راکھائن ریاست

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
(راخائن ریاست سے رجوع مکرر)
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں
Rakhine State
راکھائن ریاست
ရခိုင်ပြည်နယ်

ریاست اراکان
Arakan State
برما کی انتظامی تقسیم
میانما نقل نگاری
 • اراکانی ra-khai-pray-nay
Flag of Rakhine State
Flag
Official seal of Rakhine State
Seal
راکھائن ریاست کا مینمار میں مقام (برما)
راکھائن ریاست کا مینمار میں مقام (برما)
متناسقات: 19°30′N 94°0′E / 19.500°N 94.000°E / 19.500; 94.000متناسقات: 19°30′N 94°0′E / 19.500°N 94.000°E / 19.500; 94.000
ملک Flag of Myanmar.svg میانمار
علاقہ مغربی ساحل
دارالحکومت ویتوی
حکومت
 • وزیر اعلی Nyi Pu (این ایل ڈی)
 • کابینہ Rakhine State Government
 • مقننہ Rakhine State Hluttaw
رقبہ
 • کل 36,778.0 کلو میٹر2 (14,200.1 مربع میل)
رقبہ درجہ 8th
آبادی (2014 Census)
 • کل 3,188,807[1]
 • درجہ 8th
آبادیات
 • نسلیات Rakhine, Kaman, Mro, روہنگیا Khami and others
 • مذاہب تھیرواد، اسلام، ہندومت اور دیگر
منطقۂ وقت میانمار معیاری وقت (UTC+06:30)
ویب سائٹ rakhinestate.gov.mm

ریاست راکھائن یا ریاست اراکان (انگریزی: Rakhine State) میانمار کی ایک ریاست جو میانمار کے مغرب میں واقع ہے۔ [2]

اراکان[ترمیم]

میانمار (برما) کا علاقہ اراکان، روہنگیا مسلمانوں کا آبائی وطن ہےـ ارکان یا اراکان 1784ء تک ایک آزاد ملک تھاـ ارکانی مسلمانوں کا چودہویں اور پندرہویں صدی عیسوی میں آزاد ملک تھا٬ بعد میں برمیوں نے اس پر قبضہ کرلیا تھا. [3] برما کی فوجی حکومت کے دور میں امتیازی قوانین کے ذریعہ مسلمانوں کی زندگی مشکل بنا دی گئی، جائداد چھینی، شہریت ختم ہو گئی اور وہ بے ریاست لوگ بن گئے۔ مسلمانوں سے بیگار لیا گیا۔ ایسے حالات میں بڑی تعداد تھائی لینڈ اور بنگلہ دیش ہجرت کر گئی۔

جون 2012ء میں ارکان میں مسلم کش فسادات شروع ہوئے۔ جس میں بدھوں نے ہزاروں مسلمانوں کو شہید اور سینکڑوں مسلم آبادیوں کو نذرآتش کردیا۔ جو مسلمان سمندری راستے سے بنگلہ دیش پہنچے انہیں بنگلہ حکومت نے واپس دھکیل دیا جو واپسی میں بدھوں کے ہاتھوں قتل ہوگئے۔

تفصیلات[ترمیم]

راکھائن ریاست کا رقبہ 36,780 مربع کیلومیٹر ہے، اور اس کی مجموعی آبادی 3,836,000 افراد پر مشتمل ہے۔

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. Census Report. The 2014 Myanmar Population and Housing Census. 2. Naypyitaw: Ministry of Immigration and Population. May 2015. صفحہ۔17. https://drive.google.com/file/d/0B067GBtstE5TeUlIVjRjSjVzWlk/view. 
  2. انگریزی ویکیپیڈیا کے مشارکین۔ "Rakhine State"۔ 
  3. (ٹائمز اٹلس آف ورلڈ ہسٹری صفحہ 133)

مذہب[ترمیم]

خیال رہے کہ یہ حکومت میانمار کے سرکاری اعداد و شمار ہیں۔ روہنگیا قوم کو میانمار کے شہری تصور نہیں کیا جاتا۔



Circle frame.svg

راکھائن میں مذہب(2015)[1]

  بدھ مت (52.2%)
  اسلام (42.7%)
  مسیحیت (1.8%)
  ہندو مت (0.5%)
  نسمیت (0.1%)
  دیگر (2.7%)
  1. Department of Population Ministry of Labour, Immigration and Population MYANMAR (July 2016). The 2014 Myanmar Population and Housing Census Census Report Volume 2-C. Department of Population Ministry of Labour, Immigration and Population MYANMAR. صفحات۔12-15. https://drive.google.com/open?id=0B067GBtstE5TSl9FNElRRGtvMUk.