نندپریاگ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
نندپریاگ
نندپریاگ
NandprayagConfluence.JPG
 

انتظامی تقسیم
ملک Flag of India.svg بھارت  ویکی ڈیٹا پر (P17) کی خاصیت میں تبدیلی کریں[1]
تقسیم اعلیٰ چمولی ضلع  ویکی ڈیٹا پر (P131) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
جغرافیائی خصوصیات
متناسقات 30°20′N 79°20′E / 30.33°N 79.33°E / 30.33; 79.33  ویکی ڈیٹا پر (P625) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
بلندی 1358 میٹر  ویکی ڈیٹا پر (P2044) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مزید معلومات
اوقات متناسق عالمی وقت+05:30  ویکی ڈیٹا پر (P421) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
رمزِ ڈاک
246449  ویکی ڈیٹا پر (P281) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
قابل ذکر
جیو رمز 1261987  ویکی ڈیٹا پر (P1566) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

نند پریاگ بھارت کی ریاست اتراکھنڈ کے ضلع چمولی کا ایک نگر پنچائت اور قصبہ ہے۔ یہ ہندو مذہب کے مقدس پہاڑی تیرتھ یاترا مقامات پانچ پریاگ میں سے ایک ہے۔ منداکنی اور الکنندا ندیوں کے سنگم پر نندپریاگ واقع ہے ۔ [2]نند پریاگ سطح سمندر سے 2805 فٹ کی اونچائی پر واقع ہے۔یہاں گوپال جی کا مندر ہے۔ پانچ مذہبی پریاگوں میں سے دوسرا نند پریاگ الکنندا ندی اور منداکنی ندی کے عین مقام ادغام پر واقع ہے۔ اس کی تاریخی اہمیت اس بات سے ہے کہ بدریناتھ مندر کو جاتے یاتریوں کے پڑاؤ کا مقام ہے اور ایک اہم کاروباری مرکز بھی ہے۔سال 1803 میں آنے ولا سیلاب شہر کا سب ہی کچھ بہا کر لے گیا تھا کسی بعد میں ایک اونچی جگہ پر قائم کیا گیا۔ نند پریاگ کی ایک اہمیت یہ بھی ہے کہ سوادھنیتا کی لڑائی میں یہ برطانوی راج کے مخالفوں کا مقامی مرکز رہا تھا۔

تاریخ[ترمیم]

الکنندا اور منداکنی ندیوں کے سنگم پر واقع پانچ پریاگوں میں سے ایک نند پریاگ کا پہلا نام کنداسُو تھا محکمہ جاتی رجسٹروں میں اب بھی یہی درج ہے۔ یہ شہر بدریناتھ دھام کے پرانے تیرتھ یاترا کے رستے پر واقع تھا اور پیدل تیرتھ مسافروں کے رکنے اور آرام کرنے کے لیے بھی ایک اہم پڑاؤ کی جگہ تھی۔ یہ ایک اہم کاروباری بازار بھی تھا جہاں اچھے کاروبار اور زیادہ اجرت ہونے کی وجہ سے لوگ ملک کے دیگر علاقوں سے بھی آکر آباد ہو گئے تھے۔

زبانیں[ترمیم]

نند پریاگ میں گڑوالی، ہندی، کماؤننی، بھوٹیا اور تھوڑی بہت انگریزی زبانیں سمجھی اور بولی جاتی ہیں۔

ذرائع آمدورفت[ترمیم]

نندپریاگ جانے کے لیے مختلف ذرائع دستیاب ہیں لیکن یہ کہا جاتا ہے کہ جون سے لیکر ستمبر تک سڑک کے راستے سفر کم سے کم کرنا چاہیے کیونکہ ان دنوں بارشوں کی وجہ سے لینڈ سلائڈنگ بہت ہوتی ہے اور حادثات کا احتمال ہوتا ہے۔ نند پریاگ پہنچنے کے لیے درج ذیل ذرائع دستیاب ہیں۔

ہوائی راستہ[ترمیم]

نندپریاگ سے218 کلومیٹر دور نکٹتم ہوائی اڈا جالی گرانٹ ہے۔

ریل راستہ[ترمیم]

190 کلومیٹر دور رشیکیش نکٹتم ریل سٹیشن ہے۔

سڑک رستہ[ترمیم]

ہردبار، رشیکیش اور ڈیہرادون سے بس اور ٹیکسی مہیا ہوتی ہیں۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1.   ویکی ڈیٹا پر (P1566) کی خاصیت میں تبدیلی کریں"صفحہ نندپریاگ في GeoNames ID". GeoNames ID. اخذ شدہ بتاریخ 27 اکتوبر 2020ء. 
  2. Uttaranchal. Rupa & Co. 2006. آئی ایس بی این 81-291-0861-5. Page 12