بتھماؤس

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
بیت معون
Bethmaus
Beth Maʿon
بتھماؤس is located in Israel
بتھماؤس
Israel میں محل وقوع
مقام Flag of اسرائیل
علاقہ زیریں گلیلی
متناسقات 32°47′40″N 35°32′00″E / 32.79444°N 35.53333°E / 32.79444; 35.53333متناسقات: 32°47′40″N 35°32′00″E / 32.79444°N 35.53333°E / 32.79444; 35.53333
قسم گاؤں (تباہ شدہ)
تاریخ
ادوار ہیلی نسٹک، رومن، بازنطینی
ثقافتیں یہودی
منسلک یہودی

بیت معون (انگریزی: Bethmaus)، (یونانی: Βηθμαούς) ،(عبرانی: בית מעון‎‎) ہیکل دوم اور مشنی کے زمانے کا ایک گاؤں تھا۔ 1877ء میں جب ایچ ایچ کیچنر نے اس گاؤں کا دورہ کیا تو یہ گاؤں اس وقت تباہ شدہ تھا۔[1]

یہ گاؤں ایک قدیم شہر تبریاس کی ایک پہاڑی پر ایک میل کے فاصلے پر واقع تھا۔یہ گاؤں سطح سمندر سے 250 میٹر (820 فٹ) کی بلندی پر واقع تھا۔ یہ گاؤں اب اپر طبریہ جیسے جدید شہر میں شامل ہو چکا ہے۔

تاریخ[ترمیم]

ِیہودی جنرل اور تاریخ دان یوسیفس لکھتا ہے کہ روم کی جنگ کے دوران جب اس نے اپنے دو ساتھیوں سمیت گلیل میں اپنا عہدہ سنبھالا تو انہوں نے طبریہ کے لوگوں کے ساتھ ہیرودس انٹی پاز کے بنائے ہوئے ایک گھر کو گرائے جانے کے لیے ملاقات کی اور پھر اس گھر کو گرا دیا گیا جبکہ اس گھر کی باقیات کو بچا لیا گیا۔

دوسری صدی قبل از مسیح میں یہ گاؤں "ہپہ" کے ایک قبیلے کا مسکن بن گیا۔ اس دوران یہودیت کے چوبیس مقدس ڈویژنوں کے نمائندے گلیلی منتقل ہو گئے۔ 1566ء میں خلافت عثمانیہ کے سلیمان اول نے حکم دیا کہ بتھماؤس سے طبریہ تک پانی لایا جائے۔ اس حکم کا مقصد اب تک معلوم نہیں ہو سکا ہو سکتا ہے کہ یہ حکم کھیتی باڑی تک پانی پہنچانے کے لیے صادر کیا گیا ہو۔ اپریل 1566 تک ابھی یہ کام مکمل نہیں ہوا تھا اور مزدوروں نے ایک یہودی یاسف ناسی کی سربراہی میں نے اس کام کی اجرت میں اضافہ کر دیا لیکن سلطان نے اجرت میں اضافہ کرنے سے انکار کر دیا۔ اس گاؤں اور طبریہ کے تباہ ہونے کے دوران اس علاقے میں دو قدرتی چشمے بھی پائے جاتے تھے۔

فلسطینی ایکسپلوریشن فنڈ 1880 کا ایک نقشہ، جس میں ٹیل ماؤن، "بتھماؤس" کو دکھایا گیا ہے۔
1794 اسرائیل کا نقشہ، فلسطین یا مقدس زمین، جس میں بتھماؤس اور طبریہ کے تعلقات کو دکھایا گیا ہے، مزید وضاحت کے لئے نقشہ کو کلک کریں۔)

بیرونی روابط[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. سی آر کونڈر اور ایچ ایچ کیچنر، دی سروے آف ویسٹرن فلسطین، (جلد 1 - گلیلی)، لندن 1881, صفحہ۔ 371. تل معون، 1880 میں فلسطین کا نقشہ