ٹریوس ڈولن

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
ٹریوس ڈولن
ذاتی معلومات
مکمل نامٹریوس مونٹیگ ڈولن
پیدائش24 فروری 1977ء (عمر 45 سال)
گائے ہاک گارڈنز, جارج ٹاؤن، گیانا, ڈیمرارا, گیانا
بلے بازیدائیں ہاتھ کا بلے باز
گیند بازیدائیں ہاتھ کا آف اسپن گیند باز
حیثیتبلے باز
بین الاقوامی کرکٹ
قومی ٹیم
پہلا ٹیسٹ (کیپ 275)9 جولائی 2009  بمقابلہ  بنگلہ دیش
آخری ٹیسٹ22 جون 2010  بمقابلہ  جنوبی افریقہ
پہلا ایک روزہ (کیپ 147)26 جولائی 2009  بمقابلہ  بنگلہ دیش
آخری ایک روزہ19 فروری 2010  بمقابلہ  بھارت
پہلا ٹی20 (کیپ 33)2 اگست 2009  بمقابلہ  بنگلہ دیش
آخری ٹی2023 فروری 2010  بمقابلہ  آسٹریلیا
ملکی کرکٹ
عرصہٹیمیں
1996/97–2011/12گیانا قومی کرکٹ ٹیم
کیریئر اعداد و شمار
مقابلہ ٹیسٹ ایک روزہ فرسٹ کلاس لسٹ اے
میچ 6 11 85 57
رنز بنائے 343 228 4,013 1,189
بیٹنگ اوسط 31.18 25.33 30.17 24.26
100s/50s 0/3 1/1 4/25 2/5
ٹاپ اسکور 95 100* 176* 119
گیندیں کرائیں 6 966 372
وکٹ 0 15 3
بالنگ اوسط 26.80 94.00
اننگز میں 5 وکٹ 0 0
میچ میں 10 وکٹ 0 0
بہترین بولنگ 4/59 1/25
کیچ/سٹمپ 5/– 2/– 77/– 17/–
ماخذ: ESPNcricinfo، 5 مئی 2021

ٹریوس مونٹیگ ڈولن (پیدائش: 24 فروری 1977ء) گیانا کے سابق کرکٹر ہیں جنہوں نے گیانا، ویسٹ انڈیز اے اور ویسٹ انڈیز کی ٹیسٹ ، ون ڈے انٹرنیشنل اور ٹوئنٹی 20 انٹرنیشنلز میں نمائندگی کی۔ وہ دائیں ہاتھ کے بلے باز اور پارٹ ٹائم آف بریک بولر تھے۔

بین الاقوامی پہچان[ترمیم]

13 جنوری 2007ء کو انہیں 2007ء کے کرکٹ ورلڈ کپ کے لیے 30 رکنی عارضی سکواڈ میں شامل کیا گیا لیکن 15 کے حتمی اسکواڈ میں منتخب نہیں کیا گیا۔

بین الاقوامی انتخاب[ترمیم]

ڈاؤلن نے اپنا ٹیسٹ ڈیبیو 9 جولائی 2009ء کو کیا۔ وہ بنگلہ دیش کے خلاف ویسٹ انڈیز کی جانب سے میدان میں اتاری گئی کم طاقت والی ٹیم کا حصہ تھے۔ 15 رکنی اسکواڈ میں نو کھلاڑی شامل تھے اور ویسٹ انڈیز کے سات کھلاڑیوں نے اس میچ میں ٹیسٹ ڈیبیو کیا۔ اس ٹیم کی کپتانی فلائیڈ ریفر کر رہے تھے جنہوں نے دس سال قبل اپنے چار ٹیسٹ میں سے آخری کھیلا تھا۔ ویسٹ انڈیز کرکٹ بورڈ کے ساتھ تنخواہ کے تنازعہ کی وجہ سے فرسٹ الیون نے خود کو دستیاب نہیں کرایا تھا۔ [1] Roseau میں اپنے دوسرے ون ڈے میں بنگلہ دیش کے خلاف ناقابل شکست سنچری بنانے کے بعد [2] ڈاؤلن کو ایک انڈر سٹرینتھ سکواڈ میں بھی شامل کیا گیا جس نے 2009 کی آئی سی سی چیمپیئنز ٹرافی میں حصہ لینے کے لیے جنوبی افریقہ کا سفر کیا اور تینوں میچ کھیلے جب ویسٹ انڈیز اس ٹورنامنٹ سے باہر ہو گیا۔ گروپ مرحلے میں مقابلہ۔ ڈاؤلن نے بعد ازاں دورہ آسٹریلیا کے لیے ویسٹ انڈین ٹیم میں اپنی جگہ برقرار رکھی، جہاں انہوں نے برسبین اور پرتھ میں پہلے اور تیسرے ٹیسٹ کھیلے۔ ان کی وکٹ ایم ایس دھونی نے 2009ء کی آئی سی سی چیمپئنز ٹرافی میں لی تھی جو بین الاقوامی کرکٹ میں دھونی کی واحد وکٹ تھی۔ [3]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. Cricinfo staff (8 July 2009). "West Indies name replacement squad". Cricinfo.com. اخذ شدہ بتاریخ 10 جولا‎ئی 2009. 
  2. "West Indies v Bangladesh in 2009". Cricket World. 01 ستمبر 2009 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 16 دسمبر 2009. 
  3. "Does MS Dhoni have the highest average of those who batted at No. 6 and above for India?". ESPN Cricinfo. اخذ شدہ بتاریخ 18 اگست 2020.