جلال الدین خلجی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
جلال الدین خلجی
Maginary portrait of Sultan Firuz Khalji, Khwaja Hasan, and a dervish..jpg
 

معلومات شخصیت
پیدائش 14 اکتوبر 1220  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
افغانستان  ویکی ڈیٹا پر (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وفات 19 جولا‎ئی 1296 (76 سال)  ویکی ڈیٹا پر (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
کڑہ، اتر پردیش  ویکی ڈیٹا پر (P20) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مدفن دہلی  ویکی ڈیٹا پر (P119) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
اولاد ملکہ جہاں  ویکی ڈیٹا پر (P40) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
خاندان خلجی خاندان  ویکی ڈیٹا پر (P53) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مناصب
سلطان سلطنت دہلی   ویکی ڈیٹا پر (P39) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
دفتر میں
13 جون 1290  – 19 جولا‎ئی 1296 
Fleche-defaut-droite-gris-32.png شمس الدین کیومرث 
علاء الدین خلجی  Fleche-defaut-gauche-gris-32.png


خاندان خلجی کا پہلا بادشاہ۔ تخت نشینی کے وقت اس کی عمر ستر سال تھی۔ فطرتاً رحم دل تھا۔ یہی وجہ ہے کہ اس کے عہد میں بغاوتیں زور پکڑ گئیں۔ مغلوں نے بھی حملے کیے لیکن انھیں پسپا کر دیا گیا۔ کچھ مغل دہلی کے قریب ہی بس گئے اور اس جگہ کا نام مغلپورہ پڑ گیا۔ اس کے عہد کا سب سے مشہور واقعہ دیوگری پر حملہ ہے۔ اس نے اپنے بھتیجے علاؤ الدین خلجی کو، جو اس کا داماد بھی تھا۔ صوبہ اودھ میں کڑہ کا حاکم مقرر کیا تھا۔ علاؤ الدین نے دکن میں واقع دیوگری کی دولت کا حال سن رکھا تھا۔ اس نے 1294ء میں دیوگری کے راجا رام چندر پر حملہ کر دیا۔ راجا نے شکست کھائی اور بہت سا زر و مال اور ایلچ پور کا علاقہ علاؤ الدین کے حوالے کرنا پڑا۔ علاؤ الدین مال و دولت لے کر کڑہ لوٹ گیا۔ جب جلال الدین اپنے بھتیجے کی فتح کی خبر سن کر ملاقات کے لیے آیا تو علاؤ الدین نے اسے قتل کر دیا اور پھر اس کے تمام خاندان کا خاتمہ کر کے خود بادشاہ بن گیا۔