (6): 463. https://www.americanscientist.org/issues/pub/crowdsourcing-gender-equity. 
  5. "Ada Lovelace honoured by Google doodle"۔ The Guardian۔ 10 دسمبر 2012۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 10 دسمبر 2012۔

بیرونی روابط[ترمیم]