صبیح الدین احمد

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
صبیح الدین احمد
منصفِ اعظم سندھ عدالت عالیہ
مدت منصب
5 اپریل 2005ء – 3 نومبر 2007ء
Fleche-defaut-droite-gris-32.png سید سعید اشہد
افضل سومرو Fleche-defaut-gauche-gris-32.png
معلومات شخصیت
پیدائش سنہ 1949  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ پیدائش (P569) ویکی ڈیٹا پر
حیدرآباد  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام پیدائش (P19) ویکی ڈیٹا پر
تاریخ وفات 19 اپریل 2009 (59–60 سال)  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ وفات (P570) ویکی ڈیٹا پر
شہریت Flag of Pakistan.svg پاکستان  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں شہریت (P27) ویکی ڈیٹا پر
عملی زندگی
مادر علمی جامعہ پنجاب  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تعلیم از (P69) ویکی ڈیٹا پر
پیشہ منصف،  وکیل  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں پیشہ (P106) ویکی ڈیٹا پر

سندھ ہائی کورٹ کے سابق چیف جسٹس اور سپریم کورٹ کے جج۔ انیس سو انچاس میں حیدر آباد میں جنم لینے والے جسٹس صبیح الدین احمد 28 اپریل 2000ء کو سندھ ہائی کورٹ کے جج مقرر ہوئے اور 5 اپریل 2005ء میں انہوں نے چیف جسٹس کا عہدہ سنبھالا۔ ان کا تعلق ملک کے سیاسی اور ادبی گھرانے سے تھا۔

جسٹس صبیح الدین احمد ان جج حضرات میں شامل تھے جنہوں نے 3 نومبر دو ہزار سات کو سابق فوجی صدر جنرل پرویز مشرف کی جانب سے ایمرجنسی کے نفاذ کے بعد عبوری آئین یعنی پی سی او کے تحت حلف اٹھانے سے انکار کر دیا تھا اور اس طرح دیگر ججوں کی طرح انہیں بھی معزول کر دیا گیا۔ معزول ہونے سے پہلے وہ سندھ ہائی کورٹ کے چیف جسٹس کی حیثیت سے اپنے فرائض انجام دے رہے تھے۔ بعد ازاں سابق انہیں ستمبر دو ہزار آٹھ میں سپریم کورٹ میں تعینات کیا گیا اور انہوں نے سپریم کورٹ کے جج کی حیثیت سے ستمبر 2008ء میں حلف اٹھایا تھا۔ 19 اپریل 2009ء کو دماغ کی شریان پھٹ جانے کی وجہ سے کراچی میں انتقال ہوا۔