ملکا شراوت

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
ملکا شراوت
Cannes 2016 17.jpg 

معلومات شخصیت
پیدائش 24 اکتوبر 1976 (42 سال)[1]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ پیدائش (P569) ویکی ڈیٹا پر
روہتک  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام پیدائش (P19) ویکی ڈیٹا پر
شہریت Flag of India.svg بھارت  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں شہریت (P27) ویکی ڈیٹا پر
عملی زندگی
مادر علمی دہلی یونیورسٹی  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تعلیم از (P69) ویکی ڈیٹا پر
پیشہ اداکارہ،  ماڈل،  فلم اداکارہ  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں پیشہ (P106) ویکی ڈیٹا پر
مادری زبان ہریانوی  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مادری زبان (P103) ویکی ڈیٹا پر
ویب سائٹ
ویب سائٹ باضابطہ ویب سائٹ  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں باضابطہ ویب سائٹ (P856) ویکی ڈیٹا پر
IMDb logo.svg
IMDB پر صفحات  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں آئی ایم ڈی بی - آئی ڈی (P345) ویکی ڈیٹا پر
ملکا شراوت

ملکا شراوت (انگریزی: Mallika Sherawat) بھارتی سنیما کی مشہور ہیروئین اور ایک ماڈل ہے۔ ملیکا شراوت ایک ایسی بھارتی اداکارہ ہے جو ہندی، انگریزی اور چینی زبان کی فلموں میں کام کرتی ہے۔ خواہش (2003) اور قتل (2004) جیسی فلموں میں وہ پردے پر دلیرانا رویئے کے لیے مشہور ہوئی۔[2]ملیکا شراوت نے خود کو سیکس سیمبل کے طور پر قائم کیا ہے اور بالی وڈ میں سب سے مشہور ہستیوں میں سے ایک[3] ہے۔ وہ پھر کامیاب رومانٹک کامیڈی فلم 'پیار کے سائیڈ افیکٹس' (2006ء) میں نظر آئی۔ جس فلم کی وجہ سے اس کی تنقیدی تعریف کی گئی۔[4][5] اس کے بعد، وہ 'آپ کا سرور - دی ریئل لوور اسٹوری'، 'ویلکم' (2007ء) فلم میں آئی۔ ان فلموں سے اس کو سب سے بڑی واپاری کامیابی ملی۔ ان فلموں کے بعد وہ 'ڈبل دھمال' (2011ء) جیسی فلم میں دکھائی دی۔ وہ کچھ بالی وڈ ستاروں میں سے ایک ہے، جو ہالی وڈ میں جانے کی کوشش کرتے ہیں۔[6][7]

ابتدائی زندگی[ترمیم]

ملکا شراوت کا جنم ہریانہ کے ضلع حصار کے ایک چھوٹے سے گاؤں موٹھ میں ہوا تھا۔[8] وہ ایک جاٹ خاندان سے تعلق رکھتی ہے۔ ملکا کے والد کا نام مکیش کمار لامبا ہے۔ اس نے ریما نام کی اور اداکاراؤں سے الجھن سے بچنے کے لیے "ملکا" اپنا اسکرین نام اپنایا، جس کا مطلب "مہارانی" ہے۔ "شراوت" اس کی ماں کا پہلا نام ہے۔[9] شراوت کے خاندان نے اب اس کے کیریئر کو قبول کر لیا ہے اور اب اس کا خاندان اور شراوت ایک دوسرے سے صلح کر رہے ہیں۔[10] ملکا شراوت دہلی پبلک اسکول، متھرا روڈ میں پڑھی ہے۔ اس نے دہلی یونیورسٹی یے مرانڈا ہاؤس سے فلسفے کی ڈگری حاصل کی ہے۔[11]

کیریئر[ترمیم]

فلموں میں داخل ہونے سے قبل، شراوت نے ٹیلیوژن میں کمرشل اشتہاروں، امیتابھ بچن کے ساتھ BPL میں اور شاہ رخ خان کے ساتھ سینٹرو میں کام کیا۔[12] وہ نرمل پانڈے کی "مار ڈالا" اور سرجیت بندرکھیا کی "لک تنو" سنگیت ویڈیو میں بھی ظاہر ہوئی۔[13] اس نے 'جینا صرف میرے لیے' نام کی ایک چھوٹی جسی فلم سے فلمی کیریئر میں شروعات کی۔ ملکا شراوت نے 2004ء میں آئی فلم 'خواہش' میں کام کیا۔ 'مرڈر' فلم میں اس کی اداکاری کے لیے ملکا کو زی سن ایوارڈ میں اس کو 'بیسٹ ایکٹریس' کے لیے ایوارڈ ملا۔[14] 2005ء میں ملکا شراوت نے ایک چینی فلم 'دی مائتھ' میں کام کیا۔ جس میں اس نے جیکی چین کے ساتھ کام کیا۔ اس نے اس فلم میں ایک بھارتی لڑکی کا کردار نبھایا، جو جیکی چین کے فلم کے کردار کو ندی سے بچاتی ہے۔ یہ اس کی پہلی بین الاقوامی فلم تھی۔[15] ٹائم میگزین کے رچرڈ کورلس نے فلم کو مشہور کرنے کے لیے کینس فلم فیسٹیول پر اس کی فلم کی کارکردگی پر بہت دھیان دیا۔[16]

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. آئی ایم ڈی بی - آئی ڈی: https://tools.wmflabs.org/wikidata-externalid-url/?p=345&url_prefix=https://www.imdb.com/&id=nm1324246 — اخذ شدہ بتاریخ: 9 جنوری 2016
  2. "Bold Sherawat"۔ The Hindu (Chennai, India)۔ 25 اپریل 2004۔ اخذ کردہ بتاریخ 23 جولائی 2010۔ 
  3. "Sex now selling in Bollywood"۔ CNN۔ 11 جون 2003۔ اخذ کردہ بتاریخ 23 جولائی 2010۔ 
  4. name="in.rediff.com">http://in.rediff.com/movies/2006/sep/15pyaar.htm
  5. Pyaar Ke Side Effects Review - Bollywood Hungama
  6. "A Passage to Hollywood"۔ The Wall Street Journal۔ 6 فروری 2009۔ اخذ کردہ بتاریخ 23 جولائی 2010۔ 
  7. "From Bollywood to Hollywood"۔ Backstage.com۔ 25 فروری 2010۔ اخذ کردہ بتاریخ 23 جولائی 2010۔ 
  8. "It’s difficult for me to get over my father’s betrayal: Mallika Sherawat"۔ The Times of India۔ 7 اکتوبر 2013۔ اخذ کردہ بتاریخ 4 مارچ 2014۔ 
  9. name="outlook">"Youngsters to change the rule in Bollywood: Mallika Sherawat"۔ Outlook India۔ 24 ستمبر 2005۔ اخذ کردہ بتاریخ 23 جولائی 2010۔ [مردہ ربط]
  10. "Mallika's great grandfather more popular than her at her native village in Haryana"۔ The Times of India۔ 25 جنوری 2011۔ اخذ کردہ بتاریخ 26 جنوری 2011۔ 
  11. "Delhi Public School, Mathura Road"۔ Zemu.in۔ اصل سے جمع شدہ 21 جولائی 2011 کو۔ اخذ کردہ بتاریخ 23 جولائی 2010۔ 
  12. "17 kisses and a crab on her breast"۔ Rediff۔ 29 مارچ 2003۔ اخذ کردہ بتاریخ 23 جولائی 2010۔ 
  13. "Mallika Sherawat Biography"۔ 15 جولائی 2010۔ اصل سے جمع شدہ 25 جولائی 2010 کو۔ اخذ کردہ بتاریخ 23 جولائی 2010۔ 
  14. "The Best of 2004"۔ Indiafm.com۔ 28 دسمبر 2004۔ اصل سے جمع شدہ 18 مئی 2008 کو۔ اخذ کردہ بتاریخ 23 جولائی 2010۔ 
  15. "Mallika dazzles at Cannes Film Festival"۔ The Times of India۔ 18 مئی 2005۔ اخذ کردہ بتاریخ 23 جولائی 2010۔ 
  16. "Like Only Cannes Can"۔ Time۔ 22 مئی 2005۔ اخذ کردہ بتاریخ 23 جولائی 2010۔